Thanks Thanks:  0
Likes Likes:  0
Results 1 to 5 of 5

Thread: بچوں میں ADD

  1. #1
    Durre Nayab
    Guest

    بچوں میں ADD

    عموماْ دیکھا گیا ہے کہ یہ بہت ہائیپر ہوتے ہیں اور ان کو کسی کام یا چیز کے لئے رضا مند کرنا جوءے شیر لانے کے برابر ہوتا ہے۔ ان کو روز مرہ کے اپنے کام یعنی برش کرنا ، بال بنانا بھی یاد دلانا پڑتا ہے۔ اس سلسے میں کیا کیا جاسکتا ہے۔
    دوسرا پوزیٹو طریقے سے بیہیویر کیسے مینیج کریں کہ وہ زیادہ اسٹریس بھی محسوس نہ کریں۔
    دیکھا گیا ہے کہ اےڈی ڈی والے بچے انٹی سوشل ہوتے ہیں اس کی وجہ وہ خود نہیں بلکہ دوسرے نارمل بچوں کا ان کے ساتھ رویہ انہیں ایسا کرنے پر مجبور کرتا ہے۔ اور بعد میں تھوڑے بڑے ہوتے ہیں تو اپنے آپ کو گھر کے ماحول میں ہی سیکیورڈ فیل کرتے ہیں۔ اس طرح کی سیچویشن میں کیا کرنا چاہیئے؟

  2. #2
    Senior Member

    Join Date
    Jan 2009
    Posts
    1,577
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: نوشین قریشی سے سوال: ADD

    Quote Originally Posted by Durre Nayab View Post
    عموماْ دیکھا گیا ہے کہ یہ بہت ہائیپر ہوتے ہیں اور ان کو کسی کام یا چیز کے لئے رضا مند کرنا جوءے شیر لانے کے برابر ہوتا ہے۔ ان کو روز مرہ کے اپنے کام یعنی برش کرنا ، بال بنانا بھی یاد دلانا پڑتا ہے۔ اس سلسے میں کیا کیا جاسکتا ہے۔
    دوسرا پوزیٹو طریقے سے بیہیویر کیسے مینیج کریں کہ وہ زیادہ اسٹریس بھی محسوس نہ کریں۔
    دیکھا گیا ہے کہ اےڈی ڈی والے بچے انٹی سوشل ہوتے ہیں اس کی وجہ وہ خود نہیں بلکہ دوسرے نارمل بچوں کا ان کے ساتھ رویہ انہیں ایسا کرنے پر مجبور کرتا ہے۔ اور بعد میں تھوڑے بڑے ہوتے ہیں تو اپنے آپ کو گھر کے ماحول میں ہی سیکیورڈ فیل کرتے ہیں۔ اس طرح کی سیچویشن میں کیا کرنا چاہیئے؟
    سب سے ضروری چیز اس کی تشخیص ہے، ہمارا المیہ یہ ہے کہ ہم اس چیز کو
    عام طور پر محسوس ہی نہیں کرتے کے بچہ کسی قسم کے نفسیاتی مسائل کا شکار ہو رہا ہے،
    اگر وہ کلاس میں دلچسپی نہیں لے رہا تو یہ معلوم کرنے کی زخمت ہی نہیں کی جاتی کہ اس سب کے پیچھے کیا محرک ہے، جیسا کہ میں نے پہلے بتایا ان بچوں کو خصوصی توجہ کی ضرورت ہوتی ہے، ان کے رویہ میں مثبت تبدیلی لانا ایک چیلنج ہوتا ہے، جس کے لئے
    consistancy
    کی ضرورت ہے،
    ادویات اور سائیکوتھراپی دونوں چیزوں سے علاج میں مدد لی جاتی ہے، اسی سے مزاج میں اعتدال لایا جاتا ہے، ان بچوں کے رویہ میں گھر اور سکول دونوں جگہ تبدیلی کی کوشش کی جاتی ہے، انھیں اپنا خیال رکھنا سکھانا پڑتا ہے، اس کے لئے مختلف طرح کے
    rewards, reinforcements
    استعمال کئے جاتے ہیں لیکن ان کے انتخاب میں یہ خیال رکھنا ضروری ہے کہ وہ ان کیلئے کیا اہمیت رکھتے ہے اگر اس کے لئے ان چیزوں کی اہمیت نہیں ہو گی تو وہ تبدیلی کی کوشش بھی نہیں کرے گا
    اگر کسی نارمل انسان کو بھی کسی بات پر ٹوکا جائے تو وہ اچھا محسوس نہیں کرتا وہ تو پھر خصوصی زہنیت کے حامل ہوتے ہیں انہیں پہلے بہت پیار سے اپنے ساتھ کام کرنے پر آمادہ کیا جاتا ہے، ان سے اپنی منوانے کیلئے آپ کو بھی تھوڑا بہت سمجھوتا کرنا پڑتا ہے

    ان پر بہت زیادہ روک ٹوک کر کے ہم ان کا شخصی اعتماد ختم کر دیتے ہیں اس طرح وہ لوگوں کا سامنا کرنے سے گھبرانے لگتے ہیں ، ان کا خود پر اعتماد بحال کر کے آپ انہیں معاشرے میں رہنے کا انداز سکھا سکتے ہیں

    ایسے کام ان کو دئے جائیں جس میں کم وقت اور توجہ درکار ہو تو یہ اسے بہتر طور پر کر پاتے ہیں

  3. #3
    Durre Nayab
    Guest

    Re: نوشین قریشی سے سوال: ADD

    بہت شکریہ نوشین آپ نے بہت تفصیل سے اس کی وضاحت کی ہے اور اردو میں لکھنے پر تو ڈبل تھینکس، امید ہے آئندہ بھی اردو میں ہی لکھتی رہیں گی۔

  4. #4
    Senior Member

    Join Date
    Dec 2008
    Posts
    430
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: نوشین قریشی سے سوال: ADD

    Add kya hai kis ka abrivation hai mujhay samjh nain ayee kya batiya gay aap plz pahlay tu mai samjh shaid aids lakin yea nahi kya add ka explain karay ge

  5. #5
    Senior Member

    Join Date
    Jan 2009
    Posts
    1,577
    Mentioned
    0 Post(s)
    Tagged
    0 Thread(s)

    Re: بچوں میں ADD

    ADD..........Attention Deficit Disorder ab isay ADHD......Attention Deficit Hyperactivity Disorder kay naam say jana jata hay, tafsilat kay liyay ye link dekhay

    http://www.oneurdu.com/forums/showthread.php?t=41346

Bookmarks

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •