Thanks Thanks:  0
Likes Likes:  0
Page 1 of 38 12311 ... LastLast
Results 1 to 15 of 561

Thread: آپ کی پسند ۔۔۔ اشعار، غزل، نظم

  1. #1
    Site Managers

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    52,406
    Blog Entries
    3
    Mentioned
    16 Post(s)
    Tagged
    1 Thread(s)

    آپ کی پسند ۔۔۔ اشعار، غزل، نظم

    السلام علیکم

    اس تھریڈ میں آپ اپنی پسند کے اشعار، غزل یا نظم شیئر کیجئے

    آغاز میں آپ کی نذر فاخرہ بتول کی ایک غزل۔۔۔


    عذاب آنکھ میں اُترے تو راستہ نہ ملا
    گلاب خاک میں بکھرے تو راستہ نہ ملا

    جنوں کا پہلے سے اِنکار کر لیا ہوتا
    اب اس مقام پر مکرے تو راستہ نہ ملا

    یہ تیرگی میں چمکتے رہے ادھر سے ادھر
    ستارے دھوپ سے نکھرے تو راستہ نہ ملا

    کہاں تو موجوں پہ رکھ کر قدم گزرتے تھے
    بھنور کے زاویے بپھرے تو راستہ نہ ملا

    یہ کائنات تو پیچھے ہی رہ گئی تھی کہیں
    ہجوم ذات سے گزرے تو راستہ نہ ملا

    لگا تھا ڈوب کے ، منزل کو چھو لیا ہے بتول
    مگر جو ڈوب کے ابھرے تو راستہ نہ ملا


    ***

    گفتگو کرنے کا کچھ اُس میں ہُنر ایسا تھا
    وہ مری بات کا مفہوم بدل دیتا تھا
    ***

  2. #2
    Senior Member

    Join Date
    Mar 2009
    Posts
    18,150
    Mentioned
    4 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: آپ کی پسند ۔۔۔ اشعار، غزل، نظم


    وہ کہتی ہے سنو جاناں محبت موم کا گھر ہے
    تپش بد گمانی کی کہیں پگھلا نہ دے اس کو
    میں کہتا ہو کہ جس دل میں ذرا بھی بد گمانی ہو
    وہاں کچھ اور ہو تو ہو محبت ہو نہیں سکتی

    وو کہتی ہے صد ایسے ہی کیا تم مجھ کو چاہو گے
    کہ میں اس کمی بلکل اس میں گوارا کر نہیں سکتی
    میں کہتا ہوں محبت کیا ہے یہ تم نے سکھایا ہے
    مجھے تم سے محبت کے سواکچھ بھی نہیں آتا

    وہ کہتی ہے جدائی سے بہت ڈرتا ہے میرا دل
    کہ خود کو تم سے ہٹ کر دکھنا ممکن نہیں ہے اب
    میں کہتا ہوں یہی خدشے بہت مجھ کو ستاتے ہیں
    مگر سچا ہے محبت میں جدائی ساتھ چلتی ہے
    وہ کہتی ہے بتاؤ کیا مرے بن جی سکو گے تم
    میری باتیں میری یادیں میری آنکھیں بھلا دو گے
    میں کہتا ہوں کبھی اس بات پرسوچا نہیں میں نے
    اگر اک پل کو سوچوں تو سانسیں رکنے لگتی ہیں

    وہ کہتی ہے تمہیں مجھ سے محبت اس قدر کیوں ہے
    کہ میں اک عام سی لڑکی تمہیں کیوں خاص لگتی ہوں
    میں کہتا ہوں کبھی خود کو میری آنکہ سے تم دیکھو
    میری دیوانگی کیوں ہے یہ خود ہی جان جاؤ گی
    وہ کہتی ہے مجھے وارفتگی سے دیکھتے کیوں ہو
    کہ میں خود کو بہت قیمتی محسوس کرتی ہوں
    میں کہتا ہوں متاۓ جاں بہت انمول ہوتی ہے
    تمہیں جب دیکھتا ہوں زندگی محسوس کرتا ہوں

