Thanks Thanks:  0
Likes Likes:  0
Results 1 to 3 of 3

Thread: paint

  1. #1
    Junior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    23
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    paint

    assalam alikum,maine apse pehle b apne bete ke baray mein sawaal poochey hain,aj phir ap ko zehmat de rahi hoon.mera beta 5saal ka hai mager abi tak wo pencil haath mein pakrna nahi jaanta,kindergartan mein b paint wagera ka usko koi shuaq nahi hai,jabke iski umer ke bachey achi khaasi ak tasweer paint ker lete hain,ap se ye poochna hai ke kya kiya jaaye ke uski dilchaspi paint kerne mein ho.or doosra sawaal ke mera beta hyperactiv hai ayse bachon ke liye konsi sport behtreen hoti hai.main jawwab ki muntazir rahoongi.Allah hafiz

  2. #2
    Sisters Society

    Join Date
    Feb 2008
    Location
    CA, USA
    Posts
    16,003
    Blog Entries
    2
    Mentioned
    2 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: paint

    وعلیکم السلام

    بہتر جواب تو آپ کو ڈاکٹر صاحبہ ہی دے سکیں گی مگر پینٹ کا شوق نہ ہونا کوئی ایسی بڑی بات نہیں ۔۔۔۔ اگر بچے کی گرفت ٹھیک ہے اور باقی کام ٹھیک سے کرتا ہے تو آہستہ آہستہ پنسل پکڑنے کی بھی عادت پڑ جائے گی۔۔۔۔۔۔
    پینٹ کی بجائے کریانز یا فنگر پینٹ دیکر دیکھیں ۔۔۔۔ کلر چاک بھی ٹرائی کر سکتی ہیں


    ہائیپر بچوں کیلئے سوئمنگ یا کراٹے وغیرہ کافی بہتر رہتے ہیں۔۔۔۔۔ سوئمنگ بچے کو کنٹرول سیکھاتی اور خوب سے تھکا بھی دیتی ہے ۔۔۔۔ کراٹے سے بھی سیلف کنٹرول پڑھتا ہے۔۔۔۔۔





    The most common way people give up their power


    is by thinking they don't have any.


    ~ Alice Walker ~


    Courage is like a muscle.


    We strengthen it with use.


    ~ Ruth Gordon ~

  3. #3
    Senior Member

    Join Date
    Jan 2009
    Posts
    1,577
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: paint

    وعلیکم السلام!
    ہر بچہ کی اپنی ایک شخصیت ہے اور اسی کے حساب سے اس کی دلچسپیاں ہوتی ہیں، ہوسکتا ہے کہ اسے پینٹ کرنا بالکل بھی مزے کا کام نہ لگتا ہو کیونکہ ہاپئر ایکٹو بچوں کیلئے ٹک کر کچھ کرنا مشکل ہوتا ہے، جہاں تک پنسل پکڑنے کی بات ہے تو یہ دیکھیں کہ وہ پکڑنا نہیں چاہتا یا اس سے پکڑی نہیں جاتی، اسے پنسل پکڑنے میں مدد دیں، اسے زیادہ دیر ٹی وی یا وڈیو گیم میں نا لگنے دیں،جسمانی یا ذھنی کھیل بچہ کی دلچسپی پر منحصر ہے۔ اس کے ساتھ آپ میموری گیم کھیل سکتی ہیں، جس سے اسے چھوٹے چھوٹے لفظ یاد کروائے جائیں، پارک لے جا سکتی ہیں جہاں وہ تھوڑا آزاد محسوس کرے، چھوٹی چھوٹی چیزوں کو جوڑنا اس کیلئے مزے کا کام ہے جیسے بلاک گیم، اس کی اپنی دلچسپی کو بھی مدنظر رکھیں کہ وہ کیا کھیلنا چاہتا ہے یا کس وقت کیا کھیلنا چاہتا ہے۔

Bookmarks

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •