Thanks Thanks:  1,428
Likes Likes:  420
Page 114 of 116 FirstFirst ... 1464104112113114115116 LastLast
Results 1,696 to 1,710 of 1727

Thread: قرآن فہمی، آئیے مل کر پڑھیں ترجمہ قرآن

  1. #1696
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,171
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    برادران یوسف کی حضرت یعقوب کو یقین دہانی
    قَالُوْا لَىِٕنْ اَكَلَهُ الذِّئْبُ وَنَحْنُ عُصْبَةٌ اِنَّآ اِذًا لَّخٰسِرُوْنَ

    قَالُوْا
    : وہ بولے لَىِٕنْ : اگر اَكَلَهُ : اسے کھاجائے الذِّئْبُ : بھیڑیا وَنَحْنُ : اور ہم عُصْبَةٌ : ایک جماعت اِنَّآ : بیشک ہم اِذًا : اس صورت میں لَّخٰسِرُوْنَ : زیاں کار

    کہنے لگے کہ اگر اس کو بھیڑیا کھاجائے اور ہماری پوری جماعت ہےتو ہم تو بالکل ہی (خسارہ میں پڑنے والے )گئے گزرے ہوئے۔۱۴


  2. #1697
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,171
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    حضرت یوسف (علیہ السلام) کی طرف وحی
    فَلَمَّا ذَهَبُوْا بِهٖ وَاَجْمَعُوْٓا اَنْ يَّجْعَلُوْهُ فِيْ غَيٰبَتِ الْجُبِّ ۚ وَاَوْحَيْنَآ اِلَيْهِ لَتُنَبِّئَنَّهُمْ بِاَمْرِهِمْ ھٰذَا وَهُمْ لَا يَشْعُرُوْنَ

    فَلَمَّا
    : پھر جب ذَهَبُوْا : وہ لے گئے بِهٖ : اس کو وَاَجْمَعُوْٓا : اور انہوں نے اتفاق کرلیا اَنْ : کہ يَّجْعَلُوْهُ : اسے ڈال دیں فِيْ : میں غَيٰبَتِ : اندھا الْجُبِّ : کنواں وَاَوْحَيْنَآ : اور ہم نے وحی بھیجی اِلَيْهِ : اس کی طرف لَتُنَبِّئَنَّهُمْ : کہ تو انہیں ضرور جتائے گا بِاَمْرِهِمْ : ان کا کام ھٰذَا : اس وَهُمْ : اور وہ لَا يَشْعُرُوْنَ : نہ جانتے ہوں گے

    پھر جب یہ لوگ یوسف کو ساتھ لے گئے اور اس پر اتفاق کرلیا کہ اس کو کسی اندھے کنوئیں میں ڈال دیں تو ہم نے یوسف (علیہ السلام) پر وحی بھیجی کہ( ایک دن آنے والا ہے) جب ان کا یہ معاملہ تو انہیں جتائے گا اور وہ نہیں جانتے ہوں گے۔۱۵


  3. #1698
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,171
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    بھائیوں کی واپسی اور معذرت
    وَجَاۗءُوْٓا اَبَاهُمْ عِشَاۗءً يَّبْكُوْنَ


    وَجَاۗءُوْٓا
    : اور وہ آئے اَبَاهُمْ : اپنے باپ کے پاس عِشَاۗءً : اندھیرا پڑے يَّبْكُوْنَ : روتے ہوئے

    اور وہ لوگ شام کے وقت روتے ہوئے اپنے باپ کے پاس آئے۔۱۶

  4. #1699
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,171
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    بھائیوں کی بہانہ بازی
    قَالُوْا يٰٓاَبَانَآ اِنَّا ذَهَبْنَا نَسْتَبِقُ وَتَرَكْنَا يُوْسُفَ عِنْدَ مَتَاعِنَا فَاَكَلَهُ الذِّئْبُ ۚ وَمَآ اَنْتَ بِمُؤْمِنٍ لَّنَا وَلَوْ كُنَّا صٰدِقِيْنَ

    قَالُوْا
    : وہ بولے يٰٓاَبَانَآ : اے ابا جان اِنَّا : ہم ذَهَبْنَا : دوڑنے گئے نَسْتَبِقُ : آگے نکلنے وَتَرَكْنَا : اور ہم نے چھوڑ دیا يُوْسُفَ : یوسف عِنْدَ : پاس مَتَاعِنَا : اپنا اسباب فَاَكَلَهُ : تو اسے کھا گیا الذِّئْبُ : بھیڑیا وَمَآ : اور نہیں اَنْتَ : تو بِمُؤْمِنٍ : باور کرنے والا لَّنَا : ہم پر وَلَوْ كُنَّا : اور خواہ ہوں ہم صٰدِقِيْنَ : سچے

    اُنہوں نے کہا اے ہمارے ابا جان! ہم ایک دوسرے سے آگے نکل جانے کے لیے دوڑ میں لگ گئے اور یوسف (علیہ السلام) کو اپنے سامان کے پاس چھوڑ دیا تھا سو اسے بھیڑیا کھا گیا اور ہم جانتے ہیں کہ آپ ہماری بات کا یقین کرنے والے نہیں اگرچہ ہم کتنے ہی سچے ہوں۔۱۷


  5. #1700
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,171
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    یوسف کے پیراہن پر جھوٹ موٹ کا خون
    وَجَاۗءُوْ عَلٰي قَمِيْصِهٖ بِدَمٍ كَذِبٍ ۭ قَالَ بَلْ سَوَّلَتْ لَكُمْ اَنْفُسُكُمْ اَمْرًا ۭ فَصَبْرٌ جَمِيْلٌ ۭ وَاللّٰهُ الْمُسْتَعَانُ عَلٰي مَا تَصِفُوْنَ

    وَجَاۗءُوْ
    : اور وہ آئے (لائے) عَلٰي : پر قَمِيْصِهٖ : اس کی قمیص بِدَمٍ : خون کے ساتھ كَذِبٍ : جھوٹا قَالَ : اس نے کہا بَلْ : بلکہ سَوَّلَتْ : بنا لی لَكُمْ : تمہارے لیے اَنْفُسُكُمْ : تمہارے دل اَمْرًا : ایک کام فَصَبْرٌ : پس صبر جَمِيْلٌ : اچھا وَاللّٰهُ : اور اللہ الْمُسْتَعَانُ : مدد چاہتا ہوں عَلٰي : پر مَا تَصِفُوْنَ : جو تم بیان کرتے ہو

    اور وہ اس (یوسف) کی قمیض پر جھوٹ موٹ کا خون بھی لگا کرلے آئے یہ سن کر یعقوب نے فرمایا (قصہ یہ نہیں) بلکہ اصل بات یہ ہے کہ تمہارے نفسوں نے تمہارے لئے ایک بات بنا لی ہے پس میں صبر جمیل ہی سے کام لوں گا، اور ان باتوں پر اللہ ہی سے مدد مانگتا ہوں، جو تم بنا رہے ہو۔۱۸


  6. #1701
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,171
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    کنویں سے بازار مصر تک
    وَجَاۗءَتْ سَيَّارَةٌ فَاَرْسَلُوْا وَارِدَهُمْ فَاَدْلٰى دَلْوَهٗ ۭ قَالَ يٰبُشْرٰي ھٰذَا غُلٰمٌ ۭ وَاَسَرُّوْهُ بِضَاعَةً ۭ وَاللّٰهُ عَلِيْمٌۢ بِمَا يَعْمَلُوْنَ

    وَجَاۗءَتْ
    : اور آیا سَيَّارَةٌ : ایک قافلہ فَاَرْسَلُوْا : پس انہوں نے بھیجا وَارِدَهُمْ : اپنا پانی بھرنے والا فَاَدْلٰى : پس اس نے ڈالا دَلْوَهٗ : اپنا ڈول قَالَ : اس نے کہا يٰبُشْرٰي : آہا۔ خوشی کی بات ھٰذَا : یہ غُلٰمٌ : ایک لڑکا وَاَسَرُّوْهُ : اور اسے چھپالیا بِضَاعَةً : مال تجارت سمجھ کر وَاللّٰهُ : اور اللہ عَلِيْمٌ : جاننے والا بِمَا : اسے جو يَعْمَلُوْنَ : وہ کرتے تھے

    اور ایک قافلہ آگیا انہوں نے اپنے آدمی پانی لانے والے کو بھیجا اس نے اپنا ڈول ڈالا وہ کہنے لگا کیا ہی خوشی کی بات ہے کہ یہ ایک لڑکا ہے۔ اور انہوں نے اسے سامان تجارت بنا کر چھپالیا اور اللہ خوب جاننے والا ہے جو کچھ وہ کرتے ہیں۔۱۹

  7. #1702
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,171
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    حضرت یوسف (علیہ السلام) کی فروخت ایک حقیر مول کے عوض
    وَشَرَوْهُ بِثَمَنٍۢ بَخْسٍ دَرَاهِمَ مَعْدُوْدَةٍ ۚ وَكَانُوْا فِيْهِ مِنَ الزَّاهِدِيْنَ ۧ


    وَشَرَوْهُ
    : اور انہوں نے اسے بیچ دیا بِثَمَنٍ : دام بَخْسٍ : کھوٹے دَرَاهِمَ : درہم مَعْدُوْدَةٍ : گنتی کے وَكَانُوْا : اور وہ تھے فِيْهِ : اس میں مِنَ : سے الزَّاهِدِيْنَ : بےرغبت، بےزار

    اور پھر انہوں نے یوسف (علیہ السلام) کو بہت کم داموں پر کہ گنتی کے چند درہم تھے فروخت کردیااور یہ لوگ اس سے بےرغبت تھے۔۲۰


  8. #1703
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,171
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    بازار مصر سے شاہی محل تک
    وَقَالَ الَّذِي اشْتَرٰىهُ مِنْ مِّصْرَ لِامْرَاَتِهٖٓ اَكْرِمِيْ مَثْوٰىهُ عَسٰٓى اَنْ يَّنْفَعَنَآ اَوْ نَتَّخِذَهٗ وَلَدًا ۭ وَكَذٰلِكَ مَكَّنَّا لِيُوْسُفَ فِي الْاَرْضِ ۡ وَلِنُعَلِّمَهٗ مِنْ تَاْوِيْلِ الْاَحَادِيْثِ ۭ وَاللّٰهُ غَالِبٌ عَلٰٓي اَمْرِهٖ وَلٰكِنَّ اَكْثَرَ النَّاسِ لَا يَعْلَمُوْنَ

    وَقَالَ
    : اور بولا الَّذِي : وہ جو، جس اشْتَرٰىهُ : اسے خریدا مِنْ : سے مِّصْرَ : مصر لِامْرَاَتِهٖٓ : اپنی عورت کو اَكْرِمِيْ مَثْوٰىهُ : اسے عزت و اکرام سے رکھ عَسٰٓى : شاید اَنْ : کہ يَّنْفَعَنَآ : ہم کو نفع پہنچائے اَوْ : یا نَتَّخِذَهٗ : ہم اسے بنالیں وَلَدًا : بیٹا وَكَذٰلِكَ : اور اس طرح مَكَّنَّا : ہم نے جگہ دی لِيُوْسُفَ : یوسف کو فِي : میں الْاَرْضِ : زمین (ملک) وَلِنُعَلِّمَهٗ : اور تاکہ ہم اسے سکھائیں مِنْ : سے تَاْوِيْلِ : انجام نکالنا الْاَحَادِيْثِ : باتیں وَاللّٰهُ : اور اللہ غَالِبٌ : غالب عَلٰٓي اَمْرِهٖ : اپنے کام پر وَلٰكِنَّ : اور لیکن اَكْثَرَ : اکثر النَّاسِ : لوگ لَا يَعْلَمُوْنَ : نہیں جانتے

    اور مصر میں جس شخص نے اس کو خریدا اس نے اپنی بیوی سے کہا کہ اس کو عزت واکرام سے رکھو عجب نہیں کہ یہ ہمیں فائدہ دے یا ہم اسے بیٹا بنالیں۔ اس طرح ہم نے یوسف کو سرزمین (مصر) میں جگہ دی اور غرض یہ تھی کہ ہم ان کو (خواب کی) باتوں کی تعبیر سکھائیں اور اللہ اپنے کام پر غالب ہے لیکن اکثر لوگ نہیں جانتے۔۲۱


  9. #1704
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,171
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    بدلہ دیتے ہیں ہم نیکی کرنے والوں کو
    وَلَمَّا بَلَغَ اَشُدَّهٗٓ اٰتَيْنٰهُ حُكْمًا وَّعِلْمًا ۭ وَكَذٰلِكَ نَجْزِي الْمُحْسِنِيْنَ

    وَلَمَّا
    : اور جب بَلَغَ : پہنچ گیا اَشُدَّهٗٓ : اپنی قوت اٰتَيْنٰهُ : ہم نے اسے عطا کیا حُكْمًا : حکم وَّعِلْمًا : اور علم وَكَذٰلِكَ : اور اسی طرح نَجْزِي : ہم جزا دیتے ہیں الْمُحْسِنِيْنَ : نیکی کرنے والے

    اور جب وہ اپنی جوانی کو پہنچا تو ہم نے اسے حکمت اور علم عطا کیااور ایسا ہی بدلہ دیتے ہیں ہم نیکی کرنے والوں کو۔۲۲


  10. #1705
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,171
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    حضرت یوسف (علیہ السلام) کی عظمت کردار
    وَرَاوَدَتْهُ الَّتِيْ هُوَ فِيْ بَيْتِهَا عَنْ نَّفْسِهٖ وَغَلَّقَتِ الْاَبْوَابَ وَقَالَتْ هَيْتَ لَكَ ۭ قَالَ مَعَاذَ اللّٰهِ اِنَّهٗ رَبِّيْٓ اَحْسَنَ مَثْوَايَ ۭ اِنَّهٗ لَا يُفْلِحُ الظّٰلِمُوْنَ

    وَرَاوَدَتْهُ
    : اور اسے پھسلایا الَّتِيْ : وہ عورت جو هُوَ : اس فِيْ : میں بَيْتِهَا : اس کا گھر عَنْ نَّفْسِهٖ : اپنے آپ کو روکنے سے وَغَلَّقَتِ : اور بند کردئیے الْاَبْوَابَ : دروازے وَقَالَتْ : اور بولی هَيْتَ لَكَ : آ جا جلدی کر قَالَ : اس نے کہا مَعَاذَ اللّٰهِ : اللہ کی پناہ اِنَّهٗ : بیشک وہ رَبِّيْٓ : میرا مالک اَحْسَنَ : بہت اچھا مَثْوَايَ : اور رہنا سہنا اِنَّهٗ : بیشک لَا يُفْلِحُ : بھلائی نہیں پاتے الظّٰلِمُوْنَ : ظالم (جمع)

    اور وہ جس عورت کے گھر میں تھے اس نے اپنا مطلب حاصل کرنے کیلئے ان کو پھسلایا اور دروازے بند کر دئیے اور کہنے لگی آجاؤ انہوں نے کہا کہ میں اللہ کی پناہ مانگتا ہوں بیشک وہ (تیرا شوہر) میرا مالک ہے اس نے مجھےاچھا ٹھکانہ دیا ہے۔ بیشک فلاح نہیں پاسکتے ظالم۔۲۳

  11. #1706
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,171
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    یوسف (علیہ السلام) کے تقدس کا سبب
    وَلَقَدْ هَمَّتْ بِهٖ ۚ وَهَمَّ بِهَا لَوْلَآ اَنْ رَّاٰ بُرْهَانَ رَبِّهٖ ۭ كَذٰلِكَ لِنَصْرِفَ عَنْهُ السُّوْۗءَ وَالْفَحْشَاۗءَ ۭ اِنَّهٗ مِنْ عِبَادِنَا الْمُخْلَصِيْنَ

    وَلَقَدْ هَمَّتْ
    : اور بیشک اس عورت نے ارادہ کیا بِهٖ : اس کا وَهَمَّ : اور وہ ارادہ کرتے بِهَا : اس کا لَوْلَآ : اگر نہ ہوتا اَنْ : کہ رَّاٰ : وہ دیکھے بُرْهَانَ : دلیل رَبِّهٖ : اپنا رب كَذٰلِكَ : اسی طرح لِنَصْرِفَ : ہم نے پھیر دیا عَنْهُ : اس سے السُّوْۗءَ : برائی وَالْفَحْشَاۗءَ : اور بےحیائی اِنَّهٗ : بیشک وہ مِنْ : سے عِبَادِنَا : ہمارے بندے الْمُخْلَصِيْنَ : برگزیدہ

    اور اس عورت نے ان کا قصد کیا اور انہوں نے اس کا قصد کیا۔ اگر وہ اپنے پروردگار کی نشانی نہ دیکھ لیتے اسی طرح (کیا ہم نے) تاکہ ہم اس سے پھیر دیں برائی اور بےحیائی (کی آلائشوں) کو۔ بےشک وہ ہمارے خالص بندوں میں سے تھے۔۲۴

  12. #1707
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,171
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    پھاڑ ڈالا کرتہ
    وَاسْتَبَقَا الْبَابَ وَقَدَّتْ قَمِيْصَهٗ مِنْ دُبُرٍ وَّاَلْفَيَا سَيِّدَهَا لَدَا الْبَابِ ۭ قَالَتْ مَا جَزَاۗءُ مَنْ اَرَادَ بِاَهْلِكَ سُوْۗءًا اِلَّآ اَنْ يُّسْجَنَ اَوْ عَذَابٌ اَلِيْمٌ


    وَاسْتَبَقَا
    : اور دونوں دوڑے الْبَابَ : دروازہ وَقَدَّتْ : اور عورت نے پھاڑ دی قَمِيْصَهٗ : اس کی قمیص مِنْ دُبُرٍ : پیچھے سے وَّاَلْفَيَا : اور دونوں کو ملا سَيِّدَهَا : عورت کا خاوند لَدَا الْبَابِ : دروازہ کے پاس قَالَتْ : وہ کہنے لگی مَا جَزَاۗءُ : کیا سزا مَنْ : جو۔ جس اَرَادَ : ارادہ کیا بِاَهْلِكَ : تیری بیوی سے سُوْۗءًا : برائی اِلَّآ : سوائے اَنْ : یہ کہ يُّسْجَنَ : قید کیا جائے اَوْ : یا عَذَابٌ اَلِيْمٌ : دردناک عذاب

    اور دونوں دروازے کی طرف دوڑے(آگے یوسف اور پیچھے زلیخا) اور عورت نے ان کا کرتا پیچھے سے (پکڑ کر جو کھینچا تو) پھاڑ ڈالا اور دونوں کو دروازے کے پاس عورت کا خاوند مل گیا تو عورت بولی کہ جو شخص تمہاری بیوی کے ساتھ برا ئی کا ارادہ کرے اس کی اس کے سوا کیا سزا ہے کہ یا تو قید کیا جائے یا دردناک عذاب دیا جائے۔۲۵


  13. #1708
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,171
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    ایک معقول گواہی
    قَالَ هِىَ رَاوَدَتْنِيْ عَنْ نَّفْسِيْ وَشَهِدَ شَاهِدٌ مِّنْ اَهْلِهَا ۚ اِنْ كَانَ قَمِيْصُهٗ قُدَّ مِنْ قُبُلٍ فَصَدَقَتْ وَهُوَ مِنَ الْكٰذِبِيْنَ

    قَالَ
    : اس نے کہا هِىَ : اس رَاوَدَتْنِيْ : مجھے پھسلایا عَنْ : سے نَّفْسِيْ : میرا نفس وَشَهِدَ : اور گواہی دی شَاهِدٌ : ایک گواہ مِّنْ : سے اَهْلِهَا : اس کے لوگ اِنْ : اگر كَانَ : ہے قَمِيْصُهٗ : اس کی قمیص قُدَّ : پھٹی ہوئی مِنْ قُبُلٍ : آگے سے فَصَدَقَتْ : تو وہ سچی وَهُوَ : اور وہ مِنَ : سے الْكٰذِبِيْنَ : جھوٹے

    یوسف نے کہا اسی نے مجھ کو اپنی طرف مائل کرنا چاہا تھا۔ اوراس عورت کے کنبہ والوں میں سے ایک گواہ نے گواہی دی کہ اگر ہے اس (یوسف)کا کرتہ پھٹا آگے سے تو عورت سچی ہے اور وہ(یوسف) ہے جھوٹوں میں سے۔۲۶


  14. #1709
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,171
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    یوسف (علیہ السلام) سچا ہے
    وَاِنْ كَانَ قَمِيْصُهٗ قُدَّ مِنْ دُبُرٍ فَكَذَبَتْ وَهُوَ مِنَ الصّٰدِقِيْنَ

    وَاِنْ
    : اور اگر كَانَ : ہے قَمِيْصُهٗ : اس کی قمیص قُدَّ : پھٹی ہوئی مِنْ دُبُرٍ : پیچھے سے فَكَذَبَتْ : تو وہ جھوٹی وَهُوَ : اور وہ مِنَ : سے الصّٰدِقِيْنَ : سچے

    اگر یوسف (علیہ السلام) کا کرتہ پیچھے سے پھٹا ہوا ہے تو عورت نے جھوٹ بولا ہے یوسف (علیہ السلام) سچا ہے۔۲۷


  15. #1710
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    2,171
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    وَمَا مِن دَابَّةٍ ۔ سورت یوسف

    تمہارا فریب بڑا ہے
    فَلَمَّا رَاٰ قَمِيْصَهٗ قُدَّ مِنْ دُبُرٍ قَالَ اِنَّهٗ مِنْ كَيْدِكُنَّ ۭ اِنَّ كَيْدَكُنَّ عَظِيْمٌ

    فَلَمَّا
    : تو جب رَاٰ : دیکھا قَمِيْصَهٗ : اس کی قمیص قُدَّ : پھٹی ہوئی مِنْ دُبُرٍ : پیچھے سے قَالَ : اس نے کہا اِنَّهٗ : بیشک یہ مِنْ : سے كَيْدِكُنَّ : تم عورتوں کا فریب اِنَّ : بیشک كَيْدَكُنَّ : تمہارا فریب عَظِيْمٌ : بڑا

    پھر جب دیکھا کہ کرتہ اس کا پھٹا ہوا ہےپیچھے سے ،کہا اس نے بیشک یہ ایک فریب ہے تم عورتوں کا ، بےشک تمہارا فریب بڑا ہے۔۲۸


Tags for this Thread

Bookmarks

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •