Thanks Thanks:  0
Likes Likes:  2
Results 1 to 3 of 3

Thread: سوچنے کی بات ہے

  1. #1
    Senior Member

    Join Date
    Mar 2009
    Posts
    18,150
    Mentioned
    4 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    سوچنے کی بات ہے

    روایت ہے کہ ارسطو، سکندراعظم کو عورتوں کی صحبت سے بچنے کی تعلیم و نصیحت کیا کرتا تھا جس کی وجہ سے حرم کی خواتین بہت تنگ تھیں۔ انہوں نے مل کر ایک منصوبہ بنایا اور ایک خوبصورت، شریر و الہڑ کنیز کو ارسطو کی خدمت میں دے دیا۔ کنیز نے اسے اپنی عشوہ طرازی کے جال میں پھانس کر ایک دن فرمائش کر دی کہ ارسطو گھوڑا بنے اور وہ اس پر سواری کرے گی۔ جب یہ مذکورہ تاریخی واقعہ، وقوع پذیر ہو رہا تھا بعینیہہ اسی وقت خواتین حرم، سکندر سمیت کمرے میں داخل ہوئیں۔
    سکندر نے جب استاد کو ایک کنیز کے لیے "فرس فرشی" بنا دیکھا تو تعجب سے پوچھا، "اے استاد، یہ کیا استادی؟ ہمیں منع کرتے ہیں اور خود یہ ۔۔۔۔ "
    ارسطو جو نہایت کائیاں تھا، کھڑا ہوا اور بولا، "عزیز شاگرد، اس عمل کا مقصود بھی تمھاری تربیت ہے، خود سوچو جو عورت تمھارے استاد کو گھوڑا بنا سکتی ہے، تمھیں تو وہ گدھا بنا کر رکھ دے گی"۔

  2. #2
    Senior Member Salman Sallo's Avatar

    Join Date
    Aug 2016
    Location
    خیبر پختونخوا۔
    Posts
    291
    Mentioned
    1 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    تو اس واقعہ سے ہم کیا سبق حاصل کریں ؟ ۔۔۔۔

  3. #3
    Senior Member

    Join Date
    Mar 2009
    Posts
    18,150
    Mentioned
    4 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    Quote Originally Posted by Salman Sallo View Post
    تو اس واقعہ سے ہم کیا سبق حاصل کریں ؟ ۔۔۔۔
    مشکل وقت میں دو طرح سے انسان کی آزمائش ہو سکتی ہے
    مال و دولت
    عورت

Tags for this Thread

Bookmarks

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •