PDA

View Full Version : کوثر بیگ کی سحری اور رمضان



Kainat
21-07-2014, 01:26 PM
کوثر بیگ کی سحری

چاند نظر آ گیا۔۔ چاند نظر آ گیا۔۔
کوثر بیگ اپنے بیڈ روم میں تھیں اور بیڈ کور تبدیل کر رہی تھیں ، جب بیٹی کی آواز سنائی پڑی۔۔ سو وہیں سے چلائیں۔۔
ایّو، کیا روزوں کے بغیر ہی عید کا چاند نظر آ گیا۔۔ سچ مچ ماں ۔۔؟
نہیں ما، مے کو کہنا تھا کہ رمضان کا چاند نظر آ گیا۔۔بیٹی نے اندر آتے ہوئے جواب دیا
تو ایسچ بولو نا، اس میں اتنا طوفان اٹھانے کی کیا ضرورت ہے۔۔ ہر سال نظر آتا ہے رمضان کا چاند۔ ایک دن نظر نہ آوئے تو دوسرے دن تو آ ہی جاؤے۔۔سعودی عرب کے ملاء، مفتی، عالم اسی کام کے لیے تو حلوے مانڈے کھاتے اپنی جگہ سمھالے ہیں کہ پوری دنیا کو بتا سکیں کہ چاند نظر آئیچ کہ نہیں ۔۔؟
میرا مطلب تھا ماء کہ ملاء، مفتی کو تو پتہ نہیں نظر آیا ہے یا نہیں ؟ پَرمجھے آسمان پہ لائیو چاند نظر آیا ہے۔۔
اچھا، اچھا یہ تو انہونی ہو گئی پھر اپنا گھر ماں کہ مولوی، مفتی کو ابھی تک ڈھونڈنے سے نہیں ملا۔۔ چلو میں خود دیکھتی ہوں چاند کو ، پہلے دیدار کا مزہ ہی اور ہے۔۔اس کے بعد لبنی، ثمرین، رفعت، وش ، پردیسی بھائی ، عامر جہاں، احمد لون کو جلدی جلدی فون کر کے بتا دیتی ہوں کہ کل روزہ ہونے والا ہے۔۔سحری کا جگاڑ کر لیں، اگر ابھی باقاعدہ شاپنگ نہیں کی تو صبح سحری میں انڈے کا خاگینہ یا انڈے کے بونڈے بنا لیں۔۔ اورساتھ گھی لگی روٹی یا ہری مرچ کا پراٹھا بنا لیں۔ سِی سِی کرتے چائے کے ساتھ انھیں خوب مزہ دیں گے۔۔ جب زبان جلے گی اور کانوں سے دھواں نکلے گا تو ان کی نیند سے جڑتی آنکھیں بھی کھل جائیں گی۔۔اب وہ اِتّا میرا عزت، مان رکھے تو مشورہ وشورہ دینا تو بنتا ای اے نا۔۔
اور بیٹی، کیا نام ہے تمھارا، تم جلدی سے صبح سحری کے لیے اِتّا سا کچڑی قیمہ بنا لو۔۔ قیمہ تیز آنچ پہ لہسن، ادرک، پیاز ڈال کے اچھی طرح بھون لئیو تا کہ اسکی بساند باقی نہ رہے۔۔میرے کو تو اب مفت کافکراں لاگا کہ اگر حمیدی بھائی کی طرح تم لوکاں کے باپ کو بھی گوشت، مرغی، قیمہ سے بساند آنا شروع ہووے تو میرا تو کام بوہتچ بڑھ جاوے۔۔ بساند دور کرنے کے لیے مجھے آئے دن انڈیا رشتے داروں کو فون کرنا پڑے کہ کوئی گھریلو نسخہ، خاندانی ٹوٹکہ بتاؤ کہ۔۔ خالہ امی، بساند دور کرنے لیے کیا کرا اور چچی اماں کیا ٹوٹکہ ڈھونڈ نکالا۔۔؟ اور اگر بساند پھر بھی ختم نہ ہوا تو وہ لوکاں کیسے اپنے مردَ اں کو سمھالا اور کیسےان کی ناکاں کو۔۔؟ویسے وہ لوگاں بھی کیا سوچا کہ میں ان کا خریت ملوم کرنے کا کبھی فون نئیں ، اوراپنے مطلب براری کے لیے فون کرا۔۔ ہک ہا، وہ کیا سمجھیں پردیس ماں پردیس کی مجبوریاں۔۔ یہاں پیسے درختوں پہ تھوڑی لگتے ہیں۔۔ چوبیس گھنٹے مزدوریاں، جگاڑ کرنا پڑتاہے۔ پسینہ بہانا پڑتا ہے۔پیسے پیسے کو دانتوں سے پکڑنا پڑتا ہے۔
لڑکیو !پراٹھوں کے لیے آٹا ابھی سے گوندھ لو۔۔ بلکہ تھوڑا سا خمیر بھی اندر ڈال دو۔اس سے کیا کیا پھولے پھولے مزے کے پراٹھے بنیں گے ، اورصبح سرگی میں وقت سے ذرا پہلے دو بہنیں اٹھ جاویں تو خوب لچھے دار پراٹھے بنا لیویں ۔۔قیمہ اور انڈے دونوں کے ساتھ بوت مزا دیویں ۔۔اور تم کچھ کام بہن کا بھی بتاؤ نا، کل کو اسے بھی سسرال ماں جانا ہو گا اور سب کے لیے سحری بنانے کا جھنجھٹ پالنا ہو گا، ورنہ ساس کوئی موقع نئیں چوکے گی مجھے لتاڑنے کا۔۔ جٹھانی اور دیورانی مفتاں میں اپنے نمبر بناویں ۔۔اُسے کہنا انڈے ابھی سے پھینٹ کر رکھ لے۔۔ ہری مرچ، ٹماٹر، ہری پیاز بھی ڈال دیوے۔۔ اچھا چلو، ہری پیاز، شیاز رہنے دیوے، یہ نہ ہو سارا دن منہ سے پیاز کی بُو مُو، سی نکلے اور فرشتوں کو بھی بُری لگے۔۔ وہ بھی منہ اِدھر اُدھر پھیراں کرے۔۔اور پوراثواب لکھنے میں ہچکچاتے پھریں۔۔ بندہ ایسے کام اِی کائے کو کرے جس سے اگلے کو موقع مل جاوے۔۔ویسے صاحب کے لیے تو فرائی انڈا چلے گا۔۔ بھین کو بولنا باپ کے لیے انڈا ابھی سے پیالی میں توڑ کے رکھ دیوے۔ پتہ توچلے کہ زردی سالم ثبوتی ہے کہ نہیں ۔۔؟ اور سحری میں دستر خوان پہ بیٹھنے سے تھوڑی دیر پہلے فرائی پین میں گھی گرم کر کے وہ انڈا اس میں الٹ دیوے۔۔ کوئی کڑچھی، مڑچھی اس میں نہ مارے۔ اور فرائی پین ای سیدھا باپ کے آگے دھر دیوے۔ تو میری فکر دور ہووے، ورنہ میرے کو ساری رہن فکر لگی ریوے کہ انڈے کی زردی اگر ٹوٹ گئی تو ۔۔؟تمھارے باپ کو کیا بولے۔۔ اور انھیں خوامخواہ باتاں کرنے کا موقع مل جاوےکہ کوثر ، اتنے ماہ و سال گزر گئے ابھی تک تم سے انڈے کی زردی نہ سمھالی گئی۔۔؟ یہ سن کر میرا پارہ ہائی ہو جاوے۔۔ اورصبح صبح نور پیر کے تڑکے لڑائی کا سامان ہو جاوے۔۔یہ رمضان میں الگ مصیبتاں، وہ روز انڈا کھائی، بلا ناغہ انڈا کھائی اور روز زردی ٹوٹ جاوے کا فکراں میری جان پہ ۔۔
ہاں یاد آیا بیگن کا دالچہ بھی پڑا ہے۔۔کل سحری کے علاوہ شام افطار میں بھی کام آئے گا۔۔ کل میں خود افطاری میں دل لگا کر ٹماٹرکے پکوڑے بناؤں گی۔ساتھ سمبوسہ، بادامی دودھ ، مونگچیاں، ساگودانہ کی کھیر،ہری بھری چاٹ اور رائس بال بھی۔۔روٹی کی بجائے گرم گرم روغنی تندوری نان پکڑ لیں گے اور ساتھ باپ سے بولنا چکن تکہ اور مٹن بوٹی بھی لیتے آئیں اور ہاں عجوہ کھجور بھی۔۔ ورنہ عجوہ کھجور کے بغیر میں روزہ افطار نئیں کرے گی۔۔ اگر وہ روز انڈا کھائیچ تو میں بھی روز عجوہ کھجور۔۔
اے لو، اب جب اتنا اہتمام ہو ہی رہا ہے تو جدہ والے بہو بیٹے کو بھی افطار کی دعوت دے دیتی ہوں۔ یقینا ایک آدھ ڈش وہ بھی لیتے آئیں گے۔ ورنہ بندے کی نیت ہونی چاہیئے، البیک تو ان کے راستے میں پڑتاہے۔۔ ایک دو چیزیں پیک کرواتے آخر دیر ہی کتنی لگتی ہے۔۔؟اور اس رمضان میں عمران بھائی سے جرور پوچھا کرے گی کہ وہ سحری میں اچار کونسا استعمال کرے ہیں پنچ رنگا یا نیشنل والوں کا۔۔ ؟ اور انھیں آم کا اچار پسند ہے یا ہری مرچوں کا۔۔؟ میرے کو تو اوئی ماں، لیموں، لسوڑے، گاجر کا اچھا لاگے ، ویسے پنچ رنگا کی پیکنگ سے تو ایک دو ڈیلے ، دو تین لسوڑے اور تین چار لیموں مشکل ماں میں ہاتھ آویں۔۔ ورنہ آم کی قتلیوں ، گٹھلیوں ، مصالحے اور تیل کی بھرمار۔۔
اور ہاں دھیان جٹا کر ، کان کھول کر سن لو۔۔ اس بار رمضان میں کھانا پورا پورا ہی بنے۔۔ فالتو کا بنانے میں میرے ماں بالکل طاقت نئیں۔۔سحری کا بچا افطاری میں اور افطاری کا بچا سحری میں ہر صورت ختم ہو جاوے۔۔ پچھلے رمضان میں نو رتن ہنڈیا پکا پکا کر تھک گئی۔۔ سو اس بار کچھ نیا کرنے کو من کرے ہے ۔۔افطار کا بھی اس بار میں کچھ اور بندوبست سوچ لیوئے۔۔۔ بہتر تو یہی لاگے کہ دو تین بار کھانامسجد میں بھیج دیوے اور اس دن خود بھی وہیں جا روزہ کھولے۔۔ اور رشتے داروں، ملنے والوں کو بھی افطار کا دعوت نامہ مسجد کا دے دیوے۔۔گھر ماں کسی کو بلانے کا کیا جرورت۔۔؟سب اپنے اپنے گھر میں افطار بناویں اور کھاویں ہیں۔۔ ویسے رمضان ماں کیا کنجوسی کیا بچت، اچھا ہے اگر ایک دن سب کا گھر ماں ایک ایک درمیانہ بکس افطار کا پیک بھیج دیوے۔۔ اب چاہے وہاں ایک بندہ پورا افطار کھول لیوے یا پورا خاندان بُرقی بُرقی لگا لیوے۔۔ یہ ان کا مرضی جو جی میں آوے کرے۔۔ اور اگر وہ ہمارا افطار کسی ہوٹل یا البیک میں کرنا چائے تو جی جان سے ہم قبول کر لیوے۔۔ بھئی آخر یہ ان کے گھر کا مسئلہ ہووے۔۔
اے لو، ابھی مجھے چاند نکلنے اوررمضان کی مبارکباد دینے والوں کو یاد دلاناہےکہ بیس تراویح پڑھنے کے لیے کمر کَس لیں۔۔ پہلا روزہ ہے نا، اس لیے آٹھ تراویح نہیں چلے گی۔۔ رمضان کا مہینہ ہے زیادہ سے زیادہ ان لوکاں کا نماز روزہ چ کرنا چاہیئے۔ اپنی خطائیں بخشواناچاہیئں۔ اپنی سال کی ڈھیروں چغلیاں معاف کروانا چاہیئں۔ پوراسال جانے انجانے میں، مذاق مذاق میں نہ جانے یہ کتنی چھوٹی بڑی خطائیں کرے ہیں۔۔ سو اب معافی تلافی کر کےاللہ کی رحمتیں، برکتیں سمیٹنا چاہیئں۔ اور مرد لوگاں کا تو لازم مسجد میں جا کر نماز پڑھنے کااور مکے مدینے والے تو امام کے پیچھے تراویح پڑھنے کا موقع قطعی نہیں گنوانے کا۔۔ اللہ ان کے طفیل مجھے بھی ہمت دیوے کہ گھر بیٹھے پوری تراویح پڑھ سکوں، آٹھ تراویح پڑھنے کے بعد مجھ پہ نیند کا غلبہ طاری نہ ہو۔ اگر ایسا ہو تو باقی گھر والے بیس تراویح پڑھ لیویں۔۔ تا کہ اللہ کی رحمتیں اور برکتیں اس گھر پہ برستی رہیں۔۔
ویسے اس بار تو روزے اوئی ماء، بڑے ہی سخت ہوویں۔۔ کہیں گرمی کی مار ہے تو کہیں وقت کی۔۔ نہ سحری میں ٹھیک سے کھایا پیا جائے اور افطاری تک تو بندہ ویسے ہی اَدھ مواء ہو جائے۔۔ کمزوری اتنا ہو جاؤے کہ دو گھونٹ پانی بھی اندر عرق کی طرح رِس رِس کر جائے۔ بس یہی تو رمضان ہے ،صبر ہے اور کڑا امتحان ہے۔ اللہ، لوکاں پہ اپنا فضل بنائے رکھے۔۔آمین اور اس مہینہ شیطان کو جکڑ کے رکھے۔۔ذرا ڈھیل نہ دیوے۔۔
اے لو، تم کیاکھڑی میری باتاں سُناں کرے۔۔ میں سب سے پہلے تو چاند کادیکھاکروں جو ابھی ابھی پیدا ہوا ہے۔۔یہ کہہ کر کوثر جی کھڑکی کی طرف لپکیں اور پوری کھڑکی کھول کر آسماں پہ نظریں دوڑائیں۔۔ دور دور تک چاند کا نشان نہ تھا۔۔ اتنے میں بیٹی آگے بڑھ کر بولی،
ما، چاند تو میرے کمرے کی کھڑکی سے نظر آئیچ۔۔
اے لو بیٹی، تم نے چاند اپنے کمرے کی اور مقید کر رکھا ہے۔ ۔ چاند تو بلا شراکت سب کا ہووے ہے۔۔
کوثر جی لپک کر بیٹی کے کمرے کی طرف بڑھیں اور جاتے جاتے تپائی سے اپنی دور کی نظرکا چشمہ بھی اٹھا لے گئیں۔۔ بیٹیوں کے کمرے میں جاتے ہی اِدھر اُدھر نگاہ کیے بغیر کھلی کھڑکی میں جا کھڑی ہوئیں اور اشتیاق سے آسمان کی طرف دیکھنے لگیں۔آسماں اتناقریب لگ رہا تھا کہ ہاتھ بڑھا کے چھو لو۔۔رات کی آمد آمد تھی۔۔اِکا دُکا تارے نکلتے نظر آ رہے تھے لیکن چاند ندارد۔۔
بیٹی چاند کس کونے ماں نکلا ہے۔۔؟ اوپر والے کونا ماں یا نیچے والے ماں۔۔ اور دائیں طرف نکلا ہے کہ بائیں ماں؟اِدھر تو دور دور تک نظر نہ آؤے۔۔ تم پتہ نئیں کس چاند کو دیکھ لیا۔۔ یا کسی چندیا کو؟ یہ کہہ کر انھوں نے آس پاس کی بلڈنگ پر نظر کی۔۔
بیٹی نے آگے بڑھ کر آسماں پہ ایک محدود سے حصے کی طرف اشارہ کیا تو کوثر بیگ کو نیا چاند نظر آ ہی گیا۔۔ خوشی کی ایک پُر مسرت لہر اندر دوڑی۔۔ فورا خضو ع و خشوع سے ہاتھ پھیلا کر دعا مانگی ۔۔ پہلے گھر والوں، سعودی عرب والے بہن بھائیوں، عزیز اقرباء کے لیے،
پھر کویت، دبئی، شارجہ ، قطر ، انڈیا، پاکستان،انگلینڈ، جرمنی، کینیڈا،آسٹریلیا، ملائشیا، چین، امریکہ، افریقہ، ون اردو کی سب بہنوں بھائیوں کو یاد کر کے فردا فردا اپنی دعا میں شامل کیا۔۔دعا کو اختتامی موڑ دے کر انھوں نے آمین کی صورت چہرے پہ ہاتھ پھیرے اور باہر باقی کا منظر دیکھنے لگیں۔۔
ان کا گھر ایک ہائی بلڈنگ میں تھا۔ اس لیے دور دور تک منظر واضح ہو رہا تھا۔ اوپر ۔۔آسمان اور تارے ۔۔ نیچے زمین پہ روشنیوں سے جھلملاتی روڈ، لوگ، ٹریفک ،گاڑیاں ( یقینا ان گاڑیوں میں کہیں نہ کہیں صاحب کی گاڑی بھی ہو گی)
تیری راہوں میں کھڑے ہیں دل تھام کے
ہائے ہم ہیں دیوانے تیرے نام کے
ماء، کہاں کھو گئیں ۔۔؟ بیٹی نے کوثر بیگ کو سوچتے پا کر ان کابازو ہلایا۔۔
کچھ نہیں بیٹی، تمہارے باوا کو یاد کر رہی تھی۔۔
کوثر بیگ نے جواب دیا اور کھڑکی سے ہٹ گئیں۔۔


۔۔۔کائنات بشیر ۔۔۔

محمد فیصل
21-07-2014, 01:35 PM
ذبردست کیا تصویر کھنیچی ہے آپ نے لگتا ہے کہ موقع پر موجود تھیں مگر کمال تو یہ ہے کہ جس اسپیڈ سے آپا نے تقریر کی آپ نے اسی خوبصورتی سے اس کو کاغذ پر منتقل بھی کردیا

اللہ زورِ قلم میں اضافہ کرے

کوثر بیگ
21-07-2014, 08:42 PM
کائنات جی آپ کمال کا لکهتی ہیں بلکہ آپ ہیں ہی بہت با کمال
میں انڈیا پہنچ چکی ہوں اور صبح سے کئی بار یہاں میسج کر چکی ہوں مگر اللہ رے انڈیا کا کنکشن مجهے ہر بار مایوس کر رہا ہے .تفصیلی جواب پهر بعد میں

Saima
21-07-2014, 09:07 PM
زبردست
بہت اچھا لکھا ہے کائنات سس
بہت مزا آیا کوثر آپا کی باتیں پڑھ کے وہ بھی سویٹ سی حیدرآبادی میں

IN Khan
21-07-2014, 09:25 PM
زبردست ہے جی زبردست

:):):)

Kainat
21-07-2014, 10:21 PM
کائنات جی آپ کمال کا لکهتی ہیں بلکہ آپ ہیں ہی بہت با کمال
میں انڈیا پہنچ چکی ہوں اور صبح سے کئی بار یہاں میسج کر چکی ہوں مگر اللہ رے انڈیا کا کنکشن مجهے ہر بار مایوس کر رہا ہے .تفصیلی جواب پهر بعد میں
نوازش، کوثر جی،
آپ کا حسن ظن ہے۔۔۔۔
:)

Kainat
21-07-2014, 10:25 PM
ذبردست کیا تصویر کھنیچی ہے آپ نے لگتا ہے کہ موقع پر موجود تھیں مگر کمال تو یہ ہے کہ جس اسپیڈ سے آپا نے تقریر کی آپ نے اسی خوبصورتی سے اس کو کاغذ پر منتقل بھی کردیا
اللہ زورِ قلم میں اضافہ کرے


آمین
شکریہ


زبردست
بہت اچھا لکھا ہے کائنات سس
بہت مزا آیا کوثر آپا کی باتیں پڑھ کے وہ بھی سویٹ سی حیدرآبادی میں

شکریہ صائمہ سس



زبردست ہے جی زبردست

:):):)


شکریہ عمران بھائی
:)

Amir Shahzad
22-07-2014, 12:40 AM
ہمیشہ کی طرح آپ کی خوبصورت تحریر
اور اس سے بڑھ کے مجھے کوثر جی کے بارے میں تحریر پڑھنے کو ملی
اسکے لیے تھینکس

Tehmeena
22-07-2014, 01:08 AM
buhat Khoob.

W.Asif
22-07-2014, 09:12 AM
Maza aa gia ap ke tahreer bouth khoobsoorat haa

Kainat
22-07-2014, 05:00 PM
ہمیشہ کی طرح آپ کی خوبصورت تحریر
اور اس سے بڑھ کے مجھے کوثر جی کے بارے میں تحریر پڑھنے کو ملی
اسکے لیے تھینکس

شکریہ عامر بھائی


buhat Khoob.

تھینکس


Maza aa gia ap ke tahreer bouth khoobsoorat haa

بہت شکریہ

جنید اختر
22-07-2014, 06:07 PM
بہت خوب۔۔زبردست تحریر۔۔ :)

Kainat
22-07-2014, 07:46 PM
بہت خوب۔۔زبردست تحریر۔۔ :)
شکریہ