PDA

View Full Version : تنخواہ دار مولوی



وقار عظیم
23-06-2017, 06:39 AM
ایک جانب امام احمد بن حنبل رحمة اللہ علیہ تھے جنھوں نے قید کی صعوبتیں برداشت کر لیں۔۔ننگی پیٹھ پر کوڑے کھا لیے لیکن ظالم حکمرانوں کی مرضی کا فتویٰ نہ دیا۔۔
دوسری جانب حرمین کے یہ تنخواہ دار آئمہ کرام ہیں جو حرام ہے ایک لفظ بھی اپنی ظالم حکومت کے خلاف بول دیں۔۔
سعودی بمباری کی وجہ سے یمن دو سو سال پیچھے چلا گیا ہے۔۔اب وہاں کھنڈرات ہیں۔۔اٹھائیس لاکھ لوگ بشمول بچے فاقہ کشی کا شکار ہیں۔۔اور یہ ستائیسویں رات کو رو رو کر یہود و نصاری کی تباہی کی دعائیں مانگ رہے ہیں۔۔

Abdullah
23-06-2017, 10:39 PM
وقار بھائی خوب دلچسپ اور قابل گفتگو موضوع چھیڑا ہے، خیر بے فکر ہو رہیں فورم سو رہا ہے۔

وقار عظیم
23-06-2017, 11:54 PM
وقار بھائی خوب دلچسپ اور قابل گفتگو موضوع چھیڑا ہے، خیر بے فکر ہو رہیں فورم سو رہا ہے۔
ہاہاہاہااہا
سوچا تھا شاید کوئی نیند سے جاگ جائے اور "خادمین حرمین شریفن " کے دفاع کو آجائے اور دلچسپ مکالمہ ہو

ابو لبابہ
24-06-2017, 12:09 AM
بالکل بے فکر رہیں۔ کوئی خادم حرمین کے دفاع میں نہیں آئے گا کیونکہ قوم کی طرح فورم پر بھی سب سو رہے ہیں۔

Paasha
27-06-2017, 05:15 AM
میرا دل تو بہت کرتا رہا ہے کہ یہاں اس موضوع پر تھریڈ بناتی لیکن اس لیے چُپ رہی کہ اکثریت کے لیے السعود اور سعودی عرب مقدس گائے ہیں۔ چونکہ مکہ اور مدینہ بدقسمتی سے ان کے قبضے میں اس لیے ان کے ہر طرح کے قصور معاف ہیں۔
جنت ان کی جہنم باقی دُنیا کی۔ یمن کو تباہ کر دیا ہے۔ شام کو تباہ کرنے میں مدد کر رہے ہیں۔ فلسطینوں کے خُون کی قیمت وصول کر رہے ہیں۔ اپنا دہشت گرد پاکستان کی گود میں ڈال دیا، ان کے حصے کا گند بھی پاکستان صاف کر رہا ہے اور چھتر بھی ہنسی خُوشی کھا رہا ہے اور اُمت مسلمہ واقعی ابھی تک سو رہی ہے، ایران کو چھوڑ کر۔ وہ اپنے ہی ایجنڈے پر کام کر رہے ہیں۔

وقار عظیم
27-06-2017, 03:26 PM
میرا دل تو بہت کرتا رہا ہے کہ یہاں اس موضوع پر تھریڈ بناتی لیکن اس لیے چُپ رہی کہ اکثریت کے لیے السعود اور سعودی عرب مقدس گائے ہیں۔ چونکہ مکہ اور مدینہ بدقسمتی سے ان کے قبضے میں اس لیے ان کے ہر طرح کے قصور معاف ہیں۔
جنت ان کی جہنم باقی دُنیا کی۔ یمن کو تباہ کر دیا ہے۔ شام کو تباہ کرنے میں مدد کر رہے ہیں۔ فلسطینوں کے خُون کی قیمت وصول کر رہے ہیں۔ اپنا دہشت گرد پاکستان کی گود میں ڈال دیا، ان کے حصے کا گند بھی پاکستان صاف کر رہا ہے اور چھتر بھی ہنسی خُوشی کھا رہا ہے اور اُمت مسلمہ واقعی ابھی تک سو رہی ہے، ایران کو چھوڑ کر۔ وہ اپنے ہی ایجنڈے پر کام کر رہے ہیں۔
خیر شام کے معاملے تو ایران بھی برابر کا قصور وار ہے
ایران پشت پر نہ ہوتا تو بشار الاسد اتنی دیر ٹک ہی نہ پاتا۔۔
باقی سعودیہ نے جو ایک ہفتہ قبل فیصلہ کیا ہے
سلیمان نے اپنے بیٹے کو اگلا بادشاہ بنانے کا اعلان کر دیا ہے
یہ ایک خطرناک فیصلہ ہے
بیٹا صاحب جنگوں کے کافی شوقین ہیں اور ٹرمپ کے کافی قریب

Sabih
27-06-2017, 10:59 PM
سعودی عرب کا قصور نہیں لگتا۔ ہاتھیوں کی لڑائی میں مینڈک پستے ہی ہیں۔ جیسے روس اور امریکا خود سامنے آئے بنا کبھی کوریا کبھی ویت نام کبھی مصر اور اسرائیل کی شکل میں اپنے اپنے مہرے آگے بڑھاتے رہتے ہیں ایسی ہی ایک سرد جنگ ایران اور سعودی عرب میں چلتی رہی جو کہ اس سے قبل نچلے لیول یا پراکسیز تک محدود تھی لیکن اب سعودی عرب کو شاید مجبورا زیادہ جارح پالیسی بنانی پڑی ہے جس کے تحت وہ اپنی سلطنت کے آس پاس کوئی بڑا مخالف نہیں چاہتا اور ہر دوسرے ملک کی طرح وہ بھی اپنی پالیسی ہر اویل ایبل طریقے سے لاگو کر رہا ہے۔

Just being devil's advocate here

Sabih
27-06-2017, 11:54 PM
ایک جانب امام احمد بن حنبل رحمة اللہ علیہ تھے جنھوں نے قید کی صعوبتیں برداشت کر لیں۔۔ننگی پیٹھ پر کوڑے کھا لیے لیکن ظالم حکمرانوں کی مرضی کا فتویٰ نہ دیا۔۔
دوسری جانب حرمین کے یہ تنخواہ دار آئمہ کرام ہیں جو حرام ہے ایک لفظ بھی اپنی ظالم حکومت کے خلاف بول دیں۔۔
سعودی بمباری کی وجہ سے یمن دو سو سال پیچھے چلا گیا ہے۔۔اب وہاں کھنڈرات ہیں۔۔اٹھائیس لاکھ لوگ بشمول بچے فاقہ کشی کا شکار ہیں۔۔اور یہ ستائیسویں رات کو رو رو کر یہود و نصاری کی تباہی کی دعائیں مانگ رہے ہیں۔۔


بغیر تنخواہ کے آئمہ آجکل خال خال ہی دکھائی دیتے ہیں۔ انہی مساجد کے امام سعودی حکومت کی اسرائیل پالیسی پر کافی کھل کر اختلاف کرتے رہے۔ اس لیے شاید انہیں اس انداز میں طعن و تشنیع کا ہدف بنانا ٹھیک نہ ہو۔

باقی رہ گئے یمن کے حالات تو جہاں باقاعدہ فوج یا باقاعدہ جنگ کی بجائے گوریلا اور ملیشیا جنگ آ جائے وہاں مقامی آبادی کا متاثر ہونا ایک ناگزیر عمل ہے۔ بلکہ اب تو باقاعدہ جنگ میں بھی اسے کنٹرول کرنا شاید ممکن نہیں۔ سرگودھا کے اڈے پر اگر حملہ ہو تو شہر متاثر نہ ہو یہ شاید ایک معجزہ ہی ہو۔ بہرحال ایک بھی ایک حقیقت ہے کہ آج کے دور اور عوام کو امام احمد بن حنبل سے کمپئیر کرنا بھی درست نہیں۔ تب فتوی دینے والے بھی الگ تھے اور فتوی کی ضرورت بھی الگ۔

وقار عظیم
28-06-2017, 04:10 AM
بغیر تنخواہ کے آئمہ آجکل خال خال ہی دکھائی دیتے ہیں۔ انہی مساجد کے امام سعودی حکومت کی اسرائیل پالیسی پر کافی کھل کر اختلاف کرتے رہے۔ اس لیے شاید انہیں اس انداز میں طعن و تشنیع کا ہدف بنانا ٹھیک نہ ہو۔

باقی رہ گئے یمن کے حالات تو جہاں باقاعدہ فوج یا باقاعدہ جنگ کی بجائے گوریلا اور ملیشیا جنگ آ جائے وہاں مقامی آبادی کا متاثر ہونا ایک ناگزیر عمل ہے۔ بلکہ اب تو باقاعدہ جنگ میں بھی اسے کنٹرول کرنا شاید ممکن نہیں۔ سرگودھا کے اڈے پر اگر حملہ ہو تو شہر متاثر نہ ہو یہ شاید ایک معجزہ ہی ہو۔ بہرحال ایک بھی ایک حقیقت ہے کہ آج کے دور اور عوام کو امام احمد بن حنبل سے کمپئیر کرنا بھی درست نہیں۔ تب فتوی دینے والے بھی الگ تھے اور فتوی کی ضرورت بھی الگ۔
وہ وقت گئے جب حرمین کے آئمہ سعودی پالیسی پر اعتراض کیا کرتے تھے۔۔۔
اخوان المسلین مصر کی عوام کے ووٹوں سے منتخب ہو کر آئے تھے
انھیں باقاعدہ جنرل سیسی نے غاصبانہ انداز میں تخت سے اتارا
سعودی حکومت نے جنرل سیسی کو خوش آمدید کہا
اخوان کو دہشت گرد قرار دے دیا
وہ جنرل سیسی اب جب بھی مکہ آتا ہے حرم کے تمام آئمہ لائن میں کھڑے ہو کر اس کا استقبال کرتے ہیں
کیا ان میں جرات ہے اپنی حکومت کے خلاف فتویٰ دیں؟
آپ کو علم ہے سعودی شیوخ نے اخوان المسلمین کے خلاف فتویٰ دے رکھا ہے انھیں گمراہ قرار دیا ہے
اور یمن میں جنگ چھیڑنے کی نوبت کیوں کر پیش آئی؟
اور آبادی صرف یمن کی ہی کیوں متاثر ہو رہی ہے
وہ جو بتیس اسلامی ممالک کی اتحادی فوج ہے وہ سعودیہ کی مدد کو ہی کیوں آتی ہے
وہ یمن کی مدد کو کیوں نہیں گئی؟

Sabih
30-06-2017, 11:15 AM
وہ وقت گئے جب حرمین کے آئمہ سعودی پالیسی پر اعتراض کیا کرتے تھے۔۔۔
اخوان المسلین مصر کی عوام کے ووٹوں سے منتخب ہو کر آئے تھے
انھیں باقاعدہ جنرل سیسی نے غاصبانہ انداز میں تخت سے اتارا
سعودی حکومت نے جنرل سیسی کو خوش آمدید کہا
اخوان کو دہشت گرد قرار دے دیا
وہ جنرل سیسی اب جب بھی مکہ آتا ہے حرم کے تمام آئمہ لائن میں کھڑے ہو کر اس کا استقبال کرتے ہیں
کیا ان میں جرات ہے اپنی حکومت کے خلاف فتویٰ دیں؟
آپ کو علم ہے سعودی شیوخ نے اخوان المسلمین کے خلاف فتویٰ دے رکھا ہے انھیں گمراہ قرار دیا ہے
اور یمن میں جنگ چھیڑنے کی نوبت کیوں کر پیش آئی؟
اور آبادی صرف یمن کی ہی کیوں متاثر ہو رہی ہے
وہ جو بتیس اسلامی ممالک کی اتحادی فوج ہے وہ سعودیہ کی مدد کو ہی کیوں آتی ہے
وہ یمن کی مدد کو کیوں نہیں گئی؟

یہ تعظیم کسی انسان سے زیادہ ایک عہدے کی ہوتی ہے میرے خیال میں. ضیاءالحق کو بھی پرٹوکول ملتا تھا اور بھٹو کو بھی. نواز شریف کو بھی ملتا تھا اور پھر مشرف کو بھی. اس لیے میرے نزدیک سوال کسی بندے کے عہدے کا آ جاتا ہے.

آپ کا سوال کہ جنگ کی نوبت کیوں آئی میرے نزدیک آپ کو مجھ سے زیادہ کلئیر ہے. کوئی بھی ملک اپنے دائرہ اثر میں کوئی بھی بڑا مخالف برداشت نہیں. خاص کر ایک ایسی طاقت جس پر وہاں کی حکومت کا کنٹرول نہ ہو. کسی بھی ملک میں اگر کوئی غیر سرکاری مسلح گروپ بن رہا ہو تو اس ملک کی حکومت کی ذمہ داری ہے کہ اس کا سدباب کرے لیکن اگر وہ مسلح گروہ حکومت کے کنٹرول سے نکل جائے یا حکومت پر حاوی آ جائے تو پڑوسی ممالک کے پاس دو ہی آپشن رہ جاتے ہیں کہ یا تو ایکشن لیں یا پھر اس شورش کے اپنے ہاں آ جانے کا انتظار کریں. جیسا کہ پاکستان نے کیا اور ابھی تک بھگت رہا ہے.

پھر ہر اسلحے کی ایک شیلف لائف ہوتی ہے. جس کے بعد وہ ایکسپائر ہو جاتا ہے. تب اسے بارود لگا کر اڑا دیا جاتا ہے. سعودی عرب جیسا ملک جو قریبا پچیس فیصد بجٹ فوجی سامان پر خرچ کرتا ہے. کیا اس کے لیے بہتر نہیں کہ وہ بجائے اس اسلحے کو تباہ کرنے کے کہیں استعمال کر لے. آخر اس کا کچھ کرنا تو ہے ہی نا.

یہی وجہ تھی شاید کہ امریکا نے کیوبا میں روسی میزائیل برداشت نہیں کیے اور روس یورپ میں امریکی ڈیفنس شیلڈ پر اعتراض کرتا رہتا ہے.

بتیس ممالک کی فوج ابھی آپریشنل نہیں میرے خیال میں. اور اسے اگر آپریشنل سمجھ بھی لیا جائے تو بھی کوئی غیر سرکاری فوج عرف عام میں دہشت گرد گروہ ہی سمجھا جائے گا میرے خیال میں.

پھر آپ نے امام احمد بن حنبل کا حوالہ دیا. میرے خیال میں وہ جس معاملے پر قید ہوئے وہ قرآن کریم کے مخلوق ہونے یا نہ ہونے کا تھا. جو کہ ایک بہت بڑا اور ایسا سوال تھا جس سے پوری مسلم دنیا متاثر ہوتی. تب خلافت بھی تھی. اب فتووں کو کون پوچھتا ہے.

وقار عظیم
30-06-2017, 03:05 PM
یہ تعظیم کسی انسان سے زیادہ ایک عہدے کی ہوتی ہے میرے خیال میں. ضیاءالحق کو بھی پرٹوکول ملتا تھا اور بھٹو کو بھی. نواز شریف کو بھی ملتا تھا اور پھر مشرف کو بھی. اس لیے میرے نزدیک سوال کسی بندے کے عہدے کا آ جاتا ہے.

آپ کا سوال کہ جنگ کی نوبت کیوں آئی میرے نزدیک آپ کو مجھ سے زیادہ کلئیر ہے. کوئی بھی ملک اپنے دائرہ اثر میں کوئی بھی بڑا مخالف برداشت نہیں. خاص کر ایک ایسی طاقت جس پر وہاں کی حکومت کا کنٹرول نہ ہو. کسی بھی ملک میں اگر کوئی غیر سرکاری مسلح گروپ بن رہا ہو تو اس ملک کی حکومت کی ذمہ داری ہے کہ اس کا سدباب کرے لیکن اگر وہ مسلح گروہ حکومت کے کنٹرول سے نکل جائے یا حکومت پر حاوی آ جائے تو پڑوسی ممالک کے پاس دو ہی آپشن رہ جاتے ہیں کہ یا تو ایکشن لیں یا پھر اس شورش کے اپنے ہاں آ جانے کا انتظار کریں. جیسا کہ پاکستان نے کیا اور ابھی تک بھگت رہا ہے.

پھر ہر اسلحے کی ایک شیلف لائف ہوتی ہے. جس کے بعد وہ ایکسپائر ہو جاتا ہے. تب اسے بارود لگا کر اڑا دیا جاتا ہے. سعودی عرب جیسا ملک جو قریبا پچیس فیصد بجٹ فوجی سامان پر خرچ کرتا ہے. کیا اس کے لیے بہتر نہیں کہ وہ بجائے اس اسلحے کو تباہ کرنے کے کہیں استعمال کر لے. آخر اس کا کچھ کرنا تو ہے ہی نا.

یہی وجہ تھی شاید کہ امریکا نے کیوبا میں روسی میزائیل برداشت نہیں کیے اور روس یورپ میں امریکی ڈیفنس شیلڈ پر اعتراض کرتا رہتا ہے.

بتیس ممالک کی فوج ابھی آپریشنل نہیں میرے خیال میں. اور اسے اگر آپریشنل سمجھ بھی لیا جائے تو بھی کوئی غیر سرکاری فوج عرف عام میں دہشت گرد گروہ ہی سمجھا جائے گا میرے خیال میں.

پھر آپ نے امام احمد بن حنبل کا حوالہ دیا. میرے خیال میں وہ جس معاملے پر قید ہوئے وہ قرآن کریم کے مخلوق ہونے یا نہ ہونے کا تھا. جو کہ ایک بہت بڑا اور ایسا سوال تھا جس سے پوری مسلم دنیا متاثر ہوتی. تب خلافت بھی تھی. اب فتووں کو کون پوچھتا ہے.

میرے دو بنیادی سوالات وہیں پر ہیں

اخوان المسلمین کو گمراہ قرار دینے کا فتویٰ کیوں دیا سعودی علمائے کرام نے؟
وہ عوامی طاقت سے جیتے تھے ۔۔۔اور ان کا جھکاو اسرائیل سے زیادہ فلسطین کی جانب تھا کیا یہی قصور تھا ان کا؟

دوسرا سوال
پاکستان میں جب فوجی زبردستی حکومت میں آتا ہے ساری دنیا کے مہذب ممالک پاکستان کو دھمکیاں بھی دیتے ہیں بائیکاٹ بھی کرتے ہیں کہ یہ حکومت میں آنے کا درست طریقہ نہیں۔۔۔مصر میں جب سیسی نے تختہ الٹا سعودیہ کو بجائے اس کئ لیے بانہیں پھیلانے کے اسے دھکمی دینی چاہیے تھی کہ عوامی مینڈیٹ کا احترام کریں۔۔
لیکن اس کو نا صرف بھرپور مدد فراہم کی گئی بلکہ اس کی پیٹھ بھی تھپکی گئی۔۔

کون سا خلیجی ملک ایسا نہیں ہے جہاں سعودیہ اپنے چوہدری ہونے کا ثبوت نہیں دیتا؟
قطر؟
بحرین؟
شام؟
عراق؟
مصر؟
یمن؟
امارات؟
ہر جگہ اپنی ناک گھسیڑی ہے اس نے

Paasha
30-06-2017, 03:42 PM
خیر شام کے معاملے تو ایران بھی برابر کا قصور وار ہے
ایران پشت پر نہ ہوتا تو بشار الاسد اتنی دیر ٹک ہی نہ پاتا۔۔
باقی سعودیہ نے جو ایک ہفتہ قبل فیصلہ کیا ہے
سلیمان نے اپنے بیٹے کو اگلا بادشاہ بنانے کا اعلان کر دیا ہے
یہ ایک خطرناک فیصلہ ہے
بیٹا صاحب جنگوں کے کافی شوقین ہیں اور ٹرمپ کے کافی قریب

جبھی تو کہا ہے کہ ایران اپنے ہی ایجنڈے پر کام کر رہا ہے۔
ٹرمپ اور اس کے چیلوں چمچوں کو شام میں موجود قدرتی ذخائر تک مُفت کا رستہ چاہیے ہے اور آنے والے وقت میں آپ دیکھیں گے کہ مڈل ایسٹ میں اسرائیل سُپر پاور اور سعودی عرب اس کا مُنشی ہوگا۔ ڈھکے چُھپے ہی سہی سعودی عرب نے اسرائیل سے تعلقات بنا لیے ہیں۔ مصر سے دو مین جزیرے اپنے ہاتھ میں لینے کا مقصد بھی یہی تھا۔
تیسرا کرتا دھرتا مُلک کردوں کا بھی جلد ہی وجود میں آجائے گا اور ان کے حصے میں جو ٹکڑا آنا ہے وہاں تیل یا گیس کے ذخائز بھی ڈھیروں ہوں گے۔

Paasha
30-06-2017, 03:47 PM
سعودی عرب کا قصور نہیں لگتا۔ ہاتھیوں کی لڑائی میں مینڈک پستے ہی ہیں۔ جیسے روس اور امریکا خود سامنے آئے بنا کبھی کوریا کبھی ویت نام کبھی مصر اور اسرائیل کی شکل میں اپنے اپنے مہرے آگے بڑھاتے رہتے ہیں ایسی ہی ایک سرد جنگ ایران اور سعودی عرب میں چلتی رہی جو کہ اس سے قبل نچلے لیول یا پراکسیز تک محدود تھی لیکن اب سعودی عرب کو شاید مجبورا زیادہ جارح پالیسی بنانی پڑی ہے جس کے تحت وہ اپنی سلطنت کے آس پاس کوئی بڑا مخالف نہیں چاہتا اور ہر دوسرے ملک کی طرح وہ بھی اپنی پالیسی ہر اویل ایبل طریقے سے لاگو کر رہا ہے۔

Just being devil's advocate here

سعودی عرب کا قصور نہیں لگتا؟ وضاحت کریں ذرا اس کی۔ اور یہ بات بُھول جائیں کہ اسرائیل کسی کا مہرہ بن سکتا ہے۔ اسرائیل کی بساط بچھتی ہے اور مہرے سعودی عرب اور السعود جیسے بنتے ہیں جو مجبورا” نہیں مرضی سے بنتے ہیں کیونکہ بہتی گنگا میں ہاتھ دھونے کا موقع جو ملے گا ان کو۔

Sabih
30-06-2017, 09:55 PM
میرے دو بنیادی سوالات وہیں پر ہیں

اخوان المسلمین کو گمراہ قرار دینے کا فتویٰ کیوں دیا سعودی علمائے کرام نے؟
وہ عوامی طاقت سے جیتے تھے ۔۔۔اور ان کا جھکاو اسرائیل سے زیادہ فلسطین کی جانب تھا کیا یہی قصور تھا ان کا؟

دوسرا سوال
پاکستان میں جب فوجی زبردستی حکومت میں آتا ہے ساری دنیا کے مہذب ممالک پاکستان کو دھمکیاں بھی دیتے ہیں بائیکاٹ بھی کرتے ہیں کہ یہ حکومت میں آنے کا درست طریقہ نہیں۔۔۔مصر میں جب سیسی نے تختہ الٹا سعودیہ کو بجائے اس کئ لیے بانہیں پھیلانے کے اسے دھکمی دینی چاہیے تھی کہ عوامی مینڈیٹ کا احترام کریں۔۔
لیکن اس کو نا صرف بھرپور مدد فراہم کی گئی بلکہ اس کی پیٹھ بھی تھپکی گئی۔۔

کون سا خلیجی ملک ایسا نہیں ہے جہاں سعودیہ اپنے چوہدری ہونے کا ثبوت نہیں دیتا؟
قطر؟
بحرین؟
شام؟
عراق؟
مصر؟
یمن؟
امارات؟
ہر جگہ اپنی ناک گھسیڑی ہے اس نے
اخوان المسلمون کی گمراہی پر میں کمنٹ کرنے سے قاصر ہوں کیونکہ مذہبی معاملات پر میری نہ تو گرفت ہے نہ حوصلہ۔

ہاں سیاسی حالات کے مطابق عوام کا ہی ایک حصہ تھا جس نے گھیراو کر کے حسنی مبارک کو نکلنے پر مجبور کیا اور فوج کی حکمران کونسل بنی۔ اور عوام کا ہی ایک حصہ تھا جس نے یہی قدم مرسی کے خلاف اٹھایا۔ اگر میڈیا رپورٹنگ دیکھی جائے تو مرسی کے خلاف بھی کم عوام نہیں نکلی تھی۔ لیکن حسنی مبارک کے جانے کو عوام کی فتح جبکہ مرسی کے جانے کو فوج کی زیادتی کہا جاتا ہے۔ سیاسی طور پر دونوں حکومتیں اپنے اپنے ایجنڈے پر تھیں۔

یار عوام کونسی اور مینڈیٹ کونسا۔ یہ سب کتابی بیانات ہیں جو ایسے کسی واقعے کے بعد ہر ملک بس ایشو کر دیتا ہے۔ پاکستان کا کونسا ڈکٹیٹر "مہذب ممالک" کی آنکھ کا تارا نہیں رہا۔ عرب ممالک کے بادشاہ آج بھی انہیں پیارے ہیں۔ بس ایک دم چھلا چاہئیے ہوتا ہے چاہے مشرف کے ریفرنڈم کی شکل میں ہو یا ضیاالحق کے الیکشنز کی شکل میں۔

چوہدری وہی ہوتا ہے جو کچھ منوا لینے کی طاقت رکھتا ہو۔ اور ایسا ہر ملک اپنے اپنے دائرہ اختیار میں چوہدراہٹ اکثر دکھاتا نظر بھی آتا ہے۔ اور اس چوہدراہٹ کا کبھی اچھا اثر بھی ہو سکتا ہے اور کبھی برا بھی۔ لیکن اپنے اپنے اختیار کے اندر ہر کوئی چوہدری ہے۔

Sabih
30-06-2017, 10:11 PM
سعودی عرب کا قصور نہیں لگتا؟ وضاحت کریں ذرا اس کی۔ اور یہ بات بُھول جائیں کہ اسرائیل کسی کا مہرہ بن سکتا ہے۔ اسرائیل کی بساط بچھتی ہے اور مہرے سعودی عرب اور السعود جیسے بنتے ہیں جو مجبورا” نہیں مرضی سے بنتے ہیں کیونکہ بہتی گنگا میں ہاتھ دھونے کا موقع جو ملے گا ان کو۔
بات ایویں نہیں بھولے گی آپ کو ڈایاگون ایلی میں جا کر اولیوینڈر سے ایک وانڈ لینا ہو گا پھر میرے سر کی جانب پوائنٹ کر کے
Obliviate
کا نعرہ لگانا پڑے گا۔
:rolleyes:

بہت سے معاملات ایسے بھی ہیں جہاں اسرائیل کو زک اٹھانی پڑی۔ لیکن وہ ایک الگ ٹاپک ہے۔

سعودی عرب ایک بڑا ملک ہے اس خطے کا۔ اس کے پڑوس میں کیا ہو رہا ہے یہ ہر ملک کے لیے ایسے ہی اہم ہے جیسے امریکا یا دیگر ممالک میں نیبرہڈ واچ کا کانسپٹ رکھا جاتا ہے۔ اگر کوئی ملک اپنے پڑوس میں کوئی ایسی تبدیلی دیکھتا ہے جس سے اسے ڈر ہو کہ وہ اس کے اپنے علاقوں تک پھیل جائے گی تو وہ اس پر وہاں کی حکومت سے رابطہ کرتا ہے لیکن اگر دوسرے ملک کی حکومت اتنی کمزور ہو چکی ہو یا اس پر کوئی دوسرا مسلح گروہ حاوی ہو کر اسے عملا برخاست کر چکا ہو تب اس ملک کے پاس دو ہی آپشن ہوتے ہیں کہ یا تو خود آگے بڑھ کر مدخلت کرے یا چپ بیٹھا اللہ سے دعا کرے کہ کن ٹٹے اپنے ملک تک ہی محدود رہیں۔ سعودی عرب کے پاس طاقت تھی اس لیے اس نے پہلا آپشن استعمال کیا۔ ہمارے جیسا کوئی غریب ملک ہوتا تو افغانستان کا بارڈر تک نہ بند کر پاتا۔

Ahsan_Yaz
30-06-2017, 11:43 PM
ایک جانب امام احمد بن حنبل رحمة اللہ علیہ تھے جنھوں نے قید کی صعوبتیں برداشت کر لیں۔۔ننگی پیٹھ پر کوڑے کھا لیے لیکن ظالم حکمرانوں کی مرضی کا فتویٰ نہ دیا۔۔
دوسری جانب حرمین کے یہ تنخواہ دار آئمہ کرام ہیں جو حرام ہے ایک لفظ بھی اپنی ظالم حکومت کے خلاف بول دیں۔۔
سعودی بمباری کی وجہ سے یمن دو سو سال پیچھے چلا گیا ہے۔۔اب وہاں کھنڈرات ہیں۔۔اٹھائیس لاکھ لوگ بشمول بچے فاقہ کشی کا شکار ہیں۔۔اور یہ ستائیسویں رات کو رو رو کر یہود و نصاری کی تباہی کی دعائیں مانگ رہے ہیں۔۔


بجا فرمایا جناب۔
ہم بھی آپ کے اس موقف سے متفق ہیں۔

Sabih
01-07-2017, 02:22 PM
سعودی عرب کا قصور نہیں لگتا۔ ہاتھیوں کی لڑائی میں مینڈک پستے ہی ہیں۔ جیسے روس اور امریکا خود سامنے آئے بنا کبھی کوریا کبھی ویت نام کبھی مصر اور اسرائیل کی شکل میں اپنے اپنے مہرے آگے بڑھاتے رہتے ہیں ایسی ہی ایک سرد جنگ ایران اور سعودی عرب میں چلتی رہی جو کہ اس سے قبل نچلے لیول یا پراکسیز تک محدود تھی لیکن اب سعودی عرب کو شاید مجبورا زیادہ جارح پالیسی بنانی پڑی ہے جس کے تحت وہ اپنی سلطنت کے آس پاس کوئی بڑا مخالف نہیں چاہتا اور ہر دوسرے ملک کی طرح وہ بھی اپنی پالیسی ہر اویل ایبل طریقے سے لاگو کر رہا ہے۔

just being devil's advocate here

سوری بھائی لوگز میں نے صرف کچھ ڈسکشن آگے بڑھانے کو چمچا ہلانا چاہا.

وقار عظیم
01-07-2017, 03:27 PM
اخوان المسلمون کی گمراہی پر میں کمنٹ کرنے سے قاصر ہوں کیونکہ مذہبی معاملات پر میری نہ تو گرفت ہے نہ حوصلہ۔

ہاں سیاسی حالات کے مطابق عوام کا ہی ایک حصہ تھا جس نے گھیراو کر کے حسنی مبارک کو نکلنے پر مجبور کیا اور فوج کی حکمران کونسل بنی۔ اور عوام کا ہی ایک حصہ تھا جس نے یہی قدم مرسی کے خلاف اٹھایا۔ اگر میڈیا رپورٹنگ دیکھی جائے تو مرسی کے خلاف بھی کم عوام نہیں نکلی تھی۔ لیکن حسنی مبارک کے جانے کو عوام کی فتح جبکہ مرسی کے جانے کو فوج کی زیادتی کہا جاتا ہے۔ سیاسی طور پر دونوں حکومتیں اپنے اپنے ایجنڈے پر تھیں۔

یار عوام کونسی اور مینڈیٹ کونسا۔ یہ سب کتابی بیانات ہیں جو ایسے کسی واقعے کے بعد ہر ملک بس ایشو کر دیتا ہے۔ پاکستان کا کونسا ڈکٹیٹر "مہذب ممالک" کی آنکھ کا تارا نہیں رہا۔ عرب ممالک کے بادشاہ آج بھی انہیں پیارے ہیں۔ بس ایک دم چھلا چاہئیے ہوتا ہے چاہے مشرف کے ریفرنڈم کی شکل میں ہو یا ضیاالحق کے الیکشنز کی شکل میں۔

چوہدری وہی ہوتا ہے جو کچھ منوا لینے کی طاقت رکھتا ہو۔ اور ایسا ہر ملک اپنے اپنے دائرہ اختیار میں چوہدراہٹ اکثر دکھاتا نظر بھی آتا ہے۔ اور اس چوہدراہٹ کا کبھی اچھا اثر بھی ہو سکتا ہے اور کبھی برا بھی۔ لیکن اپنے اپنے اختیار کے اندر ہر کوئی چوہدری ہے۔

حسنی کے خلاف اگر لاکھوں افراد نکلے تھے تو مرسی کے خلاف محض ہزاروں لگا لیں
وہ بھی وہ عوام تھی جو الیکشن کے بعد دھاندلی کے الزاماگت لگا کر باہر نکلتی ہے۔امریکہ میں بھی نکلی تھی اس کا یہ مطلب نہیں کہ کوئی فوجی ڈکٹیٹر ٹرمپ کا اتار دے۔۔