    وہ کہتی ہے مجھے الفاظ کے جگنو محل ملتے
    تمہیں بتلا سکوں دل میں مرے کتنی محبت ہے
    میں کہتا ہوں محبت تو نگاہوں سے جھلکتی ہے
    تمہاری خاموشی مجھ سےتمہاری بات کرتی ہے

    وہ کہتی ہے بتاؤ نان کسے کھونے سے ڈرتے ہو
    بتاؤ کون ہے وہ جس کو یہ موسم بلاتے ہیں
    میں کہتا ہوں یہ میری شاعری ہے آئنہ دل کا
    ذرا دیکھو بتاؤ کیا تم کو اس میں نظر آیا
    وہ کہتی ہے عاطف جی بہت باتیں بناتے ہوں
    مگر سچ ہے یہ باتیں بہت ہی شاد رکھتی ہیں
    میں کہتا ہوں یہ سب باتیں فسانے اک بہانا ہیں
    کہ پل کچھ زندگانی کے تمھارے ساتھ کٹ جانیں
    پھر اس کے بعد خاموشی کا دلکش رقص ہوتا ہے
    نگاہیں بولتی ہیں اور لب خاموش رہتے ہیں

    وہ کہتی ہے سنو جاناں محبت موم کا گھر ہے
    تپش بد گمانی کی کہیں پگھلا نہ دے اس کو
    میں کہتا ہو کہ جس دل میں ذرا بھی بد گمانی ہو
    وہاں کچھ اور ہو تو ہو محبت ہو نہیں سکتی

    وو کہتی ہے صد ایسے ہی کیا تم مجھ کو چاہو گے
    کہ میں اس کمی بلکل اس میں گوارا کر نہیں سکتی
    میں کہتا ہوں محبت کیا ہے یہ تم نے سکھایا ہے
    مجھے تم سے محبت کے سواکچھ بھی نہیں آتا

  3. #3
    Section Managers

    Join Date
    Jul 2007
    Posts
    30,846
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: آپ کی پسند ۔۔۔ اشعار، غزل، نظم


    وعلیکم السلام بھائی ۔۔۔۔


    مجھ سے پوچھتے ہیں لوگ
    کس لئے دسمبر میں
    یوں اداس پھرتا ہوں
    کوئی دکھ چھپاتا ہوں
    یا کسی کے جانے کا
    سوگ پھر مناتا ہوں


    آپ میرے البم کا صفحہ صفحہ دیکھیں گے
    آئیے دکھاتا ہوں ضبط آزماتا ہوں


    سردیوں کے موسم میں گرم گرم کافی کے
    چھوٹے چھوٹے سپ لے کر
    کوئی مجھ سے کہتا تھا
    ہائے اس دسمبر میں کس بلا کی سردی ہے
    کتنا ٹھنڈا موسم ہےکتنی یخ ہوائیں ہیں


    تم بھی عجب شے ھو
    اتنی سخت سردی میں ہوکے اتنے بےپروا
    جینز اور ٹی شرٹ میں کس مزے سے پھرتے ھو
    شال بھی مجھے دی کوٹ بھی اوڑھا ڈالا
    پھر بھی کانپتی ہوں میں


    چلو اب شرافت سے پہن لو سوئیٹر
    تمہارے لئے بن لیا تھا دودن میں
    کتنا مان تھا اس کو اپنی چاہت پر


    "اب بھی ہر دسمبر میں اسکی یاد آتی ہے"

    گرم گرم کافی کے چھوٹے چھوٹے سپ لیتی
    ہاتھ گال پر رکھے حیرت و تعجب سے
    مجھ کو دیکھتی رہتی اور مسکرادیتی
    شوخ و شنگ لہجے میں مجھ سے پھر وہ کہتی تھی
    اتنے سرد موسم میں آدھی سلیوز کی ٹی شرٹ


    "میل شاوانیزم" ہے
    کتنی مختلف تھی وہ
    سب سے منفرد تھی وہ
    دریاؤں سے کچھ ربط ہوا اِتنا زیادہ
    پانی پہ لکھی لگتی ہے تقدیر ہماری
    اے وقت! اِسے اپنی کسی موج پہ لکھ لے
    مٹ جائے کہیں ہم سے نہ تحریر ہماری


  4. #4
    Senior Member

    Join Date
    Jan 2008
    Posts
    29,003
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: آپ کی پسند ۔۔۔ اشعار، غزل، نظم

    آج ہماری خاک پہ دنیا رونے دھونے بیٹھی ھے
    پھول ہوئے ہیں اتنے سستے جانے کتنے برسوں بعد
    بھول بھی جاؤ کس نے توڑا کیسے توڑا کیونکر توڑا
    ڈھونڈ رھے ھو گلیوں میں کیا دل کے ٹکڑے برسوں بعد

    وہ چارہ گر مرے زخموں کو چھیڑنے والا
    دوا کو چھوڑ کے دینے لگا دعائیں مجھے

  5. #5
    Section Managers

    Join Date
    Jul 2007
    Posts
    30,846
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: آپ کی پسند ۔۔۔ اشعار، غزل، نظم

    میں خوش ہوں جاناں !

    تم دیکھ لو کبھی آکے

    کہیں بھی کوئی غم کی چھایا

    تم کو نظر نہیں آئے گی

    آنکھ میں ڈھونڈنے کے باوجود

    تم اک آنسو بھی نہ پاؤ گئے

    لبوں کی میرے ہنسی یہ تم کو

    باور کرواہی دے گی کہ

    میں خوش ہوں

    لیکن میرے باغیچے کے

    سارے پودے سوکھ گئے ہیں۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    دریاؤں سے کچھ ربط ہوا اِتنا زیادہ
    پانی پہ لکھی لگتی ہے تقدیر ہماری
    اے وقت! اِسے اپنی کسی موج پہ لکھ لے
    مٹ جائے کہیں ہم سے نہ تحریر ہماری


  6. #6
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    9,278
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: آپ کی پسند ۔۔۔ اشعار، غزل، نظم

    Quote Originally Posted by IN Khan View Post
    السلام علیکم



    اس تھریڈ میں آپ اپنی پسند کے اشعار، غزل یا نظم شیئر کیجئے

    آغاز میں آپ کی نذر فاخرہ بتول کی ایک غزل۔۔۔



    عذاب آنکھ میں اُترے تو راستہ نہ ملا


    گلاب خاک میں بکھرے تو راستہ نہ ملا



    جنوں کا پہلے سے اِنکار کر لیا ہوتا


    اب اس مقام پر مکرے تو راستہ نہ ملا



    یہ تیرگی میں چمکتے رہے ادھر سے ادھر


    ستارے دھوپ سے نکھرے تو راستہ نہ ملا



    کہاں تو موجوں پہ رکھ کر قدم گزرتے تھے


    بھنور کے زاویے بپھرے تو راستہ نہ ملا



    یہ کائنات تو پیچھے ہی رہ گئی تھی کہیں


    ہجوم ذات سے گزرے تو راستہ نہ ملا



    لگا تھا ڈوب کے ، منزل کو چھو لیا ہے بتول


    مگر جو ڈوب کے ابھرے تو راستہ نہ ملا




    واہ آپ نے تو آغاز میں ہی دل جیت لیا فاخرہ بتول جی کی غزل کے ساتھ

  7. #7
    Senior Member

    Join Date
    Feb 2009
    Posts
    8,850
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: آپ کی پسند ۔۔۔ اشعار، غزل، نظم

    جمالِ یار کو تصویر کرنے والے تھے
    ہم ایک خواب کی تعبیر کرنے والے تھے

    شبِ وصال وہ لمحے گنوا دیے ہم نے
    جو دردِ ہجر کو اکسیر کرنے والے تھے

    کہیں سے ٹوٹ گیا سلسلہ خیالوں کا
    کئی محل ابھی تعمیر کرنے والے تھے

    اور ایک دن مجھے اُس شہر سے نکلنا پڑا
    جہاں سبھی مری توقیر کرنے والے تھے

    ہماری دربدری پر کسے تعجب ہے
    ہم ایسے لوگ ہی تقصیر کرنے والے تھے

    جو لمحے بیت گئے ہیں تری محبت میں
    وہ لوحِ وقت پہ تحریر کرنے والے تھے

    چراغ لے کے انہیں ڈھونڈیے زمانے میں
    جو لوگ عشق کی توقیر کرنے والے تھے

    وہی چراغ وفا کا بجھا گئے آصفؔ
    جو شہرِ خواب کی تعمیر کرنے والے تھے
    لوگ منتظر رھے کہ ھمیں ٹوٹتا دیکھیں
    ھم ضبط کرتےکرتے پتھر کے ھو گئے

  8. #8
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    3,199
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: آپ کی پسند ۔۔۔ اشعار، غزل، نظم

    کل سامنے منزل تھی، پیچھے میرے آوازیں
    چلتا تو بچھڑ جاتا، رکتا تو سفر جاتا

  9. #9
    Senior Member Pardaisi's Avatar

    Join Date
    Sep 2007
    Posts
    61,652
    Blog Entries
    21
    Mentioned
    2 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: آپ کی پسند ۔۔۔ اشعار، غزل، نظم

    رہیے اب ایسی جگہ چل کر جہاں کوئی نہ ہو
    ہم سخُن کوئی نہ ہو اور ہم زباں کوئی نہ ہو
    بے در و دیوار سا ایک گھر بنایا چاہیے
    کوئی ہمسایہ نہ ہو اور پاسباں کوئی نہ ہو
    پڑیے گر بیمار تو کوئی نہ ہو تیماردار
    اور اگر مر جائیے تو نوحہ خواں کوئی نہ ہو



    .
    کوئی مجبوریاں نہیں ہوتیں
    لوگ یونہی وفا نہیں کرتے


  10. #10
    Section Managers

    Join Date
    Jul 2007
    Posts
    30,846
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: آپ کی پسند ۔۔۔ اشعار، غزل، نظم

    Quote Originally Posted by ضحٰی View Post
    کل سامنے منزل تھی، پیچھے میرے آوازیں


    چلتا تو بچھڑ جاتا، رکتا تو سفر جاتا

    بہت خوب ۔۔۔
    دریاؤں سے کچھ ربط ہوا اِتنا زیادہ
    پانی پہ لکھی لگتی ہے تقدیر ہماری
    اے وقت! اِسے اپنی کسی موج پہ لکھ لے
    مٹ جائے کہیں ہم سے نہ تحریر ہماری


  11. #11
    Senior Member

    Join Date
    Jan 2008
    Posts
    29,003
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: آپ کی پسند ۔۔۔ اشعار، غزل، نظم


    دل دھڑکنے کا سبب یاد آیا
    وہ تری یاد تھی اب یاد آیا


    آج مشکل تھا سنبھلنا اے دوست
    تو مصیبت میں عجب یاد آیا


    دن گزارا تھا بڑی مشکل سے
    پھر ترا وعدۂ شب یاد آیا


    تیرا بھولا ہوا پیماِن وفا
    مر رہیں گے اگر اب یاد آیا


    پھر کئی لوگ نظر سے گزرے
    پھر کوئی شہرِ طرب یاد آیا


    حاِل دل ہم بھی سُناتے لیکن
    جب وہ رُخصت ہوا تب یاد آیا


    بیٹھ کر سایۂ گل میں ناصر
    ہم بہت روئے وہ جب یاد آیا


    ناصر کاظمی

    وہ چارہ گر مرے زخموں کو چھیڑنے والا
    دوا کو چھوڑ کے دینے لگا دعائیں مجھے

  12. #12
    Section Managers

    Join Date
    Jul 2007
    Posts
    30,846
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: آپ کی پسند ۔۔۔ اشعار، غزل، نظم

