View RSS Feed

Pardaisi

یہ بارشیں بھی تم سی ہیں

Rate this Entry
یہ بارشیں بھی تم سی ہیں
جو برس گئی تو بہار ہے
جو ٹھہر گئی تو قرار ہیں
کبھی آگئی یونہی بےسبب
کبھی چھا گئی یونہی روز و شب
کبھی شور ہیں کبھی چپ سی ہیں
یہ بارشیں بھی تم سی ہیں
کسی یاد میں کسی رات کو
اک دبی ہوئی سی راکھ کو
کبھی یوں ہُوا کہ بُجھا دیا
کبھی خود سے خود کو جلا دِیا
کبھی بُوند بُوند میں گُم سِی ہیں
یہ بارشیں بھی تم سی ہیں

Submit "یہ بارشیں بھی تم سی ہیں" to Digg Submit "یہ بارشیں بھی تم سی ہیں" to del.icio.us Submit "یہ بارشیں بھی تم سی ہیں" to StumbleUpon Submit "یہ بارشیں بھی تم سی ہیں" to Google

Categories
Uncategorized

Comments