جیو چینل پر ایک ڈرامہ "میرا سلطان" چل رہا ہے، اگرچہ میں نے اس کی ایک قسط بھی نہیں دیکھی، لیکن پچھلے دنوں اس کے پس منظر میں ایک کالم پڑھا تھا کہ
ترکی کے اسلام پسندوں نے مصطفٰے کمال پاشا کی زندگی پر کوئی فلم بنائی تھی جس میں اس کے اسلام مخالف نظریات اور باہر کے ممالک سے پیسہ وصول کرنے اور ترکی میں اسلامی شعائر پر پابندی وغیرہ کو ظاہر کیا گیا تھا۔
یہ بات لبرل انتہا پسندوں کو بری لگی جس کے جواب میں انہوں نے "میراسلطان" ڈرامہ بنایا جس میں ترکی کے ایک مسلمان حکمران کو اپنی کنیزوں میں مشغول اور محلاتی سازشوں کا شکار ظاہر کیا گیا، کالم نگار کے مطابق مذکورہ بادشاہ کا کردارحکمرانی طور پر اچھا لیکن ذاتی زندگی میں اتنا مثالی نہیں تھا لیکن بہرحال اس ڈرامے میں بہت اس کی کمزوریوں کو بڑھا چڑھا کر غلط انداز میں پیش کیا گیا اور اس کو ایک مسلمان کی حیثیت سے بدنام کیا گیاہے۔