    اے محبت !
    تیری قسمت
    کہ تجھے مفت ملے ہم سے دانا
    جو کمالات کیا کرتے تھے
    خشک مٹی کو امارات کیا کرتے تھے
    اے محبت!
    یہ تیرا بخت
    کہ بن مول ملے ہم سے انمول
    جو ہیروں میں تُلا کرتے تھے
    ہم سے منہ زور
    جو بھونچال اُٹھا رکھتے تھے
    اے محبت میری!
    ہم تیرے مجرم ٹھہرے ،
    ہم جیسے جو لوگوں سے سوالات کیا کرتے تھے
    ہم جو سو باتوں کی ایک بات کیا کرتے تھے
    تیری تحویل میں آنے سے ذرا پہلے تک
    ہم بھی اس شہر میں عزت سے رہا کرتے تھے
    ہم بگڑتے تو کئی کام بنا کرتے تھے
    اور !
    اب تیری سخاوت کے گھنےسائے میں
    خلقتِ شہر کو ہم زندہ تماشا ٹھہرے
    جتنے الزام تھے
    مقسوم ہمارا ٹھہرے
    اے محبت !
    ذرا انداز بدل لے اپنا
    تجھہ کو آئندہ بھی عاشقوں کا خون پینا ہے
    ہم تو مر جائیں گے ، تجھ کو مگر جینا ہے
    اے محبت !
    تیری قسمت
    کہ تجھے مفت ملے ہم سے انمول
    ہم سے دانا۔۔۔۔۔
    اے محبت
    دریاؤں سے کچھ ربط ہوا اِتنا زیادہ
    پانی پہ لکھی لگتی ہے تقدیر ہماری
    اے وقت! اِسے اپنی کسی موج پہ لکھ لے
    مٹ جائے کہیں ہم سے نہ تحریر ہماری


  13. #13
    Member

    Join Date
    Nov 2010
    Posts
    76
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: آپ کی پسند ۔۔۔ اشعار، غزل، نظم

    زندگی قطرے کو سکھلاتی ہے اسرار حیات
    یہ کبھی گوہر ،کبھی شبنم ،کبھی آنسو ،کبھی ہوا
    سلگتی “زندگی“ سے موت آ جائے تو بہتر ہے “فراز“
    ہم سے دل کے ارمانوں کا اپ “ماتم“ نہیں ہوتا
    [SIGPIC][/SIGPIC]

  14. #14
    Senior Member

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    9,278
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: آپ کی پسند ۔۔۔ اشعار، غزل، نظم

    بے شک یہ بیاض تمھاری ہے

    اور ہم بھی تمھارے ہیں ___ لیکن
    (یا تھے ___ لیکن)

    ہم اس پر کچھ نہیں لکھیں گے

    ہم لکھیں اس پر نام؟____ نہیں
    پیغام؟ ___ نہیں
    اشعار؟ ___ نہیں
    سرکار؟ ___ نہیں

    ہم اس پر کچھ نہیں لکھیں گے

    دل کا جو تمھارے صفحہ ہے
    وہ آج جو بلکل سادہ ہے

    اس پر بھی تو لکھا تھا ہم نے
    اک نام ،کبھی
    پیغام،کبھی
    اشعار، کبھی
    سرکار،کبھی

    وہ صفحہ تم نے دھو ڈالا
    وہ صفحہ بلکل سادہ ہے

    اب کاغذ کے اس صفحے کو
    کیوں لا کر آگے رکھتی ہو
    کیوں نام،پیام،اشعار لکھیں
    ہم لوگ تو جو سرکار لکھیں

    اک بار لکھیں

    ہم اس پر کچھ نہیں لکھیں گے

    ابنٍ انشا

  15. #15
    Senior Member

    Join Date
    May 2008
    Posts
    3,041
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: آپ کی پسند ۔۔۔ اشعار، غزل، نظم

    ہوتی نہیں کسی کے وہ اختیار میں
    آکر خزاں رہے گی باغ بہار میں

    میں انجمن اکیلا تنہا ہزار میں
    عرصہ ہوا کسی کی آہٹ سنے ہوئے

    پازیب کیا بجے گی اجڑے دیار میں

    نہ شام غم کٹی، نہ راتیں فراق کی
    اک عمر کٹ گئی ہے صبروقرار میں

    صحرا زندگی میں ایسی ہیں آندھیاں
    کس کے نشاں رہے ہیں باقی غبار میں
    داور حشر ! مجھے تیری قسم
    عمر بھر میں نے عبادت کی ہے
    تو میرا نامہء اعمال تو دیکھ
    میں نے انساں سے محبت کی ہے

Page 1 of 38 12311 ... LastLast

Bookmarks

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •