Thanks Thanks:  13
Likes Likes:  36
Page 1 of 2 12 LastLast
Results 1 to 15 of 20

Thread: آپ کی معلومات کا ذریعہ کیا ھے؟

  1. #1
    Administrator 1UM-TeamUrdu's Avatar

    Join Date
    Jun 2015
    Posts
    267
    Blog Entries
    42
    Mentioned
    46 Post(s)
    Tagged
    3 Thread(s)

    آپ کی معلومات کا ذریعہ کیا ھے؟

    احباب گرامی آداب۔

    کسی بھی موضوع پر جن ذرائع سے معلومات لی جاتی ہیں ان کی بہت اہمیت ہوتی ہے۔
    اچھا اور مستند ذریعہ چننے سے رائے میں غلطی کا امکان کم ہو جاتا ہے۔
    آپ کس ذریعے سے معلومات لیتے ہیں۔ تصدیق کیسے کرتے ہیں۔ ممکن ہے باہمی تبادلہ خیال سے ہم سب اپنے معلوماتی ذرائع میں بہتری لا سکیں۔

    میری تفصیل کچھ یوں ہے
    میں ٹی وی چینلز پر بہت کم اعتماد کرتا ہوں۔ انہیں دیکھتا صرف اسی لیے ہوں کہ پتہ چلے لوگوں کو کیا دکھایا جا رہا ہے۔
    روٹین میں بی بی سی ، ڈوئچے ورلڈ اردو ، وائس آف امریکہ ، جنگ اور ایکسپریس کی ویب سائٹس چیک کرتا ہوں۔
    کسی خاص موضوع ، ایشو پر مخالفین کے نیوز سورسز لازمی چیک کرتا ہوں تاکہ دونوں اطراف کی بات پتہ چل سکے۔
    ٹوئٹر اور فیس بک سرچ بھی بہت سے معاملات میں مفید اور غیر جانبدار پائی ہے۔
    اخبارات کا مطالعہ اب کم ہے ۔ پہلے بہت ہوتا تھا۔


  2. #2
    Senior Member Ahmed Lone's Avatar

    Join Date
    Oct 2007
    Location
    سعودی عرب
    Posts
    10,597
    Blog Entries
    21
    Mentioned
    12 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    بہت اچھا موضوع ہے
    میری معلومات کے ذرائع
    کتابیں
    انٹرنیٹ
    ٹی وی دیکھتا ہوں نیوز چینلز
    فیس بک کی نسبت ٹیوٹر پر خبروں کی زیادہ معلومات ہوتی ہیں
    مختلف آزاد اور خفیہ فورمز پڑھتا ہوں
    دونوں طرف کی خبریں پڑھتا ہوں
    جیسے حالیہ سرجیکل سٹرائیک
    اب کوئی دعوی نہ کرنا عمر بھر
    اشک آنکھوں میں نہ بھرنا عمر بھر
    ہم تمہیں چاہتے ہیں، دیکھو پھر کبھی
    ہم سے تو تم نہ ہی کہنا عمر بھر۔ ۔ ۔

  3. #3
    Site Managers

    Join Date
    Jun 2007
    Location
    پاکستان
    Posts
    54,986
    Mentioned
    42 Post(s)
    Tagged
    3 Thread(s)
    السلام علیکم
    ٹیم بھائی! حیران کن طور پہ میری معلومات کا ذریعہ بھی تقریباً ہوبہو یہی سب ہیں جو آپ نے بیان فرمائی ہیں، سوائے ٹوئٹر کے۔

    میں اس سلسلے میں مزید یہ عرض کرنا چاہوں گا کہ انٹرنیٹ کی وجہ سے جہاں معلومات کی فراوانی اور آسان رسائی ہوئی ہے، وہیں ڈس انفارمیشن نے بھی کافی فروغ پایا ہے۔ ایک ہی چیز کے حق میں بھی بے شمار دلائل اور مضامین مل جائیں گے، اور اسی چیز کی مخالفت میں بھی دلائل بمعہ ثبوت مل جائیں گے۔
    لہٰذا میری کوشش ہوتی ہے کہ جو کچھ بھی دیکھوں یا پڑھوں، اس کو فوڈ فار تھاٹ کے طور پہ لیا جائے، نہ کہ حتمی معلومات کے طور پر۔ مختلف ذرائع سے کسی چیز کے بارے میں موقف یا معلومات حاصل کر کے خود سے کچھ تجزیہ کر کے رائے قائم کی جائے۔
    (اے اللہ! میرے علم میں اضافہ فرما)۔
    میرا بلاگ: بے کار باتیں

  4. #4
    Administrator 1UM-TeamUrdu's Avatar

    Join Date
    Jun 2015
    Posts
    267
    Blog Entries
    42
    Mentioned
    46 Post(s)
    Tagged
    3 Thread(s)
    Quote Originally Posted by Ahmed Lone View Post
    بہت اچھا موضوع ہے
    میری معلومات کے ذرائع
    کتابیں
    انٹرنیٹ
    ٹی وی دیکھتا ہوں نیوز چینلز
    فیس بک کی نسبت ٹیوٹر پر خبروں کی زیادہ معلومات ہوتی ہیں
    مختلف آزاد اور خفیہ فورمز پڑھتا ہوں
    دونوں طرف کی خبریں پڑھتا ہوں
    جیسے حالیہ سرجیکل سٹرائیک
    بہت شکریہ بھائی

    کتابیں یقینا بہت اچھا سورس ہیں۔ اگرچہ حالات حاضرہ پر تو دیر سے ہی میسر آتی ہیں لیکن بڑے واقعات کے پس منظر کو سمجھنے میں بڑی مدد ملتی ہے۔

    ٹوئٹر بہت مفید سورس ہے۔ خاص طور پر جب کوئی بڑی خبر بن رہی ہوتی ہے تو جتنی تیزی سے ٹوئٹر اپ ڈیٹ ہونا شروع ہوتا ہے باقی میڈیمز بہت پیچھے ہوتے ہیں۔ اس کے علاوہ بھی عوام کی جانب سے انفارمیشن اپ لوڈ کرنے کا شاید سب سے بہترین ذریعہ یہی ہے۔ اور ہیش ٹیگز سے ہم تھوڑی دیر میں کسی سٹوری کو بہت تفصیل سے جان سکتے ہیں۔

  5. #5
    Administrator 1UM-TeamUrdu's Avatar

    Join Date
    Jun 2015
    Posts
    267
    Blog Entries
    42
    Mentioned
    46 Post(s)
    Tagged
    3 Thread(s)
    Quote Originally Posted by Ahsan_Yaz View Post
    السلام علیکم
    ٹیم بھائی! حیران کن طور پہ میری معلومات کا ذریعہ بھی تقریباً ہوبہو یہی سب ہیں جو آپ نے بیان فرمائی ہیں، سوائے ٹوئٹر کے۔

    میں اس سلسلے میں مزید یہ عرض کرنا چاہوں گا کہ انٹرنیٹ کی وجہ سے جہاں معلومات کی فراوانی اور آسان رسائی ہوئی ہے، وہیں ڈس انفارمیشن نے بھی کافی فروغ پایا ہے۔ ایک ہی چیز کے حق میں بھی بے شمار دلائل اور مضامین مل جائیں گے، اور اسی چیز کی مخالفت میں بھی دلائل بمعہ ثبوت مل جائیں گے۔
    لہٰذا میری کوشش ہوتی ہے کہ جو کچھ بھی دیکھوں یا پڑھوں، اس کو فوڈ فار تھاٹ کے طور پہ لیا جائے، نہ کہ حتمی معلومات کے طور پر۔ مختلف ذرائع سے کسی چیز کے بارے میں موقف یا معلومات حاصل کر کے خود سے کچھ تجزیہ کر کے رائے قائم کی جائے۔
    حیرانی کے ساتھ ساتھ یہ شاید اس بات کا بھی ثبوت ہے کہ معلومات کے بس یہی ذرائع دستیاب ہیں۔
    یہاں سوال پیدا ہوتا ہے کہ آخر کیوں
    انڈیا ، چین ، روس ، یورپ ، عرب ممالک ، ترکی ۔ ۔ ۔ وغیرہ نے اردو نیوز میں بہت بڑی انویسٹمنٹ نہیں کی؟ آخر ان کے پاکستان اور اردو دنیا سے مفادات وابستہ ہیں لیکن ان میں سے کسی کا بھی اردو نیوز میں اچھا کام موجود نہیں ہے۔

    باقی موجود ذرائع میں بھی پیشکش کے لحاظ سے وائس آف امریکہ کا سائٹ سب سے ہلکا ہے۔ بی بی سی نمبر ون ہے۔ ڈوئچے ورلڈ درمیانہ ہے۔ ایون لنکس کلک کرنے کا ایرر پایا جاتا ہے۔
    روزنامہ جنگ کا ویب سائٹ بھی زیادہ یوزر فرینڈلی نہیں۔دیگر اکثر اخبارات کے سائٹس اچھے ہیں۔

  6. #6
    Senior Member Sabih's Avatar

    Join Date
    Jun 2009
    Posts
    10,466
    Blog Entries
    11
    Mentioned
    19 Post(s)
    Tagged
    1 Thread(s)
    جب سے فورم پر بلھے شاہ کی قافی کا رولا پڑا می کا انٹرنیٹ سے اعتبار اٹھ گیا جب سرچ کرنے پر اتنی قافیاں ملیں کہ چودہ طبق روشن ہو گئے.
    پر پھر بھی اکثر انٹرنیٹ پر ہی اکتفا کرنا پڑتا ہے لیکن نیوز سورسز پر زیادہ دھیان رہتا ہے خاص کر کراچھے سورسز جن کی شہرت اچھی ہو.
    باقی کتب تو ہیں ہی.

    لیکن میرے نالج کا بہت بڑا بلکہ شاید سب سے بڑا سورس ابو جی ہیں.

  7. #7
    Senior Member Ahmed Lone's Avatar

    Join Date
    Oct 2007
    Location
    سعودی عرب
    Posts
    10,597
    Blog Entries
    21
    Mentioned
    12 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    جی ٹویٹر تو کبھی کبھی خبر کا ذریعہ ہوتا ہے
    Quote Originally Posted by 1UM-TeamUrdu View Post
    بہت شکریہ بھائی

    کتابیں یقینا بہت اچھا سورس ہیں۔ اگرچہ حالات حاضرہ پر تو دیر سے ہی میسر آتی ہیں لیکن بڑے واقعات کے پس منظر کو سمجھنے میں بڑی مدد ملتی ہے۔

    ٹوئٹر بہت مفید سورس ہے۔ خاص طور پر جب کوئی بڑی خبر بن رہی ہوتی ہے تو جتنی تیزی سے ٹوئٹر اپ ڈیٹ ہونا شروع ہوتا ہے باقی میڈیمز بہت پیچھے ہوتے ہیں۔ اس کے علاوہ بھی عوام کی جانب سے انفارمیشن اپ لوڈ کرنے کا شاید سب سے بہترین ذریعہ یہی ہے۔ اور ہیش ٹیگز سے ہم تھوڑی دیر میں کسی سٹوری کو بہت تفصیل سے جان سکتے ہیں۔
    اب کوئی دعوی نہ کرنا عمر بھر
    اشک آنکھوں میں نہ بھرنا عمر بھر
    ہم تمہیں چاہتے ہیں، دیکھو پھر کبھی
    ہم سے تو تم نہ ہی کہنا عمر بھر۔ ۔ ۔

  8. #8
    Senior Member Ahmed Lone's Avatar

    Join Date
    Oct 2007
    Location
    سعودی عرب
    Posts
    10,597
    Blog Entries
    21
    Mentioned
    12 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    ویسے کہا تو آپ نے ٹھیک ہے
    سارا زمانہ اپنی بات ہمارے زبان میں ہم کو سنانا چاہتا
    نہیں چاہتے تو یہ عرب بھائی

    ہمیں کیا بتاتے یہ تو خود بالی وڈ کو ترجمہ کرکے اپنی عوام کو دیکھاتے
    Quote Originally Posted by 1UM-TeamUrdu View Post
    حیرانی کے ساتھ ساتھ یہ شاید اس بات کا بھی ثبوت ہے کہ معلومات کے بس یہی ذرائع دستیاب ہیں۔
    یہاں سوال پیدا ہوتا ہے کہ آخر کیوں
    انڈیا ، چین ، روس ، یورپ ، عرب ممالک ، ترکی ۔ ۔ ۔ وغیرہ نے اردو نیوز میں بہت بڑی انویسٹمنٹ نہیں کی؟ آخر ان کے پاکستان اور اردو دنیا سے مفادات وابستہ ہیں لیکن ان میں سے کسی کا بھی اردو نیوز میں اچھا کام موجود نہیں ہے۔

    باقی موجود ذرائع میں بھی پیشکش کے لحاظ سے وائس آف امریکہ کا سائٹ سب سے ہلکا ہے۔ بی بی سی نمبر ون ہے۔ ڈوئچے ورلڈ درمیانہ ہے۔ ایون لنکس کلک کرنے کا ایرر پایا جاتا ہے۔
    روزنامہ جنگ کا ویب سائٹ بھی زیادہ یوزر فرینڈلی نہیں۔دیگر اکثر اخبارات کے سائٹس اچھے ہیں۔
    اب کوئی دعوی نہ کرنا عمر بھر
    اشک آنکھوں میں نہ بھرنا عمر بھر
    ہم تمہیں چاہتے ہیں، دیکھو پھر کبھی
    ہم سے تو تم نہ ہی کہنا عمر بھر۔ ۔ ۔

  9. #9
    Site Managers

    Join Date
    Apr 2008
    Location
    Qatar
    Posts
    31,837
    Blog Entries
    16
    Mentioned
    46 Post(s)
    Tagged
    6 Thread(s)
    میری معلومات کا ذریعہ زیادہ تر انٹرنیٹ ہی ہے
    سوشل سائٹس خاص کر ٹویٹر سے زیادہ تر خبروں سے اپ ڈیٹ رہتا ہوں کیونکہ ٹویٹر تیز ترین ذریعہ ہے
    اخبار بس دوران سفر ہی پڑھنے کا اتفاق ہوتا ہے
    ٹی وی چینلز پر سے اعتبار اٹھ گیا ہے اس لئے وہ بھی نہیں دیکھتا
    گھر ہوتا تھا تو بی بی سی اور ڈوئچے ورلڈ سنتا تھا
    * خسرو *

  10. #10
    Senior Member

    Join Date
    Oct 2016
    Location
    Karachi, Pakistan
    Posts
    144
    Mentioned
    5 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    Pakistani news sources:
    Dawn (both newspaper & news channel)
    Herald-Dawn
    The News International
    Geo
    sometimes Aaj
    sometimes Express Tribune

    Canadian:
    National Post
    The Globe and Mail
    CBC
    CTV

    US:
    CNN (news channel and news website)
    The Wall Street Journal
    Washington Post
    sometimes Chicago Tribune and New York Times

    UK:
    Mirror
    Daily Mail
    BBC (news channel and news website)
    sometimes Independent, Telegraph and The Guardian

    Arabic:
    Al Jazeera
    Al-Arabiya
    sometimes Middle East Eye

  11. #11
    Senior Member

    Join Date
    Jun 2008
    Posts
    7,798
    Mentioned
    3 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    کتابیں
    میگزین
    انٹرنیٹ
    ریڈیو ون ۔ اس پر سارا دن مقامی، قومی اور بین الاقوامی خبریں اور اس سے متعلقہ پروگرام چلتے ہیں۔
    فیملی رپورٹر ۔ چھوٹی بہن
    ​The Quraan breaks hard hearts and heals broken hearts.

    Grow
    where you are planted

  12. #12
    Senior Member

    Join Date
    Dec 2007
    Location
    Dammam
    Posts
    2,584
    Mentioned
    9 Post(s)
    Tagged
    1 Thread(s)
    Quote Originally Posted by Taaliah View Post
    کتابیں
    میگزین
    انٹرنیٹ
    ریڈیو ون ۔ اس پر سارا دن مقامی، قومی اور بین الاقوامی خبریں اور اس سے متعلقہ پروگرام چلتے ہیں۔
    فیملی رپورٹر ۔ چھوٹی بہن
    authentic reporting

  13. #13
    Senior Member

    Join Date
    Sep 2011
    Posts
    568
    Blog Entries
    3
    Mentioned
    13 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)
    اکھا انٹرنیٹ۔ بولے تو پھیس بک اور ٹویٹر۔
    ﻣﻞ ﮐﺮ ﺑﻴﭩﮭﮯ ﺗﺼﻮﻳﺮﺍﮞ ﺩﺍ

  14. #14
    Senior Member

    Join Date
    Aug 2016
    Posts
    297
    Blog Entries
    1
    Mentioned
    4 Post(s)
    Tagged
    1 Thread(s)
    بی بی سی
    سیاست نیوز
    اعتماد نیوز
    عرب نیوز

  15. #15
    Site Managers

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    52,406
    Blog Entries
    3
    Mentioned
    16 Post(s)
    Tagged
    1 Thread(s)
    بی بی سی
    سی این این
    ایکسپریس نیوز کی ویب سائٹ
    جنگ کی ویب سائٹ
    ٹویئٹر

    ***

    گفتگو کرنے کا کچھ اُس میں ہُنر ایسا تھا
    وہ مری بات کا مفہوم بدل دیتا تھا
    ***

Page 1 of 2 12 LastLast

Bookmarks

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •