Thanks Thanks:  1,437
Likes Likes:  420
Page 116 of 116 FirstFirst ... 1666106114115116
Results 1,726 to 1,736 of 1736

Thread: قرآن فہمی، آئیے مل کر پڑھیں ترجمہ قرآن

  1. #1726
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,180
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    خواب کی تعبیر کا معاملہ اور پریشانی
    قَالُوْٓا اَضْغَاثُ اَحْلَامٍ ۚ وَمَا نَحْنُ بِتَاْوِيْلِ الْاَحْلَامِ بِعٰلِمِيْنَ

    قَالُوْٓا
    : انہوں نے کہا اَضْغَاثُ : پریشان اَحْلَامٍ : خواب وَمَا : اور نہیں نَحْنُ : ہم بِتَاْوِيْلِ : تعبیر دینا الْاَحْلَامِ : خواب (جمع) بِعٰلِمِيْنَ : جاننے والے

    انہوں نے کہ یہ توپریشان کن خواب ہیں۔ اور ہم خوابوں کی تعبیر دینا نہیں جانتے۔۴۴


  2. #1727
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,180
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    رہا شدہ قیدی
    وَقَالَ الَّذِيْ نَجَا مِنْهُمَا وَادَّكَرَ بَعْدَ اُمَّةٍ اَنَا اُنَبِّئُكُمْ بِتَاْوِيْـلِهٖ فَاَرْسِلُوْنِ

    وَقَالَ
    : اور اس نے کہا الَّذِيْ : وہ جو نَجَا : بچا مِنْهُمَا : ان دو سے وَادَّكَرَ : اور اسے یاد آیا بَعْدَ : بعد اُمَّةٍ : ایک مدت اَنَا اُنَبِّئُكُمْ : میں بتلاؤں گا تمہیں بِتَاْوِيْـلِهٖ : اس کی تعبیر فَاَرْسِلُوْنِ : سو مجھے بھیج دو

    اور ان دو قیدیوں میں سے جو رہا ہوگیا تھا، اور اسے ایک لمبے عرصے کے بعد ( یوسف کی) بات یاد آئی تھی، اس نے کہا کہ : میں آپ کو اس خواب کی تعبیر بتائے دیتا ہوں، بس مجھے ( یوسف کے پاس قید خانے میں) بھیج دو۔۴۵


  3. #1728
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,180
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    یوسف سراپاصدق
    يُوْسُفُ اَيُّهَا الصِّدِّيْقُ اَفْتِنَا فِيْ سَبْعِ بَقَرٰتٍ سِمَانٍ يَّاْكُلُهُنَّ سَبْعٌ عِجَافٌ وَّسَبْعِ سُنْۢبُلٰتٍ خُضْرٍ وَّاُخَرَ يٰبِسٰتٍ ۙ لَّعَلِّيْٓ اَرْجِعُ اِلَى النَّاسِ لَعَلَّهُمْ يَعْلَمُوْنَ

    يُوْسُفُ
    : اے یوسف اَيُّهَا الصِّدِّيْقُ : اے بڑے سچے اَفْتِنَا : ہمیں بتا فِيْ : میں سَبْعِ : سات بَقَرٰتٍ : گائیں سِمَانٍ : موٹی تازی يَّاْكُلُهُنَّ : وہ کھا رہی ہیں سَبْعٌ : سات عِجَافٌ : دبلی پتلی وَّسَبْعِ : اور سات سُنْۢبُلٰتٍ : خوشے خُضْرٍ : سبز وَّاُخَرَ : اور دوسرے يٰبِسٰتٍ : خشک لَّعَلِّيْٓ : تاکہ میں اَرْجِعُ : میں لوٹوں اِلَى النَّاسِ : لوگوں کی طرف (پاس) لَعَلَّهُمْ : شاید وہ يَعْلَمُوْنَ : آگاہ ہوں

    اے یوسف اے سچے تم ہمیں اس (خواب) کا مطلب بتاؤ کہ سات موٹی تازی گائیں ہیں جنہیں سات دبلی پتلی گائیں کھا رہی ہیں، اور سات خوشے ہرے بھرے ہیں، اور دوسرے سات اور ہیں جو سوکھے ہوئے ہیں، شاید میں لوگوں کے پاس واپس جاؤں (اور انہیں خواب کی تعبیر بتاؤں) تاکہ وہ بھی جان لیں۔۴۶


  4. #1729
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,180
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    سات سال
    قَالَ تَزْرَعُوْنَ سَبْعَ سِنِيْنَ دَاَبًا ۚ فَمَا حَصَدْتُّمْ فَذَرُوْهُ فِيْ سُنْۢبُلِهٖٓ اِلَّا قَلِيْلًا مِّمَّا تَاْكُلُوْنَ

    قَالَ
    : اس نے کہا تَزْرَعُوْنَ : کھیتی باڑی کروگے سَبْعَ : سات سِنِيْنَ : سال دَاَبًا : لگاتار فَمَا : پھر جو حَصَدْتُّمْ : تم کاٹو فَذَرُوْهُ : تو اسے چھوڑ دو فِيْ سُنْۢبُلِهٖٓ : اس کے خوشہ میں اِلَّا : مگر قَلِيْلًا : تھوڑا جتنا مِّمَّا : سے۔ جو تَاْكُلُوْنَ : تم کھالو

    یوسف نے کہا تم لوگ لگا تار سات برس تک کھیتی باڑی کرتے رہو گے، اور اس دوران جو فصل تم کاٹو اس کو اس کی بالوں ہی سے رہنے دینا، سوائے اس تھوڑے سے حصہ کے، جو تم کو کھانے کے لئے درکار ہو۔۴۷

  5. #1730
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,180
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    سات سال گزرنے کے بعد قحط کے سات سال
    ثُمَّ يَاْتِيْ مِنْۢ بَعْدِ ذٰلِكَ سَبْعٌ شِدَادٌ يَّاْكُلْنَ مَا قَدَّمْتُمْ لَهُنَّ اِلَّا قَلِيْلًا مِّمَّا تُحْصِنُوْنَ

    ثُمَّ
    : پھر يَاْتِيْ : آئیں گے مِنْۢ بَعْدِ ذٰلِكَ : اس کے بعد میں سَبْعٌ : سات شِدَادٌ : سخت يَّاْكُلْنَ : کھا جائیں گے وہ مَا : جو قَدَّمْتُمْ : تم نے رکھا لَهُنَّ : ان کے لیے اِلَّا : سوائے قَلِيْلًا : تھوڑا سا مِّمَّا : سے۔ جو تُحْصِنُوْنَ : تم بچاؤ گے

    پھر اس کے بعد سات برس ایسے سختی (اور قحط) کے آئیں گے، جو کھا جائیں گے اس سب غلے کو جو کہ تم نے ان کے لئے جمع کر رکھا ہوگا، سوائے اس تھوڑے سے حصے کہ، جو کہ تم لوگوں نے محفوظ کر رکھا ہوگا۔۴۸


  6. #1731
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,180
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    قحط سالی کے بعد خوشحالی کا سال
    ثُمَّ يَاْتِيْ مِنْۢ بَعْدِ ذٰلِكَ عَامٌ فِيْهِ يُغَاثُ النَّاسُ وَفِيْهِ يَعْصِرُوْنَ ۧ

    ثُمَّ
    : پھر يَاْتِيْ : آئے گا مِنْۢ بَعْدِ ذٰلِكَ : اس کے بعد عَامٌ : ایک سال فِيْهِ : اس میں يُغَاثُ : بارش برسائی جائیگی النَّاسُ : لوگ وَفِيْهِ : اور اس میں يَعْصِرُوْنَ : وہ نچوڑیں گے

    پھر اس کے بعد ایک ایسا سال آئے گا جس میں لوگوں کے لئے خوب بارش ہوگی اور اس میں رس نچوڑیں گے۔۴۹

  7. #1732
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,180
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    تعبیر کی صداقت اوربادشاہ کا حضرت یوسف (علیہ السلام) کو طلب کرنا
    وَقَالَ الْمَلِكُ ائْتُوْنِيْ بِهٖ ۚ فَلَمَّا جَاۗءَهُ الرَّسُوْلُ قَالَ ارْجِعْ اِلٰي رَبِّكَ فَسْـــَٔـلْهُ مَا بَالُ النِّسْوَةِ الّٰتِيْ قَطَّعْنَ اَيْدِيَهُنَّ ۭ اِنَّ رَبِّيْ بِكَيْدِهِنَّ عَلِيْمٌ

    وَقَالَ
    : اور کہا الْمَلِكُ : بادشاہ ائْتُوْنِيْ : میرے پاس لے آؤ بِهٖ : ساتھ اس کے فَلَمَّا : پس جب جَاۗءَهُ : اس کے پاس آیا الرَّسُوْلُ : قاصد قَالَ : اس نے کہا ارْجِعْ : لوٹ جا اِلٰي : طرف (پاس) رَبِّكَ : اپنا مالک فَسْـــَٔـلْهُ : پس اس سے پوچھو مَا بَالُ : کیا حال ؟ النِّسْوَةِ : عورتیں الّٰتِيْ : وہ جو قَطَّعْنَ : انہوں نے کاٹے اَيْدِيَهُنَّ : اپنے ہاتھ اِنَّ : بیشک رَبِّيْ : میرا رب بِكَيْدِهِنَّ : ان کا فریب عَلِيْمٌ : واقف

    اور بادشاہ نے کہا کہ : اس (یوسف) کومیرے پاس لے کر آؤ۔ چناچہ جب ان کے پاس قاصد پہنچا تو یوسف نے کہا : اپنے مالک کے پاس واپس جاؤ، اور ان سے پوچھو کہ ان عورتوں کا کیا قصہ ہے جنہوں نے اپنے ہاتھ کاٹ ڈا لے تھے ؟ میرا رب ان عورتوں کے مکر سے خوب واقف ہے۔۵۰

  8. #1733
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,180
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    حضرت یوسف (علیہ السلام) کی بےگناہی کا ثبوت
    قَالَ مَا خَطْبُكُنَّ اِذْ رَاوَدْتُّنَّ يُوْسُفَ عَنْ نَّفْسِهٖ ۭ قُلْنَ حَاشَ لِلّٰهِ مَا عَلِمْنَا عَلَيْهِ مِنْ سُوْۗءٍ ۭ قَالَتِ امْرَاَتُ الْعَزِيْزِ الْــٰٔنَ حَصْحَصَ الْحَقُّ ۡ اَنَا رَاوَدْتُّهٗ عَنْ نَّفْسِهٖ وَاِنَّهٗ لَمِنَ الصّٰدِقِيْنَ

    قَالَ
    : اس نے کہا مَا خَطْبُكُنَّ : کیا حال تھا تمہارا اِذْ : جب رَاوَدْتُّنَّ : تم نے پھسلایا يُوْسُفَ : یوسف عَنْ : سے نَّفْسِهٖ : اس کا نفس قُلْنَ : وہ بولیں حَاشَ : پناہ لِلّٰهِ : اللہ کی مَا : نہیں عَلِمْنَا : ہم نے معلوم کی عَلَيْهِ : اس پر (میں) مِنْ سُوْۗءٍ : کوئی برائی قَالَتِ : بولی امْرَاَتُ : عورت الْعَزِيْزِ : عزیز الْــٰٔنَ : اب حَصْحَصَ : ظاہر ہوگئی الْحَقُّ : حقیقت اَنَا : میں رَاوَدْتُّهٗ : اسے پھسلایا میں نے عَنْ : سے نَّفْسِهٖ : اس کا نفس وَاِنَّهٗ : اور وہ بیشک لَمِنَ : البتہ۔ سے الصّٰدِقِيْنَ : سچے

    بادشاہ نے عورتوں سے پوچھا کہ بھلا اس وقت کیا ہوا تھا جب تم نے یوسف کو اپنی طرف مائل کرنا چاہا۔ سب بول اٹھیں کہ حاش َللهِ ہم نے اس میں کوئی برائی معلوم نہیں کی۔ عزیز کی عورت نے کہا اب حقیقت تو ظاہر ہو ہی گئی ہے۔ میں نے اس کو اپنی طرف مائل کرنا چاہا تھا اور بےشک وہ سچا ہے۔۵۱


  9. #1734
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,180
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    خیانت کاری چلنے والی چیز نہیں
    ذٰلِكَ لِيَعْلَمَ اَنِّىْ لَمْ اَخُنْهُ بِالْغَيْبِ وَاَنَّ اللّٰهَ لَايَهْدِيْ كَيْدَ الْخَاۗىِٕنِيْنَ

    ذٰلِكَ
    : یہ لِيَعْلَمَ : تاکہ وہ جان لے اَنِّىْ : بیشک میں لَمْ اَخُنْهُ : نہیں اس کی خیانت کی بِالْغَيْبِ : پیٹھ پیچھے وَاَنَّ اللّٰهَ : اور بیشک اللہ لَايَهْدِيْ : نہیں چلنے دیتا كَيْدَ : فریب الْخَاۗىِٕنِيْنَ : دغا باز (جمع)

    یہ اس لئے کیا تاکہ وہ (عزیز) جان لے کہ میں نے اس سے کوئی خیانت نہیں کی اس کی غیر موجودگی میں، اور تاکہ (واضح ہوجائے یہ حقیقت کہ) اللہ چلنے نہیں دیتا خیانت کرنے والوں کی فریب کاریوں کو۔۵۲

  10. #1735
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,180
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    الحمدللہ قرآن پاک کا بارہواں سپارہ مکمل ھوا۔ انشاءاللہ اب تیرہواںسپارہ شروع کرتے ہیں۔




  11. #1736
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,180
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَآ اُبَرِّئُ ۔ سورت یوسف

    پیغمبر کی شان عبدیت
    وَمَآ اُبَرِّئُ نَفْسِيْ ۚ اِنَّ النَّفْسَ لَاَمَّارَةٌۢ بِالسُّوْۗءِ اِلَّا مَارَحِمَ رَبِّيْ ۭ اِنَّ رَبِّيْ غَفُوْرٌ رَّحِيْمٌ

    وَ
    : اور مَآ اُبَرِّئُ : پاک، بےقصور نہیں کہتا نَفْسِيْ : اپنا نفس اِنَّ : بیشک النَّفْسَ : نفس لَاَمَّارَةٌ : سکھانے والا بِالسُّوْۗءِ : برائی اِلَّا : مگر مَارَحِمَ : جس پر رحم کیا رَبِّيْ : میرا رب اِنَّ : بیشک رَبِّيْ : میرا رب غَفُوْرٌ : بخشنے والا رَّحِيْمٌ : نہایت مہربان

    اور میں یہ دعوی نہیں کرتا کہ میرا نفس بالکل پاک صاف ہے، بےشک کہ نفس تو برائی سکھاتاہے، ہاں جس پر رحم فرمادے میرا رب( کہ اس صورت میں نفس کا کوئی داؤ نہیں چلتا) بیشک میرا رب بہت بخشنے والا، بڑا مہربان ہے۔۵۳


Tags for this Thread

Bookmarks

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •