Thanks Thanks:  0
Likes Likes:  0
Results 1 to 15 of 90

Thread: 1US-Writers...نثری تحریروں کا مُقابلہ

Hybrid View

Previous Post Previous Post   Next Post Next Post
  1. #1
    Section Managers

    Join Date
    Jul 2007
    Posts
    27,433
    Mentioned
    1 Post(s)
    Tagged
    1 Thread(s)

    1US-Writers...نثری تحریروں کا مُقابلہ



    السلام علیکم مُعزز ممبران۔ اُمید کرتی ہوں کہ سب خیریت سے ہوں گے۔

    آج کل فورم پر لکھنے لکھانے کا ایک ٹرینڈ سا چل پڑا ہے۔ کہیں کوئی افسانے لکھ رہا ہے تو کہیں مزاحیہ تحریریں، کہیں جا بجا بلاگز لکھے جا رہے ہیں تو کہیں شاعر لوگ بھی اپنی محفل جمائے بیٹھے ہیں۔ اس سب میں کچھ ممبرز ہیں جو شاید لکھنا چاہتے ہیں لیکن وہ کسی بڑے موضوع پر قلم اُٹھانے سے ہچکچاتے ہیں۔

    ایسے ہی ممبران کے لیے اور باقی ریگولر لکھنے والوں کے لیے بھی۔ ۔ ۔ایک ایسے مقابلے کا اہتمام کیا گیا ہے جو آپ کو سنجیدہ تلخ اور گہری باتوں سے کچھ دیر کو نکال کر کچھ ہلکا پُھلکا پڑھنے کو دے گا۔ تو آئیں اس مُقابلے میں کیا اور کیسے لکھنا ہے یہ جانتے ہیں۔

    یہ نثری مُقابلہ ہے اور موضوع کی کوئی قید نہیں۔ لیکن اگر کسی کو موضوع سمجھ نہ آئے تو وہ "یادیں" موضوع پر کچھ لکھنے کی کوشش کرے۔ ورنہ ہر کوئی اپنا نثر پارہ اپنے پسند کے موضوع پر لکھنے کے لیے آزاد ہے۔

    کسی بھی نثر پارے میں کوشش یہ کی جائے کہ بات آپ کی ہو
    اور پڑھنے والا یہ سمجھے کہ ۔ ۔ ۔ جو لفظ بھی وہ پڑھ رہا ہے اُس کی آواز اُس کے اپنے دل سے نکل رہی ہے۔ الفاظ کے چناؤ کی بات کی جائے تو آپ نے خوبصورت الفاظ کو جملوں میں پرو کر موسیقیت پیدا کرنے کی کوشش کریں۔ نثر پارہ سنجیدہ، مزاحیہ، رومانوی (نیچر لوو) یا اسلامی کسی بھی طرح ہو سکتا ہے۔

    مُقابلے کے قوانین:

    1۔ تحریر آپ کی ذاتی لکھی گئی ہو۔
    2۔ صرف اُردو میں لکھی گئی تحاریر ہی شاملِ مُقابلہ ہوں گی۔
    3۔ ایک ممبر زیادہ سے زیادہ دو تحاریر شامل کر سکتا ہے۔
    4۔ تحریر مُناسب سائز میں ہو۔ 10 سطروں سے کم کی تحریر مُقابلے میں شامل نہ ہو پائے گی۔
    5۔ ججز کا فیصلہ حتمی اور ناقابلِ اعتراض ہو گا۔

    انعاماتۛ

    پہلا انعام 1000 پوائنٹس۔
    دوسرا انعام 700 پوائنٹس۔
    تیسرا انعام 500 پوائنٹس۔
    تمام شامل ہونے والوں کے لیے 100 پوائنٹس کا تحفہ۔



    تحریر جمع کروانے کی آخری تاریخ 25 مارچ ہے۔



    آپ سب کی شمولیت کا انتظار رہے گا۔


    نوٹ: اگر کچھ لوگ اپنی تحریر جمع کروانے سے ہچکچائیں تو وہ اپنی تحریر مجھے بطور پرسنل میسج میں بھیج دیں۔ وہ اُن کے نام کے بغیر مُقابلے میں شامل ہو جائے گی۔ بعد میں اگر وہ چاہیں تو جب مرضی بتانے کے لیے آزاد ہیں کہ وہ اُن کی تحریر ہے۔ شُکریہ

    [SIGPIC][/SIGPIC]

  2. #2

  3. #3
    Section Managers

    Join Date
    Jul 2007
    Posts
    27,433
    Mentioned
    1 Post(s)
    Tagged
    1 Thread(s)

    Re: نثری تحریروں کا مُقابلہ

    نمونے کے طور پر لکھا جانے والا پہلا نثر پارہ میری طرف سے۔



    یادیں


    یہ زندگی ایک مسافت ہے اور انسان اس کا راہی ہے۔ جب انسان یہ مُسافت طے کرنے نکلتا ہے تو اُس کے سامنے بہت سی راہیں آتی ہیں۔ ۔ اُن راہوں میں ان گِنت موڑ۔ ان بے شمار راہوں اور موڑ میں کچھ تو انسان کو اُس کی منزل کی طرف لے جاتی ہیں اور کچھ اُسے اُس کی منزل سے بھٹکا بھی دیتی ہیں۔

    لیکن کبھی کبھی اِن راہوں میں ایک تیسری قسم کی راہ بھی آ جاتی ہے۔ جس پر آپ صرف کچھ لمحوں کے لیے چلتے ہو اور واپس اپنی راہ پر آ جاتے ہو۔ جیسے صُبح کی سیر کے لیے ایک جاگنگ ٹریک ہوتا ہے۔ ہم سارا وقت اُس پر چلتے رہتے ہیں۔ لیکن کبھی اچانک جب باغ میں کسی خُوبصورت پھول پر نظر پڑے تو ہم اپنے اصل ٹریک سے اُتر کر اُس کے پاس پہنچ جاتے ہیں۔ صرف چند ثانیوں کے لیئے اُسے دیکھنے۔ ۔ ۔چُھونے۔ ۔ ۔یا اُسے توڑ کر اپنا بنا لینے کو۔ اور پھر واپس اپنے ٹریک پر آ جاتے ہیں۔ یہ ایک ذرا سا فعل ہمیں ایک انجانی سی خوشی دے جاتا ہے۔ وہ سارا دن ہماری اُس ایک چھوٹی سی حرکت ایک چھوٹی سی distraction کی وجہ سے بہت اچھا گُزرتا ہے۔ ہم اپنے اس فعل کو سوچتے ہیں مُسکراتے ہیں اور پھر اپنے کام میں مگن ہو جاتے ہیں۔

    یہ ہوتی ہیں یادیں۔ خوشگوار یادیں۔ انسان کو اس زندگی میں دو طرح کی یادیں ملتی ہیں۔ خوشگوار بھی۔ ۔ تلخ بھی۔ ۔ ۔ جیسے پچھلی مثال کو ہی لیں تو ہو سکتا ہے پُھول توڑتے وقت آپ کے ہاتھ میں کانٹا چُبھ جائے۔ پھر کُچھ لوگ ایسے ہوتے ہیں جو پُھول پانے پر ملنے والی خوشی کو فراموش کر کے اپنی تکلیف کے احساس کے ساتھ آگے بڑھ جاتے ہیں۔ اور کچھ لوگ اپنی تکلیف کو بُھلا کر خوبصورت یادیں اپنے دامن کے ساتھ باندھ لیتے ہیں۔

    یہی کہانی ہے انسان کی۔ زندگی آپ کو ہر طرح کی یاد دیتی ہے۔ اب یہ انسانوں پر ہے کہ وہ کس یاد کو اپنی تنہائیوں کا ساتھی بنائے۔ تکلیف دہ یاد کو یا خُوبصورت احساس خُوبصورت یاد کو۔



    [SIGPIC][/SIGPIC]

  4. #4
    Section Managers

    Join Date
    Aug 2008
    Posts
    19,779
    Mentioned
    1 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: نثری تحریروں کا مُقابلہ

    Quote Originally Posted by Wish View Post
    نمونے کے طور پر لکھا جانے والا پہلا نثر پارہ میری طرف سے۔



    یادیں


    یہ زندگی ایک مسافت ہے اور انسان اس کا راہی ہے۔ جب انسان یہ مُسافت طے کرنے نکلتا ہے تو اُس کے سامنے بہت سی راہیں آتی ہیں۔ ۔ اُن راہوں میں ان گِنت موڑ۔ ان بے شمار راہوں اور موڑ میں کچھ تو انسان کو اُس کی منزل کی طرف لے جاتی ہیں اور کچھ اُسے اُس کی منزل سے بھٹکا بھی دیتی ہیں۔




    وش بہت خوب بہت اچھا لکھا ہے
    بہت مختصر الفاظ میں بہت بڑی بات کو بیاں کردیا ویلڈن ڈیئر

  5. #5
    Section Managers

    Join Date
    Jul 2007
    Posts
    27,433
    Mentioned
    1 Post(s)
    Tagged
    1 Thread(s)

    Re: نثری تحریروں کا مُقابلہ

    Quote Originally Posted by Raising Moon View Post
    وش بہت خوب بہت اچھا لکھا ہے
    بہت مختصر الفاظ میں بہت بڑی بات کو بیاں کردیا ویلڈن ڈیئر


    بہت شُکریہ مون۔ ۔ ۔
    تمھارے بھی کسی ایسے بیان کا انتظار رہے گا۔ ۔ ۔
    کیا خیال ہے پھر؟

    [SIGPIC][/SIGPIC]

  6. #6
    Sisters Society

    Join Date
    Apr 2008
    Posts
    21,589
    Mentioned
    4 Post(s)
    Tagged
    1 Thread(s)

    Re: نثری تحریروں کا مُقابلہ

    Quote Originally Posted by Wish View Post
    نمونے کے طور پر لکھا جانے والا پہلا نثر پارہ میری طرف سے۔





    یادیں


    یہ زندگی ایک مسافت ہے اور انسان اس کا راہی ہے۔ جب انسان یہ مُسافت طے کرنے نکلتا ہے تو اُس کے سامنے بہت سی راہیں آتی ہیں۔ ۔ اُن راہوں میں ان گِنت موڑ۔ ان بے شمار راہوں اور موڑ میں کچھ تو انسان کو اُس کی منزل کی طرف لے جاتی ہیں اور کچھ اُسے اُس کی منزل سے بھٹکا بھی دیتی ہیں۔



    واؤ بہت نائس ماشی
    یادیں کہاں سے کہاں لے جاتی ہیں
    A winner listens, a loser just waits untill it is their turn to talk!!!

  7. #7
    Section Managers

    Join Date
    Jul 2007
    Posts
    27,433
    Mentioned
    1 Post(s)
    Tagged
    1 Thread(s)

    Re: نثری تحریروں کا مُقابلہ

    Quote Originally Posted by گل رعنا View Post
    واؤ بہت نائس ماشی
    یادیں کہاں سے کہاں لے جاتی ہیں


    تھینکسس سس۔ ۔ ۔
    کہ آپ نے پڑھا اور پسند کیا۔

    [SIGPIC][/SIGPIC]

  8. #8
    Section Managers

    Join Date
    Feb 2008
    Posts
    20,573
    Mentioned
    2 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: نثری تحریروں کا مُقابلہ

    وش سس یہ کیا "یادیں" موضوع ہے

    آپکی تحریر بھی زبردست رہی سس۔۔

  9. #9
    Sisters Society

    Join Date
    Feb 2008
    Location
    CA, USA
    Posts
    16,003
    Blog Entries
    2
    Mentioned
    2 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: نثری تحریروں کا مُقابلہ

    یادیں
    وش آپکی ہمت کی داد دینی پڑتی ہے۔ ایک مقابلہ ابھی پوری طرح سے سمٹا نہیں اور آپ ایک نئے کام کا بیڑہ اٹھائے حاضر۔۔۔۔اللہ آپکو کامیابیاں دے، آمین۔

    بہت اچھے اسلوب میں آپ نے یادوں کو بیان کیا اور نئے لکھنے والوں کیلئے پیچیدہ کی بجائے ایک عام فہم تحریر پیش کی۔ بہت خوب!





    The most common way people give up their power


    is by thinking they don't have any.


    ~ Alice Walker ~


    Courage is like a muscle.


    We strengthen it with use.


    ~ Ruth Gordon ~

  10. #10
    Senior Member

    Join Date
    Nov 2009
    Posts
    771
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: نثری تحریروں کا مُقابلہ

    امید کے جگنو


    کبھی کبھی ہوتا ہے نا کہ ہم خوش اور مگن ہوتے ہوئے بھی مطمئن نہیں ہوپاتے۔ زندگی ایک دائرے میں گھومتی محسوس ہوتی ہے اور تب ایک انجانی سی تھکن وجود کو اپنے حصار میں لے لیتی ہے۔ ہر سفر بے سمت، ہر کام بے معنی سا لگنے لگتا ہے۔ انہی سوچوں میں گھرا دیکھ کر مایوسی اپنے پر پھیلاتی ہے اور ناامیدی ہمارے دل و دماغ پر اپنے پنجے گاڑھ لیتی ہے۔ ناامیدی ہم سے وہ معمولی خوشیاں بھی چھین لیتی ہے جو ہر ابھرتے سورج کے ساتھ ہمیں چلتے رہنے کی ہمت دیا کرتی ہیں۔ بے انتہا شور میں گھرے ہوئے بھی ہمیں اپنے اندر صرف ایک مہیب سناٹا سنائی دیتا ہے۔ ۔ ۔ رونشیوں کی چکاچوند میں بھی ہر طرف اندھیرا چھاتا محسوس ہوتا ہے مگر اس اندھیرے میں بھی امید کے جگنو راستہ دکھانے کی طاقت رکھتے ہیں۔ بالکل اس کہانی کی طرح جس میں اندھیری رات میں بھٹکتے بلبل کو جگنو نے راستہ دکھایا تھا۔ امید کے جگنو زندگی کے بے مقصد دائروں میں بھٹکتے تھکن زدہ انسان کے ہاتھ تھامتے ہیں اور ناامیدی سے امید تک کا سفر طے کرواجاتے ہیں۔ سوچیں تو حیران رہ جائیں کہ ان معمولی، چھوٹی سی جانوں میں اتنی طاقت کہاں سے آجاتی ہے کہ یہ میلوں پھیلے سناٹے کو اپنی ذرّوں جیسی روشنی سے چیرنے میں کامیاب ہوجاتے ہیں۔ یہ طاقت انہیں امید دیتی ہے۔ امید انہیں یقین بخشتی ہے کہ اجالا کتنا ہی معمولی کیوں نہ ہو، اندھیرے پر حاوی ہونے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ جیسے کالی رات میں سورج کی پہلی ننھی سی کرن کچھ سہمی ہوئی سی آگے بڑھنے سے گھبراتی ہے تو امید کے جگنو اس کے ہاتھ تھام کر اسے بھی اس خوف سے نکال لاتے ہیں۔ پھر اسے دیکھتے دیکھتے سورج کی بہت سی کرنیں اندھیرے کو اجالے میں بدلنے میں اس کے ساتھ آکھڑی ہوتی ہیں۔ اصل ہمت پہلی کرن کو کرنی ہوتی ہے۔ ۔ ۔ دقت کا سامنا اس پہلی کرن کو کرنا پڑتا ہے، مگر پھر امید کے جگنوؤں کے سہارے یہ آگے بڑھتی چلی جاتی ہے اور اس اندھیرے سے اجالے کے سفر میں بہت سی کرنیں اس کی ہم سفر ہوجاتی ہیں۔ اندھیرا جتنا بھی گہرا ہو، امید کے جگنو اس اندھیرے کو اجالے میں تبدیل کرسکتے ہیں۔ ضرورت صرف ان پر اعتماد کرنے کی ہے۔ ہاتھ بڑھائیے اور امید کے جگنوؤں کے بڑھے ہاتھ تھام کر ان کے ساتھ اجالے کے سفر میں شامل ہوجائیں۔ ۔ ۔ زندگی بہت با مقصد لگنے لگے گی۔
    A little knowledge that acts is worth infinitely more than much knowledge that is idle. (Kahlil Gibran)

  11. #11
    Section Managers

    Join Date
    Jul 2007
    Posts
    27,433
    Mentioned
    1 Post(s)
    Tagged
    1 Thread(s)

    Re: نثری تحریروں کا مُقابلہ

    Quote Originally Posted by حرا قریشی View Post
    امید کے جگنو


    رونشیوں کی چکاچوند میں بھی ہر طرف اندھیرا چھاتا محسوس ہوتا ہے مگر اس اندھیرے میں بھی امید کے جگنو راستہ دکھانے کی طاقت رکھتے ہیں۔ بالکل اس کہانی کی طرح جس میں اندھیری رات میں بھٹکتے بلبل کو جگنو نے راستہ دکھایا تھا۔
    ۔
    ۔
    ۔
    ۔

    اندھیرا جتنا بھی گہرا ہو، امید کے جگنو اس اندھیرے کو اجالے میں تبدیل کرسکتے ہیں۔ ضرورت صرف ان پر اعتماد کرنے کی ہے۔ ہاتھ بڑھائیے اور امید کے جگنوؤں کے بڑھے ہاتھ تھام کر ان کے ساتھ اجالے کے سفر میں شامل ہوجائیں۔ ۔ ۔ زندگی بہت با مقصد لگنے لگے گی۔


    بہت خُوبصورت حِرا۔ آپ تو ماشاء اللہ ریگولر لکھنے والوں میں سے ہو۔ اور پڑھ کر احساس ہی ہوتا ہے کہ کسی منجھے ہوئے نے قلم اُٹھایا ہے۔
    بہت خُوبصورتی اور ماہری سے یہ پیغام آپ نے سب تک پہنچایا کہ انسان جتنا بھی مایوسیوں کے بادلوں میں گِھرا رہے there is always a silver lining.

    آپ نے اس مُقابلے کے لیے کچھ لکھا، بہت اچھا لگا۔
    لکھتی رہیں۔ خوش رہیں۔

    [SIGPIC][/SIGPIC]

  12. #12
    Section Managers

    Join Date
    Jul 2007
    Posts
    27,433
    Mentioned
    1 Post(s)
    Tagged
    1 Thread(s)

    Re: نثری تحریروں کا مُقابلہ

    Quote Originally Posted by Fozan View Post
    یادیں
    وش آپکی ہمت کی داد دینی پڑتی ہے۔ ایک مقابلہ ابھی پوری طرح سے سمٹا نہیں اور آپ ایک نئے کام کا بیڑہ اٹھائے حاضر۔۔۔۔اللہ آپکو کامیابیاں دے، آمین۔

    بہت اچھے اسلوب میں آپ نے یادوں کو بیان کیا اور نئے لکھنے والوں کیلئے پیچیدہ کی بجائے ایک عام فہم تحریر پیش کی۔ بہت خوب!


    بہت شُکریہ فوزان سس۔
    افسانوی مقابلے میں مجھے محسوس ہوا کہ فورم پر کچھ ایسے لوگوں کا گروپ بھی ہے جو لکھنا چاہتا ہے۔ یا لکھ سکتا ہے۔ لیکن پہلی کوشش کے لیے افسانہ ایک بہت بڑی چیز ہے۔ پہلے صرف سوچ کو لفظوں میں ڈھالنے کی پریکٹس کی ضرورت ہے۔ اُس کے لیے یہ مُقابلہ شروع کر لیا۔ کہ وہ تو اب ختم ہو گیا تو فارغ کیوں بیٹھنا۔ دیکھیں نا اسی طرح باقیوں کے ساتھ ساتھ ہماری تحریروں میں بھی ایک ایک تحریر کا اضافہ ہو گیا۔ اور کئیوں کی تحریر وجود میں آ گئی۔ آج دوسرے دن ہی میں اس تھریڈ کی بدولت دو نئے مصنف ڈھونڈ پائی۔
    ان شاء آگے مزید کا بھی امکان ہے۔ کوشش سب کو ہی کرنی چاہیے۔ کوئی کام تب تک ہی مُشکل ہوتا ہے جب تک اس کے لیے کوشش نہ کی جائے اور بیٹھ کر سوچا جائے کہ ہائے یہ کام تو بڑا مشکل ہے۔
    اور میں اس مقابلے میں بھی تمام افسانہ گروپ کے تعاون کی اُمید رکھتی ہوں۔ کہ آگے بڑھیں اور ون اُردو سے ٹیلنٹ ہو ہنٹ کریں۔


    شُکریہ



    [SIGPIC][/SIGPIC]

Bookmarks

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •