Thanks Thanks:  1
Likes Likes:  5
Results 1 to 3 of 3

Thread: ’’میں ادیب کیسے بنا‘‘ از میکسم گورکی سے اقتباس

  1. #1
    Site Managers Meem's Avatar

    Join Date
    Mar 2008
    Location
    Bora Bora
    Posts
    51,071
    Mentioned
    22 Post(s)
    Tagged
    1 Thread(s)

    ’’میں ادیب کیسے بنا‘‘ از میکسم گورکی سے اقتباس

    ’’ہر آدمی کے لیے اپنی زبان بولنا ہی مناسب ہے۔ ‘‘

    ایک دن تین عورتیں چیخوف سے ملنے آئیں جو بڑے عمدہ لباس میں تھیں، انھوں نے اس کے کمرے کو ریشمی کپڑے کی سرسڑاہٹ اور تیز عطر کی خوشبو سے بھر دیا۔ وہ بڑے انداز سے اپنے میزبان کے مقابل بیٹھ گئیں اور یہ دکھانے کی کوشش کی کہ انھیں سیاست سے بڑی دلچسپی ہے اور سوالات کرنے شروع کردیئے۔
    ’آنتون پافلووچ، آپ کے خیال میں لڑائی کا انجام کیا ہوگا؟‘
    چیخوف نے گلا صاف کیا، کچھ سوچا اور بڑی سنجیدگی کے ساتھ ملائمت آمیز انداز میں کہا:
    ’’میرا خیال ہے کہ غالباً اس کا انجام امن ہوگا۔‘‘
    ’’ہاں ، یہ تو ٹھیک ہے ، لیکن جیتے گا کون ؟یونانی یا ترک ؟‘‘
    ’’میرا خیال ہے کہ جو لوگ زیادہ مضبوط ہوں گے وہی جیت جائیں گے۔ ‘‘
    ’’لیکن آپ کے خیال میں کون زیادہ مضبوط ہے ؟‘‘ عورتوں نے پوچھا۔
    ’’جن کے پاس کھانے کو زیادہ ہے اور جو زیادہ تعلیم یافتہ ہیں۔‘‘
    ’’آہا ، کیسا مزیدار فقرہ کہا ہے ! ‘‘ایک عورت چیخ پڑی۔
    ’’آپ کو کون لوگ زیادہ پسند ہیں ، یونانی یا ترک ؟‘‘ایک دوسری عورت نے پوچھا۔
    چیخوف نے بڑے دلکش انداز سے اس کی طرف دیکھا اور حلیمانہ اور محبت آمیز مسکراہٹ کے ساتھ کہا ’’ مجھے تو سب سے زیادہ نارنگیوں کا مربہ پسند ہے اور آپ، آپ کو پسند ہے یا نہیں ؟‘‘
    ’’بہت زیادہ ‘‘عورت نے بڑی زندہ دلی سے کہا۔
    ’’ہاں ، بڑی نفیس خوشبو ہوتی ہے ، ہے نا ؟تیسری عورت نے سنجیدگی سے تصدیق کی۔
    اور وہ تینوں بڑی گرمجوشی سے باتیں کرنے لگیں ، انھوں نے مربے سے متعلق سارے مسائل کے سلسلے میں بڑی واقفیت کا اظہار کیا اور اس موضوع کے بارے میں گہری علمیت کا ثبوت دیا۔ ظاہر ہے کہ انھیں اس بات سے بڑی خوشی ہوئی کہ اب انھیں کوئی ذہنی کاوش نہیں کرنی پڑ رہی تھی اور نہ انھیں یہ دکھانا پڑ رہا تھا کہ یونانیوں اور ترکوں سے جن کی طرف انھوں نے پہلے کبھی توجہ کی ہی نہیں تھی انھیں بڑی سنجیدہ دلچسپی ہے۔
    رخصت ہوتے ہوئے انھوں نے بڑے ہنس ہنس کر چیخوف سے وعدہ کہ ہم آپ کو بہت سا مربہ بھیجیں گی۔
    جب وہ چلی گئیں تو میں نے چیخوف سے کہا۔ ’’ آپ نے موضوع بڑی عمدگی سے بدلا۔ ‘‘
    چیخوف ہنسا اور کہنے لگا ’’ہر آدمی کے لیے اپنی زبان بولنا ہی مناسب ہے۔ ‘‘

    If you start believing that you're happy, you'll be happy forever

  2. #2
    Sisters Society Rose's Avatar

    Join Date
    Feb 2008
    Location
    Karachi
    Posts
    36,389
    Blog Entries
    25
    Mentioned
    15 Post(s)
    Tagged
    3 Thread(s)
    عمدہ شیئرنگ۔
    اپنی آنکھوں کو قناعت کی طرف لا اے شخص
    اس سے پہلے کہ کوئی خواب بڑا ہو جائے



  3. #3
    Site Managers Rubab's Avatar

    Join Date
    Jun 2007
    Posts
    13,943
    Blog Entries
    6
    Mentioned
    24 Post(s)
    Tagged
    2 Thread(s)
    ہاہاہاہاہا
    یہ بہت خوب ہے۔

    جو اللّٰہ کا حکم



Tags for this Thread

Bookmarks

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •