دلیل۔۔۔
"ہمیں تو کورس میں پڑھایا گیا تھا، یوسف اور زلیخا والا قصّہ-"
"یوسف اور کس والا قصّہ؟" سیاہ فام لڑکی کی آنکھوں میں حیرت ابھری-
"یوسف اور زلیخا والا قصّہ-"
"عزیز مصر کی بیوی کا نام زلیخا تھا؟"
"کیا نہیں تھا؟" وہ کنفیوزڈ سی ہو گئی-
"کوئی دلیل ہے تمھارے پاس؟ کوئی حجت؟"
"دلیل؟ ..... حجت؟ وہ ٹکرٹکر اس کا چہرہ دیکھنے لگی- "ہمارے کورس کی گائیڈ بک میں لکھا تھا-"
"کورس کی گائیڈ بک انسان کی بات ہے اور انسان کی بات میں دلیل نہیں ہوتی- دلیل صرف قرآن اور حدیث سے پیش کی جاتی ہے، کیونکہ دونو نازل خدا وندی ہوتے ہیں، قرآن اور حدیث میں کہیں بھی نہیں بتایا گیا کہ اس عورت کا نام زلیخا تھا-" اس کا لہجہ نرم تھا- "مصر کی اس عورت سے ایک غلطی ہوئی تھی، ایک جرم سرزد ہوا تھا، مگر الله نے اس کا پردہ رکھ لیا- اس کا فعل تو بتایا مگر نام نہیں- اور جس چیز کا پردہ الله رکھے، وو کھل نہیں سکتا، مگر ہم نے 'یوسف و زلیخا' کے قصّے ہر منبرو مسجد پر جا کر سنائے- ہم کیسے لوگ ہیں؟"
"ہیں؟ ...... تو اس کا نام زلیخا نہیں تھا؟" وہ ساری خفگی بھلا کر حیرت سے پوچھ رہی تھی-
"اس عورت کا نام راز ہے- اور میرا اور تمہارا رب وہ راز نہیں کھولنا چاہتا، سو یہ ہمیشہ راز ہی رہے گا-"
منقول