Thanks Thanks:  1,428
Likes Likes:  420
Page 115 of 115 FirstFirst ... 1565105113114115
Results 1,711 to 1,724 of 1724

Thread: قرآن فہمی، آئیے مل کر پڑھیں ترجمہ قرآن

  1. #1711
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,168
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    درگزر کرنے کی اپیل
    يُوْسُفُ اَعْرِضْ عَنْ ھٰذَا ۫وَاسْتَغْفِرِيْ لِذَنْۢبِكِ ښ اِنَّكِ كُنْتِ مِنَ الْخٰطِــِٕيْنَ ۧ

    يُوْسُفُ
    : یوسف اَعْرِضْ : جانے دے عَنْ : سے۔ کو ھٰذَا : اس وَاسْتَغْفِرِيْ : اور اے عورت بخشش مانگ لِذَنْۢبِكِ : اپنے گناہ کی اِنَّكِ : بیشک تو كُنْتِ : تو ہے مِنَ : سے الْخٰطِــِٕيْنَ : خطا کار (جمع)

    اے یوسف ! (علیہ السلام) اس سے درگزر کر اور اے عورت اپنے گناہ کی معافی مانگ بےشک تو ہی خطاکاروں میں سے ہے۔۲۹

  2. #1712
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,168
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    عزیز مصر کی بیوی کے خلاف پروپیگنڈ۱
    وَقَالَ نِسْوَةٌ فِي الْمَدِيْنَةِ امْرَاَتُ الْعَزِيْزِ تُرَاوِدُ فَتٰىهَا عَنْ نَّفْسِهٖ ۚ قَدْ شَغَفَهَا حُبًّا ۭ اِنَّا لَنَرٰىهَا فِيْ ضَلٰلٍ مُّبِيْنٍ

    وَقَالَ
    : اور کہا نِسْوَةٌ : عورتیں فِي الْمَدِيْنَةِ : شہر میں امْرَاَتُ الْعَزِيْزِ : عزیز کی بیوی تُرَاوِدُ : پھسلا رہی ہے فَتٰىهَا : اپنا غلام عَنْ : سے نَّفْسِهٖ : اس کا نفس قَدْ شَغَفَهَا : جگہ پکڑ گئی ہے حُبًّا : اس کی محبت اِنَّا لَنَرٰىهَا : بیشک ہم اسے دیکھتی ہیں فِيْ : میں ضَلٰلٍ : گمراہی مُّبِيْنٍ : کھلی

    اورعورتیں شہر میں کہنے لگیں کہ عزیز کی بیوی اپنے غلام کو اپنی طرف مائل کرنا چاہتی ہے۔ اور اس کی محبت اس کے دل میں گھر کرگئی ہے۔ ہم دیکھتی ہیں کہ وہ صریح گمراہی میں ہے۔۳۰


  3. #1713
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,168
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    عورتوں کی دعوت کا انتظام
    فَلَمَّا سَمِعَتْ بِمَكْرِهِنَّ اَرْسَلَتْ اِلَيْهِنَّ وَاَعْتَدَتْ لَهُنَّ مُتَّكَاً وَّاٰتَتْ كُلَّ وَاحِدَةٍ مِّنْهُنَّ سِكِّيْنًا وَّقَالَتِ اخْرُجْ عَلَيْهِنَّ ۚ فَلَمَّا رَاَيْنَهٗٓ اَكْبَرْنَهٗ وَقَطَّعْنَ اَيْدِيَهُنَّ ۡ وَقُلْنَ حَاشَ لِلّٰهِ مَا ھٰذَا بَشَرًا ۭ اِنْ ھٰذَآ اِلَّا مَلَكٌ كَرِيْمٌ

    فَلَمَّا
    : پھر جب سَمِعَتْ : اس نے سنا بِمَكْرِهِنَّ : ان کا فریب اَرْسَلَتْ : دعوت بھیجی اِلَيْهِنَّ : ان کی طرف وَاَعْتَدَتْ : اور تیار کی لَهُنَّ : ان کے لیے مُتَّكَاً : ایک محفل وَّاٰتَتْ : اور دی كُلَّ وَاحِدَةٍ : ہر ایک کو مِّنْهُنَّ : ان میں سے سِكِّيْنًا : ایک ایک چھری وَّقَالَتِ : اور کہا اخْرُجْ : نکل آ عَلَيْهِنَّ : ان پر (ان کے سامنے) فَلَمَّا : پھر جب رَاَيْنَهٗٓ : انہوں نے اسے دیکھا اَكْبَرْنَهٗ : ان پر اس کا رعب چھا گیا وَقَطَّعْنَ : اور انہوں نے کاٹ لیے اَيْدِيَهُنَّ : اپنے ہاتھ وَقُلْنَ : اور کہنے لگیں حَاشَ : پناہ لِلّٰهِ : اللہ کی مَا ھٰذَا : نہیں یہ بَشَرًا : بشر اِنْ : نہیں ھٰذَآ : یہ اِلَّا : مگر مَلَكٌ : فرشتہ كَرِيْمٌ : بزرگ

    پھر جب اس نے ان عورتوں کی مکر کی باتیں سنیں تو انہیں بلوا بھیجا اور ان کیلئے ایک مجلس تیار کی جس میں تکیہ لگا کر بیٹھیں اور (پھل تراشنے کے لئے) ان میں سے ہر ایک کو ایک ایک چھری دے دی اور یوسف سے کہا کہ ان کے سامنے نکل آؤ ۔ سو جب ان عورتوں نے انہیں دیکھا تو حیران رہ گئیں۔ اور اپنے ہاتھ کاٹ لئے اور کہنے لگیں اللہ کی پناہ یہ شخص آدمی نہیں ہے یہ تو کوئی بزرگ فرشتہ ہے۔۳۱


  4. #1714
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,168
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    عزیز مصر کی بیوی کی حضرت یوسف (علیہ السلام) کو دھمکی
    قَالَتْ فَذٰلِكُنَّ الَّذِيْ لُمْتُنَّنِيْ فِيْهِ ۭ وَلَقَدْ رَاوَدْتُّهٗ عَنْ نَّفْسِهٖ فَاسْتَعْصَمَ ۭ وَلَىِٕنْ لَّمْ يَفْعَلْ مَآ اٰمُرُهٗ لَيُسْجَنَنَّ وَلَيَكُوْنًا مِّنَ الصّٰغِرِيْنَ

    قَالَتْ
    : وہ بولی فَذٰلِكُنَّ : سو یہ وہی ہے الَّذِيْ : جو کہ لُمْتُنَّنِيْ : تم نے ملامت کی مجھے فِيْهِ : اس میں وَلَقَدْ رَاوَدْتُّهٗ : اور میں نے اسے پھسلایا عَنْ : سے نَّفْسِهٖ : اس کا نفس فَاسْتَعْصَمَ : تو اس نے بچالیا وَلَىِٕنْ : اور اگر لَّمْ يَفْعَلْ : اس نے نہ کیا مَآ : جو اٰمُرُهٗ : میں کہتی ہوں اسے لَيُسْجَنَنَّ : البتہ قید کردیا جائیگا وَلَيَكُوْنًا : اور البتہ ہوجائے گا مِّنَ : سے الصّٰغِرِيْنَ : بےعزت (جمع)

    تب (زلیخا نے) کہا یہ وہی ہے جس کے بارے میں تم مجھے طعنے دیتی تھیں۔ اور بیشک میں نے اسکو اپنی طرف مائل کرنا چاہا مگر یہ بچا رہا۔ اور اگر یہ وہ کام نہ کریگا جو میں اسے کہتی ہوں تو البتہ ضرورقید کردیا گا اور البتہ ضرور بےعزت ہوگا۔۳۲


  5. #1715
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,168
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    حضرت یوسف (علیہ السلام) کا دعا کرنا
    قَالَ رَبِّ السِّجْنُ اَحَبُّ اِلَيَّ مِمَّا يَدْعُوْنَنِيْٓ اِلَيْهِ ۚ وَاِلَّا تَصْرِفْ عَنِّيْ كَيْدَهُنَّ اَصْبُ اِلَيْهِنَّ وَاَكُنْ مِّنَ الْجٰهِلِيْنَ

    قَالَ
    : اس نے کہا رَبِّ : اے میرے رب السِّجْنُ : قید اَحَبُّ : زیادہ پسند اِلَيَّ : مجھ کو مِمَّا : اس سے جو يَدْعُوْنَنِيْٓ : مجھے بلاتی ہیں اِلَيْهِ : اس کی طرف وَ : اور اِلَّا تَصْرِفْ : اگر نہ پھیرا عَنِّيْ : مجھ سے كَيْدَهُنَّ : ان کا فریب اَصْبُ : مائل ہوجاؤں گا اِلَيْهِنَّ : ان کی طرف وَاَكُنْ : اور میں ہوں گا مِّنَ : سے الْجٰهِلِيْنَ : جاہل (جمع)

    یوسف نے دعا کی کہ پروردگار جس کام کی طرف یہ مجھے بلاتی ہیں اس کی نسبت مجھے قید پسند ہے۔ اور اگر تو مجھ سے ان کے فریب کو نہ ہٹائے گا تو میں ان کی طرف مائل ہوجاؤں گا اور نادانوں میں داخل ہوجاؤں گا۔۳۳

  6. #1716
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,168
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    یوسف کی دعا قبول ہوگئی
    فَاسْتَجَابَ لَهٗ رَبُّهٗ فَصَرَفَ عَنْهُ كَيْدَهُنَّ ۭ اِنَّهٗ هُوَ السَّمِيْعُ الْعَلِيْمُ

    فَاسْتَجَابَ
    : سو قبول کرلی لَهٗ : اس کی (دعا) رَبُّهٗ : اس کا رب فَصَرَفَ : پس پھیر دیا عَنْهُ كَيْدَهُنَّ : ان کا فریب اِنَّهٗ : بیشک وہ هُوَ : وہ السَّمِيْعُ : سننے والا الْعَلِيْمُ : جاننے والا

    سو قبول کرلی اس کی دعا اس کے رب نے پھر دفع کیا اس سے ان کا فریب بیشک وہ سننے والا جاننے والا ہے۔۳۴


  7. #1717
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,168
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    جیل خانہ اور یوسف علیہ السلام
    ثُمَّ بَدَا لَهُمْ مِّنْۢ بَعْدِ مَا رَاَوُا الْاٰيٰتِ لَيَسْجُنُنَّهٗ حَتّٰي حِيْنٍ ۧ

    ثُمَّ : پھر بَدَا لَهُمْ : انہیں سوجھا مِّنْۢ بَعْدِ : اس کے بعد مَا رَاَوُا : جب انہوں نے دیکھیں الْاٰيٰتِ : نشانیاں لَيَسْجُنُنَّهٗ : اسے ضرور قید میں ڈالیں حَتّٰي حِيْنٍ : ایک مدت تک

    پھر(یوسف کی پاک دامنی اورعورتوں کی فریب کاریوں کی) نشانیاں دیکھنے کے بعد ان لوگوں کی سمجھ میں یہ آیا کہ ایک وقت تک یوسف کو جیل میں رکھیں۔۳۵


  8. #1718
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,168
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    حضرت یوسف (علیہ السلام) کے جیل میں دوساتھی
    وَدَخَلَ مَعَهُ السِّجْنَ فَتَيٰنِ ۭ قَالَ اَحَدُهُمَآ اِنِّىْٓ اَرٰىنِيْٓ اَعْصِرُ خَمْرًا ۚ وَقَالَ الْاٰخَرُ اِنِّىْٓ اَرٰىنِيْٓ اَحْمِلُ فَوْقَ رَاْسِيْ خُبْزًا تَاْكُلُ الطَّيْرُ مِنْهُ ۭ نَبِّئْنَا بِتَاْوِيْـلِهٖ ۚ اِنَّا نَرٰىكَ مِنَ الْمُحْسِنِيْنَ

    وَدَخَلَ
    : اور داخل ہوئے مَعَهُ : اس کے ساتھ السِّجْنَ : قید خانہ فَتَيٰنِ : دوجوان قَالَ : کہا اَحَدُهُمَآ : ان میں سے ایک اِنِّىْٓ : بیشک اَرٰىنِيْٓ : بیشک میں دیکھتا ہوں اَعْصِرُ : نچوڑ رہا ہوں خَمْرًا : شراب وَقَالَ : اور کہا الْاٰخَرُ : دوسرا اِنِّىْٓ اَرٰىنِيْٓ : میں دیکھتا ہوں اَحْمِلُ : اٹھائے ہوئے ہوں فَوْقَ : اوپر رَاْسِيْ : اپنا سر خُبْزًا : روٹی تَاْكُلُ : کھا رہے ہیں الطَّيْرُ : پرندے مِنْهُ : اس سے نَبِّئْنَا : ہمیں بتلائیے بِتَاْوِيْـلِهٖ : اس کی تعبیر اِنَّا نَرٰىكَ : بیشک ہم تجھے دیکھتے ہیں مِنَ : سے الْمُحْسِنِيْنَ : نیکو کار (جمع)

    اور داخل ہوئے قید خانہ میں اس کے ساتھ دو جوان کہنے لگا ان میں سے ایک میں دیکھتا ہوں کہ میں نچوڑتا ہوں شراب اور دوسرے نے کہا کہ میں دیکھتا ہوں کہ اٹھا رہا ہوں اپنے سر پر روٹی کہ جانور کھاتے ہیں اس میں سے ہمیں ان کی تعبیر بتا ئیں کہ ہم آپ کونیکوکار دیکھتے ہیں۔۳۶


  9. #1719
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,168
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    جیل خانہ میں خوابوں کی تعبیر اور تبلیغ توحید
    قَالَ لَا يَاْتِيْكُمَا طَعَامٌ تُرْزَقٰنِهٖٓ اِلَّا نَبَّاْتُكُمَا بِتَاْوِيْـلِهٖ قَبْلَ اَنْ يَّاْتِيَكُمَا ۭ ذٰلِكُمَا مِمَّا عَلَّمَنِيْ رَبِّيْ ۭ اِنِّىْ تَرَكْتُ مِلَّةَ قَوْمٍ لَّا يُؤْمِنُوْنَ بِاللّٰهِ وَهُمْ بِالْاٰخِرَةِ هُمْ كٰفِرُوْنَ

    قَالَ
    : اس نے کہا لَا يَاْتِيْكُمَا : تمہارے پاس نہیں آئیگا طَعَامٌ : کھانا تُرْزَقٰنِهٖٓ : جو تمہیں دیا جاتا ہے اِلَّا : مگر نَبَّاْتُكُمَا : میں تمہیں بتلا دوں گا بِتَاْوِيْـلِهٖ : اس کی تعبیر قَبْلَ : قبل اَنْ : کہ يَّاْتِيَكُمَا : وہ آئے تمہارے پاس ذٰلِكُمَا : یہ مِمَّا : اس سے جو عَلَّمَنِيْ : مجھے سکھایا رَبِّيْ : میرا رب اِنِّىْ : بیشک میں تَرَكْتُ : میں نے چھوڑا مِلَّةَ : دین قَوْمٍ : وہ قوم لَّا يُؤْمِنُوْنَ : وہ ایمان نہیں لاتے بِاللّٰهِ : اللہ پر وَهُمْ : اور وہ بِالْاٰخِرَةِ : آخرت سے هُمْ : وہ كٰفِرُوْنَ : انکار کرتے ہیں

    یوسف نے کہا جو کھانا تمہیں دیا جاتا ہے اس کے آنے سے پہلے میں تمہیں خواب کی تعبیر بتادوں گا یہ اس علم میں ہے جو میرے رب نے مجھے سکھایا ہے۔ بلاشبہ میں نے ان لوگوں کے دین کو چھوڑ رکھا ہے جو اللہ تعالیٰ پر ایمان نہیں لاتے اور وہ آخرت کے منکر ہیں۔۳۷


  10. #1720
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,168
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    کفر کی برائی اور کفر سے بیزاری
    وَاتَّبَعْتُ مِلَّةَ اٰبَاۗءِيْٓ اِبْرٰهِيْمَ وَاِسْحٰقَ وَيَعْقُوْبَ ۭ مَا كَانَ لَنَآ اَنْ نُّشْرِكَ بِاللّٰهِ مِنْ شَيْءٍ ۭ ذٰلِكَ مِنْ فَضْلِ اللّٰهِ عَلَيْنَا وَعَلَي النَّاسِ وَلٰكِنَّ اَكْثَرَ النَّاسِ لَا يَشْكُرُوْنَ

    وَاتَّبَعْتُ
    : اور میں نے پیروی کی مِلَّةَ : دین اٰبَاۗءِيْٓ : اپنے باپ دادا اِبْرٰهِيْمَ : ابراہیم وَاِسْحٰقَ : اور اسحق وَيَعْقُوْبَ : اور یعقوب مَا كَانَ : نہیں ہے لَنَآ : ہمارے لیے اَنْ : کہ نُّشْرِكَ : ہم شریک ٹھہرائیں بِاللّٰهِ : اللہ کا مِنْ شَيْءٍ : کوئی کسی شے ذٰلِكَ : یہ مِنْ : سے فَضْلِ اللّٰهِ : اللہ کا فضل عَلَيْنَا : ہم پر وَ : اور عَلَي النَّاسِ : لوگوں پر وَلٰكِنَّ : اور لیکن اَكْثَرَ : اکثر النَّاسِ : لوگ لَا يَشْكُرُوْنَ : شکر ادا نہیں کرتے

    اور میں نے اپنے باپ دادا ابراہیم، اسحاق اور یعقوب کے دین کی پیروی کی ہے۔ ہمیں یہ حق نہیں ہے کہ اللہ کے ساتھ کسی بھی چیز کو شریک ٹھہرائیں۔ یہ اللہ کا فضل ہے ہم پر بھی اور لوگوں پر بھی ہے لیکن اکثر لوگ شکر نہیں کرتے۔۳۸


  11. #1721
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,168
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    اللہ اکیلا ہی بہتر ہے
    يٰصَاحِبَيِ السِّجْنِ ءَاَرْبَابٌ مُّتَفَرِّقُوْنَ خَيْرٌ اَمِ اللّٰهُ الْوَاحِدُ الْقَهَّارُ

    يٰصَاحِبَيِ السِّجْنِ
    : اے میرے قید کے ساتھیو ! ءَاَرْبَابٌ : کیا کئی معبود مُّتَفَرِّقُوْنَ : جدا جدا خَيْرٌ : بہتر اَمِ اللّٰهُ : یا اللہ الْوَاحِدُ : ایک، یکتا الْقَهَّارُ : زبردست۔ غالب

    اے میرے جیل کے دونوں ساتھیو کیا بہت سے معبود جدا جدا بہتر ہیں یا اللہ جو تنہا ہے زبردست ہے۔۳۹


  12. #1722
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,168
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    معبودان من دون اللہ محض من گھڑت نام ہیں
    مَا تَعْبُدُوْنَ مِنْ دُوْنِهٖٓ اِلَّآ اَسْمَاۗءً سَمَّيْتُمُوْهَآ اَنْتُمْ وَاٰبَاۗؤُكُمْ مَّآ اَنْزَلَ اللّٰهُ بِهَا مِنْ سُلْطٰنٍ ۭ اِنِ الْحُكْمُ اِلَّا لِلّٰهِ ۭ اَمَرَ اَلَّا تَعْبُدُوْٓا اِلَّآ اِيَّاهُ ۭ ذٰلِكَ الدِّيْنُ الْقَيِّمُ وَلٰكِنَّ اَكْثَرَ النَّاسِ لَا يَعْلَمُوْنَ

    مَا : نہیں تَعْبُدُوْنَ : تم پوجتے مِنْ دُوْنِهٖٓ : اس کے سوا اِلَّآ : مگر اَسْمَاۗءً : نام سَمَّيْتُمُوْهَآ : تم نے رکھ لیے ہیں اَنْتُمْ : تم وَاٰبَاۗؤُكُمْ : اور تمہارے باپ دادا مَّآ : نہیں اَنْزَلَ اللّٰهُ : اللہ نے اتاری بِهَا : اس کے لیے مِنْ سُلْطٰنٍ : کوئی سند اِنِ : نہیں الْحُكْمُ : حکم اِلَّا : مگر لِلّٰهِ : اللہ کا اَمَرَ : اس نے حکم دیا اَلَّا : کہ نہ تَعْبُدُوْٓا : عبادت کرو تم اِلَّآ : مگر اِيَّاهُ : صرف اس کی ذٰلِكَ : یہ الدِّيْنُ الْقَيِّمُ : سیدھا دین وَلٰكِنَّ : اور لیکن اَكْثَرَ النَّاسِ : اکثر لوگ لَا يَعْلَمُوْنَ : نہیں جانتے

    تم لوگ اللہ کے سوا جن لوگوں کی عبادت کرتے ہو وہ بس چند نام ہیں جو تم نے اور تمہارے باپ دادوں نے تجویز کر لئے ہیں اللہ تعالیٰ نے ان کی کوئی سند نازل نہیں فرمائی۔ حکم بس اللہ ہی کا ہے۔ اس نے حکم دیا ہے کہ اس کے سوا کسی کی عبادت نہ کرو یہ سیدھا راستہ ہے اور لیکن اکثر لوگ نہیں جانتے۔۴۰


  13. #1723
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,168
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    حضرت یوسف (علیہ السلام) کا دونوں قیدیوں کے خواب کی تعبیر دینا
    يٰصَاحِبَيِ السِّجْنِ اَمَّآ اَحَدُكُمَا فَيَسْقِيْ رَبَّهٗ خَمْرًا ۚ وَاَمَّا الْاٰخَرُ فَيُصْلَبُ فَتَاْكُلُ الطَّيْرُ مِنْ رَّاْسِهٖ ۭ قُضِيَ الْاَمْرُ الَّذِيْ فِيْهِ تَسْتَفْتِيٰنِ

    يٰصَاحِبَيِ
    : اے میرے ساتھیو ! السِّجْنِ : قید خانہ اَمَّآ : جو اَحَدُكُمَا : تم میں سے ایک فَيَسْقِيْ : سو وہ پلائے گا رَبَّهٗ : اپنا مالک خَمْرًا : شراب وَاَمَّا : اور جو الْاٰخَرُ : دوسرا فَيُصْلَبُ : تو سولی دیا جائے گا فَتَاْكُلُ : پس کھائیں گے الطَّيْرُ : پرندے مِنْ رَّاْسِهٖ : اس کے سر سے قُضِيَ : فیصلہ ہوچکا الْاَمْرُ : کام۔ بات الَّذِيْ : وہ جو فِيْهِ : اس میں تَسْتَفْتِيٰنِ : تم پوچھتے تھے

    اے میرے جیل کے دونوں ساتھیو ! تم میں سے ایک تو اپنے آقا کو شراب پلائے گا اور دوسرے کو سولی پر چڑھایا جائے گا اور اس کے سر میں سے پرندے کھائیں گے جس بات کے بارے میں تم معلوم کر رہے تھے اس کا فیصلہ ہوچکا ہے۔۴۱


  14. #1724
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,168
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    بادشاہ وقت کو یاد دہانی کی تاکید
    وَقَالَ لِلَّذِيْ ظَنَّ اَنَّهٗ نَاجٍ مِّنْهُمَا اذْكُرْنِيْ عِنْدَ رَبِّكَ ۡ فَاَنْسٰىهُ الشَّيْطٰنُ ذِكْرَ رَبِّهٖ فَلَبِثَ فِي السِّجْنِ بِضْعَ سِنِيْنَ ۧ

    وَقَالَ
    : اور کہا لِلَّذِيْ : اس سے جس ظَنَّ : اس نے گمان کیا اَنَّهٗ : کہ بیشک وہ نَاجٍ : بچے گا وہ مِّنْهُمَا : ان دونوں سے اذْكُرْنِيْ : میرا ذکر کرنا عِنْدَ : پاس رَبِّكَ : اپنا مالک فَاَنْسٰىهُ : پس اس کو بھلا دیا الشَّيْطٰنُ : شیطان ذِكْرَ رَبِّهٖ : اپنے مالک سے ذکر کرنا فَلَبِثَ : تو رہا فِي السِّجْنِ : قید میں بِضْعَ سِنِيْنَ : چند برس

    اور ان دونوں میں سے اس شخص سے جس کے بارے میں یوسف نے یہ گمان کیا تھا کہ وہ رہا ہوجائے گا،اس سے کہا کہ تو اپنے آقا کے سامنے میرا تذکرہ کردینا پھر اس شخص کو شیطان نے اپنے آقا سے تذکرہ کرنا بھلا دیا سو یوسف جیل میں چند سال رہے۔۴۲


Tags for this Thread

Bookmarks

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •