Thanks Thanks:  7
Likes Likes:  11
Page 43 of 43 FirstFirst ... 33414243
Results 631 to 644 of 644

Thread: میں نے یہ کتاب پڑھ لی ہے

  1. #631
    Site Managers Rubab's Avatar

    Join Date
    Jun 2007
    Posts
    13,943
    Blog Entries
    6
    Mentioned
    24 Post(s)
    Tagged
    2 Thread(s)
    نمل از نمرا احمد


    ناول نمل کا جب سے ڈائجسٹ میں سلسلہ وار آغاز ہواتھا تب سے ہی اس کی تعریف سننے میں آ رہی تھی۔ تقریباً تمام ہی پڑھنے والے دوستوں نے اس ناول کو ریکمنڈ کیا۔ نمرا جی کا پہلے صرف ایک ہی ناول پڑھنے کا اتفاق ہوا تھا، مصحف۔ تاہم مصحف کے ساتھ میری دوستی نہ ہو سکی اور مجھے اس ناول سے بوریت محسوس ہوئی۔ لیکن جب ایک مہربان نے تیس اقساط کا پورا ناول میرے سسٹم میں رکھ دیا تو ان کی خواہش کا احترام کرنے کےلئے ناول کوپڑھناہی تھا۔
    نمل روایتی ڈائجسٹس ناولز سے مختلف ہے، اس میں گھریلو مسائل، سسرالی مسائل، گھریلو سازشوں وغیرہ کو موضوع نہیں بنایا گیا ہے، یہ روایتی لو اسٹوری بھی نہیں ہے۔ اس میں گھر سے باہر کی دنیا کو موضوع بنایا گیا ہے۔ سسپنس، تھرلر ٹائپ کا ناول کہیں تو مناسب ہو گا۔ ناول کا آغاز بہت متاثر کن ہے۔ کسی انگریزی سسپنس ناول کی طرح کہانی شروع ہوتی ہے اور کردار سامنے آتے ہیں۔ ناول ماضی اور مستقبل میں بیک وقت چلتا ہے، جہاں قتل، قاتل، پولیس، عدالت، وکیل جیسے کردار موجود ہیں۔ ناول ایک وسیع کینوس پہ لکھا گیا ہے اس لئے اس میں کرداروں کی بھرمار ہے، جن کو سمجھنے میں ابتدا میں کافی کنفیوژن ہوتی ہے۔ کون کس کا بھائی، کون کزن،کون سگا ہے اور کون سوتیلا، یہ ساری تفصیلات قاری کو چکرا دیتی ہیں، تاہم کہانی کی گرفت برقرار رہتی ہے۔ کچھ کردار ہمارے ماحول سے مطابقت نہیں رکھتے اور اجنبی محسوس ہوتے ہیں۔ ناول میں بوٹوکس سے لے کر تھر کول پراجیکٹ اور مرنے کے بعد کی زندگی تک کا تذکرہ موجود ہے۔
    ناول کے مطالعے کے دوران بار بار کئی غیر ملکی ڈرامے ذہن میں گھومتے رہے۔ ایسا محسوس ہوا کہ یہ ناول کئی ترکی ڈراموں کی کہانیوں کو ملا کے تیار کیا گیا ہے۔ کرداروں میں رد و بدل کرکے انہیں اپنے ماحول کے مطابق کرنے کی کوشش کی گئی ہے، مگر ان کے حالات، واقعات، اسٹوری لائن سب ایڈاپٹڈ لگیں۔ ناول میں کرداروں کے جذباتی اور نفسیاتی ٹریٹمنٹ کی کمی محسوس ہوئی۔ ناول واقعات در واقعات آگے بڑھتا گیا، جیسے ڈرامے سین در سین چلتے ہیں۔ تاہم ڈراموں میں ایکٹر، کردار کے جذبات اور نفسیات اپنی ایکٹنگ اور گیٹ اپ کے ذدیعے سے پیش کرتے ہیں۔ یہ سہولت ناول میں موجود نہیں ہوتی، ناول میں ناول نگار کو کرداروں کے احساسات اور جذبات لکھ کے بیان کرنے پڑتے ہیں۔ تاہم نمل میں اس کی کمی محسوس ہوئی، ایسا لگا کہ ناول گہرائی میں نہیں بلکہ گیرائی میں لکھا گیا ہے۔
    ناول کا ایک حصہ اس میں قرآن پاک کی وضاحت اور تفسیر ہے۔ یہ مصحف میں بھی موجود تھی، اس لئے اس کو مصنفہ کا سگنیچر اسٹائل کہہ دیتے ہیں۔
    نمل، بہت اچھا ہو سکتا تھا اگر اوریجنل ہوتا۔ یہی وہ بات سے جس نے مجھے مایوس کیا۔ کسی بیرون ملک کے ڈرامے یا ناول سے انسپیریشن لینا بری بات نہیں، لیکن ایمانداری کا تقاضا یہ ہے کہ آپ اس کا ذکر کر دیں۔ نمرا جی میں بہت صلاحیتیں ہیں، اور مجھے امید ہے کہ ایک دن ہمیں ان کا اوریجنل ناول پڑھنے کو بھی ملے گا۔

    جو اللّٰہ کا حکم



  2. #632
    Site Managers

    Join Date
    Jun 2007
    Location
    پاکستان
    Posts
    54,986
    Mentioned
    42 Post(s)
    Tagged
    3 Thread(s)
    Quote Originally Posted by Rubab View Post
    نمل از نمرا احمد


    ناول نمل کا جب سے ڈائجسٹ میں سلسلہ وار آغاز ہواتھا تب سے ہی اس کی تعریف سننے میں آ رہی تھی۔ تقریباً تمام ہی پڑھنے والے دوستوں نے اس ناول کو ریکمنڈ کیا۔ نمرا جی کا پہلے صرف ایک ہی ناول پڑھنے کا اتفاق ہوا تھا، مصحف۔ تاہم مصحف کے ساتھ میری دوستی نہ ہو سکی اور مجھے اس ناول سے بوریت محسوس ہوئی۔ لیکن جب ایک مہربان نے تیس اقساط کا پورا ناول میرے سسٹم میں رکھ دیا تو ان کی خواہش کا احترام کرنے کےلئے ناول کوپڑھناہی تھا۔
    نمل روایتی ڈائجسٹس ناولز سے مختلف ہے، اس میں گھریلو مسائل، سسرالی مسائل، گھریلو سازشوں وغیرہ کو موضوع نہیں بنایا گیا ہے، یہ روایتی لو اسٹوری بھی نہیں ہے۔ اس میں گھر سے باہر کی دنیا کو موضوع بنایا گیا ہے۔ سسپنس، تھرلر ٹائپ کا ناول کہیں تو مناسب ہو گا۔ ناول کا آغاز بہت متاثر کن ہے۔ کسی انگریزی سسپنس ناول کی طرح کہانی شروع ہوتی ہے اور کردار سامنے آتے ہیں۔ ناول ماضی اور مستقبل میں بیک وقت چلتا ہے، جہاں قتل، قاتل، پولیس، عدالت، وکیل جیسے کردار موجود ہیں۔ ناول ایک وسیع کینوس پہ لکھا گیا ہے اس لئے اس میں کرداروں کی بھرمار ہے، جن کو سمجھنے میں ابتدا میں کافی کنفیوژن ہوتی ہے۔ کون کس کا بھائی، کون کزن،کون سگا ہے اور کون سوتیلا، یہ ساری تفصیلات قاری کو چکرا دیتی ہیں، تاہم کہانی کی گرفت برقرار رہتی ہے۔ کچھ کردار ہمارے ماحول سے مطابقت نہیں رکھتے اور اجنبی محسوس ہوتے ہیں۔ ناول میں بوٹوکس سے لے کر تھر کول پراجیکٹ اور مرنے کے بعد کی زندگی تک کا تذکرہ موجود ہے۔
    ناول کے مطالعے کے دوران بار بار کئی غیر ملکی ڈرامے ذہن میں گھومتے رہے۔ ایسا محسوس ہوا کہ یہ ناول کئی ترکی ڈراموں کی کہانیوں کو ملا کے تیار کیا گیا ہے۔ کرداروں میں رد و بدل کرکے انہیں اپنے ماحول کے مطابق کرنے کی کوشش کی گئی ہے، مگر ان کے حالات، واقعات، اسٹوری لائن سب ایڈاپٹڈ لگیں۔ ناول میں کرداروں کے جذباتی اور نفسیاتی ٹریٹمنٹ کی کمی محسوس ہوئی۔ ناول واقعات در واقعات آگے بڑھتا گیا، جیسے ڈرامے سین در سین چلتے ہیں۔ تاہم ڈراموں میں ایکٹر، کردار کے جذبات اور نفسیات اپنی ایکٹنگ اور گیٹ اپ کے ذدیعے سے پیش کرتے ہیں۔ یہ سہولت ناول میں موجود نہیں ہوتی، ناول میں ناول نگار کو کرداروں کے احساسات اور جذبات لکھ کے بیان کرنے پڑتے ہیں۔ تاہم نمل میں اس کی کمی محسوس ہوئی، ایسا لگا کہ ناول گہرائی میں نہیں بلکہ گیرائی میں لکھا گیا ہے۔
    ناول کا ایک حصہ اس میں قرآن پاک کی وضاحت اور تفسیر ہے۔ یہ مصحف میں بھی موجود تھی، اس لئے اس کو مصنفہ کا سگنیچر اسٹائل کہہ دیتے ہیں۔
    نمل، بہت اچھا ہو سکتا تھا اگر اوریجنل ہوتا۔ یہی وہ بات سے جس نے مجھے مایوس کیا۔ کسی بیرون ملک کے ڈرامے یا ناول سے انسپیریشن لینا بری بات نہیں، لیکن ایمانداری کا تقاضا یہ ہے کہ آپ اس کا ذکر کر دیں۔ نمرا جی میں بہت صلاحیتیں ہیں، اور مجھے امید ہے کہ ایک دن ہمیں ان کا اوریجنل ناول پڑھنے کو بھی ملے گا۔
    بہت عمدہ انداز میں لکھا گیا تجزیہ ہے رباب جی۔
    ویسے یہ تجزیہ پڑھ کر ہم بھی نمل پڑھنے کے مشاق سے ہو گئے ہیں۔ ایک وجہ یہ بھی ہے کہ پڑھ کے جانا جا سکے کہ اس میں کیا مسئلہ ہے۔
    اگر کوئی لنک وغیرہ میسر آ سکے تو بہم پہنچائیے گا۔
    شکریہ
    (اے اللہ! میرے علم میں اضافہ فرما)۔
    میرا بلاگ: بے کار باتیں

  3. #633
    Senior Member

    Join Date
    Aug 2016
    Posts
    1,461
    Blog Entries
    3
    Mentioned
    19 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    ناول یہاں سے ڈاونلوڈ کیا جا سکتا ہے۔
    قریب قریب ہم بھی رباب بہنا کے تبصرے سے اتفاق کرینگے۔۔
    Quote Originally Posted by Ahsan_Yaz View Post
    بہت عمدہ انداز میں لکھا گیا تجزیہ ہے رباب جی۔
    ویسے یہ تجزیہ پڑھ کر ہم بھی نمل پڑھنے کے مشاق سے ہو گئے ہیں۔ ایک وجہ یہ بھی ہے کہ پڑھ کے جانا جا سکے کہ اس میں کیا مسئلہ ہے۔
    اگر کوئی لنک وغیرہ میسر آ سکے تو بہم پہنچائیے گا۔
    شکریہ
    !!!!موہے رنگ دو لال
    ناگفتہ

  4. #634
    Site Managers

    Join Date
    Jun 2007
    Location
    پاکستان
    Posts
    54,986
    Mentioned
    42 Post(s)
    Tagged
    3 Thread(s)
    Quote Originally Posted by Abdullah View Post
    ناول یہاں سے ڈاونلوڈ کیا جا سکتا ہے۔
    قریب قریب ہم بھی رباب بہنا کے تبصرے سے اتفاق کرینگے۔۔

    بہت نوازش جناب۔
    نمرہ احمد کو اس سے پہلے ہم نے نہیں پڑھا۔
    جنت کے پتے وغیرہ کی بابت کیا رائے ہے؟
    نیز یہ بھی روشنی ڈالئے کہ کیا بہت سے دیگر رائٹرز کی طرح انہوں نے بھی مذہب کا استعمال کرتے ہوئے چورن فروشی کی ہے یا نہیں؟
    (اے اللہ! میرے علم میں اضافہ فرما)۔
    میرا بلاگ: بے کار باتیں

  5. #635
    Senior Member

    Join Date
    Aug 2016
    Posts
    1,461
    Blog Entries
    3
    Mentioned
    19 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    نمرہ احمد، عمیرہ یا کسی دوسری احمد سے تھوڑا بہتر لکھتی ہین۔
    مذہبی تڑکا موجود ہے جی۔ اور اچھا خاصا موجود ہے۔
    جنت کے پتے کی بابت یہی رائے ہے کہ پڑھنا چاہیں تو پڑھ ورنہ رہنے دیں تو بہتر ہے۔
    Quote Originally Posted by Ahsan_Yaz View Post

    بہت نوازش جناب۔
    نمرہ احمد کو اس سے پہلے ہم نے نہیں پڑھا۔
    جنت کے پتے وغیرہ کی بابت کیا رائے ہے؟
    نیز یہ بھی روشنی ڈالئے کہ کیا بہت سے دیگر رائٹرز کی طرح انہوں نے بھی مذہب کا استعمال کرتے ہوئے چورن فروشی کی ہے یا نہیں؟
    !!!!موہے رنگ دو لال
    ناگفتہ

  6. #636
    Site Managers

    Join Date
    Jun 2007
    Location
    پاکستان
    Posts
    54,986
    Mentioned
    42 Post(s)
    Tagged
    3 Thread(s)
    Quote Originally Posted by Abdullah View Post
    نمرہ احمد، عمیرہ یا کسی دوسری احمد سے تھوڑا بہتر لکھتی ہین۔
    مذہبی تڑکا موجود ہے جی۔ اور اچھا خاصا موجود ہے۔
    جنت کے پتے کی بابت یہی رائے ہے کہ پڑھنا چاہیں تو پڑھ ورنہ رہنے دیں تو بہتر ہے۔

    شکریہ جناب۔
    پہلے نمل پڑھ کر ہی مزید کی بابت سوچنا بہتر رہے گا۔
    (اے اللہ! میرے علم میں اضافہ فرما)۔
    میرا بلاگ: بے کار باتیں

  7. #637
    Site Managers Rubab's Avatar

    Join Date
    Jun 2007
    Posts
    13,943
    Blog Entries
    6
    Mentioned
    24 Post(s)
    Tagged
    2 Thread(s)
    نمل میں مذہب کا تڑکہ خاصی مقدار میں موجود ہے۔ ابتدا میں کم ہے لیکن پھر بہت زیادہ ہے۔ نیز یہ بہت طویل ناول ہے، بس پڑھتے جائیں،پڑھتے جائیں اور بس پڑھتے جائیں۔

    جو اللّٰہ کا حکم



  8. #638
    Senior Member

    Join Date
    Aug 2016
    Posts
    1,461
    Blog Entries
    3
    Mentioned
    19 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    ضدی از عصمت چغتائی
    چھوٹا سا ناول ہے اور سادہ سی کہانی ہے۔
    البتہ لکھی خوب انداز سے گئی ہے۔
    !!!!موہے رنگ دو لال
    ناگفتہ

  9. #639
    Sisters Society

    Join Date
    Feb 2008
    Location
    CA, USA
    Posts
    16,003
    Blog Entries
    2
    Mentioned
    2 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    Nimra Ahmed take ideas from English novels, tweek it around, put some Deen in it, haleem sorry novel is ready. Umaira Ahmed, add some philosophy to all of above and 12 masala chat is ready...convert it into tv play and make money.





    The most common way people give up their power


    is by thinking they don't have any.


    ~ Alice Walker ~


    Courage is like a muscle.


    We strengthen it with use.


    ~ Ruth Gordon ~

  10. #640
    Sisters Society

    Join Date
    Feb 2008
    Location
    CA, USA
    Posts
    16,003
    Blog Entries
    2
    Mentioned
    2 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    If Oceans Were Ink by Carla Power

    A good read!





    The most common way people give up their power


    is by thinking they don't have any.


    ~ Alice Walker ~


    Courage is like a muscle.


    We strengthen it with use.


    ~ Ruth Gordon ~

  11. #641
    Site Managers

    Join Date
    Jun 2007
    Location
    پاکستان
    Posts
    54,986
    Mentioned
    42 Post(s)
    Tagged
    3 Thread(s)
    Quote Originally Posted by Fozan View Post
    If Oceans Were Ink by Carla Power

    A good read!

    کچھ تفصیل بھی مل جاتی تو۔
    (اے اللہ! میرے علم میں اضافہ فرما)۔
    میرا بلاگ: بے کار باتیں

  12. #642
    Site Managers Rubab's Avatar

    Join Date
    Jun 2007
    Posts
    13,943
    Blog Entries
    6
    Mentioned
    24 Post(s)
    Tagged
    2 Thread(s)
    Quote Originally Posted by Fozan View Post
    Nimra Ahmed take ideas from English novels, tweek it around, put some Deen in it, haleem sorry novel is ready. Umaira Ahmed, add some philosophy to all of above and 12 masala chat is ready...convert it into tv play and make money.
    نمرہ احمد کے بارے میں آپ کا تجزیہ بالکل درست ہے مجھے بھی نری مایوسی ہوئی ان کے ناولز پڑھ کے۔
    جہاں تک میرا مشاہدہ ہے مذہب کو کہانی کا حصہ بنانے کا کام سب سے پہلے عمیرا احمد نے شروع کیا تھا۔ اس کے بعد یہ سلسلہ بھیڑ چال کا شکار ہو گیا۔ ہر مصنفہ نے یہ کام شروع کرکے مذہب اور اپنے کام کو مذاق ہی بنا دیا۔ لیکن عمیرا جی کا کام ان میں کافی بہتر رہا ہے اور وہ کافی حد تک اوریجنل آئڈیاز لے کے آتی ہیں۔ عمیرا احمد اور نمرا احمد کے ناموں میں مماثلت کی وجہ سے اکثر نمرا جی کے کارناموں کا گناہ بھی عمیرا جی کے کاندھوں پہ آ جاتا ہے۔
    مذہب سے ہٹ کے بھی عمیرا احمد کے چند ناولز ہیں جیسے امر بیل، اور تھوڑا سا آسمان۔ یہ کافی بہتر ہیں پر ڈرامے ان پہ بھی بن چکے ہیں۔ خوش قسمتی سے میں ڈرامے نہیں دیکھتی اسی لئے اب بھی ناول پڑھ پاتی ہوں۔

    جو اللّٰہ کا حکم



  13. #643
    Section Managers Kainat's Avatar

    Join Date
    Oct 2007
    Location
    Germany
    Posts
    14,435
    Blog Entries
    18
    Mentioned
    14 Post(s)
    Tagged
    1 Thread(s)
    جرنیلی سڑک
    مصنف۔۔ رضا علی عابدی
    بہت خوبصورت کتاب ہے۔ سفر نامہ اور تاریخ سے دلچسپی رکھنے والوں کے لیے لاجواب۔۔۔مجھے بہت اچھی لگی۔

  14. #644
    Site Managers Rubab's Avatar

    Join Date
    Jun 2007
    Posts
    13,943
    Blog Entries
    6
    Mentioned
    24 Post(s)
    Tagged
    2 Thread(s)
    لے بابا ابابیل از بابا یحیی خان


    آپ بیتی کے حوالے سے میرا مطالعہ شہاب نامہ، الکھ نگری اور چند دیگر آپ بیتیوں تک محدود ہے۔ شہاب نامہ کا مطالعہ بہت بچپن میں ہی کر لیا تھا۔ یوں تو پوری کتاب ہی پڑھنے لائق ہے لیکن اس کا باب "بملا کماری کی روح" مجھے ہمیشہ ہی حیران کرتا رہا ہے۔ بعد ازاں ممتاز مفتی صاحب کی کتاب الکھ نگری پڑھنے سے قدرت اللہ شہاب صاحب کی شخصیت کے روحانی پہلو سے واقفیت ہوئی اور میری حیرانی میں کسی قدر کمی واقع ہوئی۔ شہاب نامہ بار بار پڑھنے کے بعد یہ احساس ہوتا ہے کہ شہاب صاحب نے اپنی زندگی کے روحانی پہلو کو پوشیدہ رکھا ہے، سوائے آخری باب کے۔ ایسے میں بابا یحیی خان صاحب کی آپ بیتی پہ مبنی کتب زیادہ حیران کرتی ہیں کیونکہ انہوں نے اپنے ساتھ پیش آنے والے کئی غیر معمولی واقعات کا کھل کے تذکرہ کیا ہےاور کئی پوشیدہ باتیں کھول دی ہیں۔


    بابا یحیی خان دور جدید کے بابا ہیں۔ آپ کے بقول آپ کے ساتھ کئی محیر العقل واقعات پیش آئے جن میں سے کچھ کا اندراج آپ کی کتب میں ہے۔ اس سلسلے کی پہلی کتاب "پیا رنگ کالا" ہے، اور دوسری کتاب "کاجل کوٹھا" کے نام سے سامنے آئی۔ اس سلسلے کی تیسری اور تازہ ترین کتاب "لے بابا ابابیل" کے عنوان سے بابا جی نے لکھی ہے۔ باقی دیگر کتب کی طرح اس کتاب کا سرورق بھی سیاہ رنگ کا ہے اور یہ انتہائی ضخیم ہے۔ یہ کتب انفرادی طور پہ بھی پڑھی جا سکتی ہیں اور ایک سیریز کی طرح بھی، پہلے دوسرے اور پھر تیسرے حصے کی ترتیب کے ساتھ۔ تاہم بہتر یہی ہے کہ انہیں ترتیب وار ہی پڑھا جائے تاکہ بابا جی اور ان کے لکھنے کے انداز سے بتدریج واقفیت حاصل ہوتی جائے، نیز کتابوں کے مزاج کا بھی اندازہ ہو جائے۔


    لے بابا ابابیل بھی باقی دونوں کتب کی طرح بابا جی کے ساتھ پیش آئے واقعات پہ مشتمل ہے زیادہ تر واقعات غیر مرئی اور غیر فطری قوتوں سے متعلق ہیں۔ اس کتاب میں سانپوں کی دنیا کی باتیں بھی ہیں اور شیروں کی دنیا کے قصے بھی۔ بابا جی کے مطابق شیر بھی خانہ کعبہ کا حج کرتے ہیں اور اس کے بعد حاجی کہلاتے ہیں۔ سانپوں کے سو سال بعد روپ بدل لینے کا ذکر بھی موجود ہے۔ اسی طرح انسان اور جن کے ملاپ سے پیدا ہونے والی مخلوق جانس کا تذکرہ بھی اس کتاب میں موجود ہے۔ کتاب میں کچھ مشہور شخصیات کے ساتھ پیش آنے والے واقعات کا بھی تذکرہ ہے جیسے عارف لوہار کے والد عالم لوہار کے چمٹوں کا جنوں کے ہاتھوں ٹیڑھے ہو جانا، استاد اسد امانت علی کا ایک مزار پہ حاضری دینا اور پھر فیض حاصل کرنا، جگجیت سنگھ کا اپنی کسی ذاتی غرض سے آپ کو بلوانا وغیرہ


    لے بابا ابابیل میں پہلی دو کتابوں کے بیان کردہ قصوں کا ذکر بھی ہے۔ جیسے کاجل کوٹھا میں بابا جی نے سفیدہ بائی اور کالے خان کشمیری کا قصہ بیان کیا ہے، وہ قصہ لے بابا ابابیل میں مکمل کیا گیا ہے۔ سفیدہ بائی ایسی طوائف تھی جسے محبت راس نہیں آئی، دو دفعہ شادی ہونے کے باوجود وہ بس نہیں سکی اور اسے واپس آنا پڑا۔ لیکن پے در پے کے حادثوں نے اس کا دل دنیا سے اچاٹ کر دیا تھا۔ کاجل کوٹھا میں بابا جی کی کاجل کوٹھوں کی تلاش شروع ہوئی تھی۔ آپ کو ایسے تین کاجل کوٹھوں کو ڈھونڈنا تھا۔ کتاب میں دو کاجل کوٹھوں کا ذکر ہے۔ تیسرے کاجل کوٹھے کا ذکر لے بابا ابابیل میں ملتا ہے جہاں سفیدہ بائی کا قصہ بیان کیا گیا ہے۔ بابا جی نے اس کے کوٹھے کو تیسرا کاجل کوٹھا قرار دیا ہے۔


    کتاب کے عنوان میں جس "بابا ابابیل" کا نام ہے اس کا قصہ آدھی سے زیادہ کتاب کے مطالعے کے بعد سامنے آتا ہے۔ اس بابا ابابیل کی تلاش میں آپ نے کس طرح کوشش کی اس کا تفصیلی ذکر موجود ہے۔ بابا ابابیل ایک نوجوان بابا تھا جس کے پاس غیر مرئی ابابیلیں تھیں۔ ایسا محسوس ہوتا کہ وہ جسم کے اندر بھر گئی ہیں لیکن بظاہر کچھ نظر نہ آتا۔ یہ قصہ تشنہ محسوس ہوتا ہے۔ شاید با باجی اگلی کسی کتاب میں اس کی مزید وضاحت کریں۔


    لے بابا ابابیل انتہائی ثقیل کتاب ہے۔ اسے صفحے الٹ کے نہیں پڑھا جا سکتا۔ نیز اسے ایک یا دو نشستوں میں مکمل کرنا محال ہے۔ انتہائی مشکل الفاظ اور ادق فلسفے کی موجودگی کی وجہ سے پڑھنے کی رفتار کم ہوتی چلی جاتی ہے۔ ہر پیرا پڑھ کے پہلے اس کو سمجھنا پڑتا ہے اور پھر ہی آگے بڑھا جا سکتا ہے ورنہ کتاب کے سر کے کوسوں اوپر سے گزرنے کے امکانات پیدا ہو سکتے ہیں۔ اس سب کے باوجود یہ ایک منفرد کتاب ہے، اس طرح کی کتب عام نہیں لکھی جاتیں اور بابا جی نے بھی یہ تیسرا حصہ قریب دس سال بعد لکھا ہے۔

    میں اس کتاب کو نان فکشن کی کیٹیگری میں رکھوں گی۔ یہ آپ بیتی ہے۔ جس طرح آپ بیتی میں خود پہ بیتے ہوئے واقعات کا ذکر کیا جاتا ہے ویسے ہی اس میں بھی ہے۔ ہاں یہ ہے کہ کیونکہ بابا جی عام انسانوں سے مختلف ہیں اور انہیں بہت کچھ ایسا بھی نظر آتا ہے جو بظاہر نظر نہیں آ رہا ہوتا، اس لیے یہ آپ بیتی اپنے آپ ہی مختلف ہو جاتی ہے۔

    ‎ ان کی بہت سی باتیں ہمارے خیالات، عقائد سے متصادم ہیں، اس لئے ان کو مکمل حق اور سچ سمجھ کے پڑھنا صحیح نہیں ہوگا۔ یہ بس ایک بندے پہ بیتے واقعات ہیں، جن کا مکمل سمجھ میں آنا بھی ضروری نہیں، بس جو بات ٹھیک لگے وہ ٹھیک، باقی چھوڑ دیں۔




    جو اللّٰہ کا حکم



Page 43 of 43 FirstFirst ... 33414243

Bookmarks

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •