PDA

View Full Version : یہ کون سا علم ہے؟



Durre Nayab
30-10-2009, 01:13 AM
پچھلے ہفتے ایک عجیب بات ہوئی۔ میرے ابو کے رشتے کے ایک کزن کچھ سالوں سے بیمار ہیں۔ پہلے تو اتنے بیمار نہیں تھے یعنی انہیں ڈپریشن کے دورے پڑتے تھے تو وہ گھنٹوں کمرے میں بند ہوجایا کرتے تھے اور کسی سے بات نہیں کرتے تھے۔ اس کے بعد خود ہی ٹھیک ہوجاتے تھے۔ ایسا جب بار بار ہونے لگا تو اب ان کی حالت یہ ہوگئی تھی کہ وہ جنونی ہوجاتے تھے اور مار دھار بھی کرنے لگتےتھے ۔ ڈاکٹرز نے بہت علاج کیا انٹی دپریسنٹ دے دے کر ان کے دماغ کے ساتھ ساتھ ان کا جسم وغیرہ بھی ختم ہونے لگا۔ بلکہ اب تو یہ حالت ہے کہ خود سے اٹھ بھی نہیں سکتے۔ بظاہر کوئی بیماری بھی نظر نہیں آتی تھی۔ ان کی عیادت کرنے جب بھی کوئی جاتا یہ مشروہ ضرور دیتا کہ کسی عامل وغیرہ سے رجوع کریں شاید ان پر کسی نے جادو کیا ہے۔
میرے ابو سے ان کی بہت دوستی ہوا کرتی تھی اور چونکہ وہ بڑے بھی ہیں تو ابو کی ان کے ساتھ بڑے بھائیوں جیسے تعلقات ہوا کرتے تھے۔ ان کی وائف ہمیشہ امی ابو سے مشورہ لیتی کہ کیا کیا جائے۔ ابو چونکہ عامل وغیرہ پر یقین نہیں رکھتے تو کبھی ایسے مشورے پر عمل کرنے کی ضرورت محسوس نہیں کی۔
پچھلے ہفتے ابو ہمارے فارم ہاوس گئے تھے۔ یہ شہر سے کافی دور ہے۔ وہاں کسی آدمی نے بتایا کہ فارم کے قریب ایک افریقن شخص ہے جو کہ عامل ہے ابو نے کہا چلو دیکھتے ہیں کیسا عامل ہے۔ ان کے گھر گئے۔ گھر کیا تھا گھاس پھوس کا مکان۔
وہ آدمی باہر ایک ٹوٹی ہوئی کرسی پر بیٹھا تھا۔ اس آدمی نے ابو کا تعارف کروایا اور کہا کہ انہیں کوئی مسئلہ ہے۔ اس عامل نے ابو کو دیکھا اور کچھ نہیں پوچھا سوائے اس کے کہ مریض آیا مرد ہے یا عورت۔ اس کے بعد ہاتھ میں پکڑی ہوئی ٹہنی سے کچی زمین پر کچھ لکیریں کھینچی۔ اور پھر بولنا شروع ہوا ایک کے بعد ایک بات بتاتا چلا گیا۔
مریض کی عمر، اس کی ابھی کی حالت، ایسا کس طرح شروع ہوا۔ اور اس کا تعلق کہاں سے تھا اور وہ کہاں رہتے تھے۔ اس نے ابو سے نا ہی اپنی باتوں کی تصدیق چاہی اور نہ ہی اپنے سچ کی یقین دہانی کرائی۔ صرف صاف صاف حقیقت جو اسے نظر آرہی تھی وہ بیان کردی۔ یاد رہے اس نے ابو سے صرف مریض کے بارے میں اتنا ہی پوچھا کہ آیا وہ مرد ہے یا عورت بس۔
الغرض جب اس عامل کی بات پوری ہوئی تو میرے ابو واقعی حیرت مین پڑ گئے کہ اس کو یہ سب کیسے پتا چلا۔ کیونکہ ابو بھی اس آدمی کو زندگی میں پہلی دفعہ دیکھ رہے تھے اور وہ بھی ابو کو۔ بہرحال جب ابو نے علاج کا پوچھا تو اس نے صاف صاف کہا کہ وہ جادو وغیرہ سے کبھی علاج نہین کرتا۔ حالانکہ مریض پر جادو کیا گیا ہے۔ لیکن وہ قرآن کی آیات سے اس کا توڑ کرے گا۔ اور جب ابو نے مزید تفصیل جاننا چاہی تو اس نے یہ مثال دی کہ جیسے نیٹ پر کوئی وائرس ہوتا ہے تو اس کو کھولنے سے بہت نقصان ہوتا ہے اور طریقہ یہ ہے کہ اسے کھولے بغیر ڈیلیٹ کردیا جائے۔ بالکل اسی طرح اس مریض کے دماغ میں یہ جادو وائرس کی طرح ہے اسے ہم صرف ڈیلیٹ کرنے کی کوشش کریں گے یہ جادو کیا ہے اور کس طرح ہوا اور کس نے کیا یہ جاننے میں ہم نقصان بھی ہوسکتا ہے۔
خیر ابو تو وہاں سے واپس آگئے لیکن تب سے یہ سوال ہم سب کے ذہن میں ہے کہ یہ کون سا علم ہے?

Noor-ul-Ain Sahira
30-10-2009, 01:22 AM
بہت عجیب بات بتائ تم نے دری۔ ایسا کیسے ہو سکتا ھے؟ ھممممممممممممم
وہ افریقین آدمی کیا مسلمان ھے اور تمکے ابو سے کونسی ذبان میں باتیں کر رھا تھا ۔ شاید انگلشََ؟؟؟؟؟
ہوں! ہو سکتا ھے وہ "پہنچا" ہوا ہو۔ پتہ ھے ھم لوگ اپنے دماغ کا بہت کم حصہ یوز کرتے ہیں۔ جو لوگ مختلف مشقیں کر کے ذیادہ کرتے ہیں ان پر پر بہت سے اسرار کھل جاتے ہیں اور یہ تو پھر مسلمان بھی لگ رہا ھے۔

Durre Nayab
30-10-2009, 01:32 AM
مجھے یہ بات بہت عجیب نہیں لگ رہی کیونکہ میں نے بچپن سے ایسے بہت سے واقعات سن رکھے ہیں اور افریقن سوسائٹی اپنے وچ کرافٹ کی وجہ سے بہت پہچانی جاتی ہے۔ یہاں کی نیشنل زبان سواہیلی ہے اور ہم سب ہی یہاں کے نیٹیو افریقن لوگوں سے اس زبان میں بات کرتے ہیں لہذا ابو نے بھی سواہیلی میں ہی اس عامل سے بات کی تھی۔
مجھے بھی ٹیلی پیتھی کا گمان ہوا۔ خاص کر جب اس نے ابو کو بتایا کہ مجھے ساوتھ کی سمت سے ہی ایسا لگ رہا ہے کہ جادو کیا گیا ہے۔ یعنی جب مریض ساوتھ ساءیڈ میں رہتے تھے۔

Sajjad Rao
30-10-2009, 01:41 AM
میں جتنا اس لائن کے بارے میں جانتا ھون اس کے حساب سے اور آپ کی بات کو کوٹ کرتے ھوئے وہ شخص ستاروں کی چال جانتا ھیں یہ بہت قدیم علم ھیں اگر نہں تو دوسرا پہلو

دنیا میں ایک دوسری مخلوق بھی ھیں جسے ھم سب جنات کہتے ھیں ۔ چونکہ وہ اپنے گھر (اڈے) پر تھا اس کے پاس کچھ غلام جنات ھوسکتے ھیں جن سے اس نے سب معلومات لی ھوں۔

میں اس میں صرف اتنا ھی بیان کرسکتا ھون۔ ھوسکتا ھیں مین غلط لکھ رھا ھون میں صرف اپنا خیال ظاہر کر رھا ھوں۔

Durre Nayab
30-10-2009, 01:50 AM
بھائی میں آپ سے پورا اتفاق کرتی ہوں۔ کیونکہ یہاں جو خاص مسلمان عامل وغیرہ ہیں یہ آجکل کے نہیں ہوتے بلکہ ان کے باپ دادا بھی یہی کام کر چکے ہوتے ہیں۔ اور یہ علم ان کی نسل سے چلتا ہے۔
لیکن سوال یہی پیدا ہوتا ہے کہ کیا ان کا علم اتنا مضبوط ہے کہ ایسی باتیں جو کہ صرف دماغ یا دل میں ہوں وہ جان لیں۔ اور کیا جنات وغیرہ سے بھی ایسی باتیں معلوم ہوسکتی ہے؟

Sajjad Rao
30-10-2009, 02:10 AM
جنات سے آپ سب کچھ نہیں تو بہت کچھ معلوم کر سکتے ھیں ۔ اور جنات کا ورک اصل میں انسانی دماغ کو کنٹرول کرنے کے بعد شروع ھوتا۔ لیکن اس پر آپ یہ تو نہیں کہ سکتے کہ اس نے جنات کے کنٹرول سے آپ کے ابو سے معلوم کیا ایسا نہیں ھوتا ۔۔

اصل میں اگر اس نے جنات کا راستہ استعمال کیا تو اس نے صرف جنات سے کام لیا وہ کچھ اس طرح لیا جاتا ھیں ۔
آپ اپنے جنات جو آپ کی دسترس میں ھوتے ھیں ان کی مدد سے ان سے بات کرتے ھوں جو اس آدمی پر لگائے ھوتے ھیں تب آپ کے جنات ان سے معلومات لیتے ھیں ان کی باتیں صرف وہ لوگ ھی سنتے ھیں جن کو ان کے بارے میں علم ھوتا ھیں اس طرح بھی عامل لوگوں کو پتا چلتا ھیں۔۔

Durre Nayab
30-10-2009, 02:31 AM
ہو سکتا ہے بھائی میں اس چیز کے بارے میں زیادہ نہیں جانتی لیکن جب ابو یہ باتیں بتا رہے تھے تو میں نے ایک ہی سوال پوچھا کہ کیا وہ آپ کو یہ سب بتانے سے پہلے آپ کی آنکھوں میں دیکھ رہا تھا۔ میں سمجھ رہی تھی ہو نا ہو یہ ٹیل پیتھی کا علم جانتا ہوگا، کیونکہ مجھے بھی جلدی سے ایسی باتیں ہضم نہیں ہوتیں لیکن ابو نے کہا اس نے مجھے صرف ایک نظر دیکھا تھا پھر وہ اپنی لیکروں میں گم ہوگیا تھا۔
ایک بات اور بھی بقول اس عامل کے جادو چونکہ شیطانی عمل ہے تو اس کے توڑ کے لئے اگر ہم قران سے مدد لیتے ہیں تو ہمیشہ مریض اس علاج کو ریزسٹ کرتا ہے۔ ریزسٹ کو کیا کہتے ہیں شاید احتجاج۔ تو اس میں مریض اور بھی بیمار ہوجاتا ہے۔

Sajjad Rao
30-10-2009, 02:43 AM
جی ھان اس میں بعض لوگ معزور ھوجاتے ھیں بعض مر جاتے ھیں یہ اگے جادو کرنے والے پر انحصار کرتا ھیں اس کا علم کتنا ھیں۔ اور اس کیس کو مکمل توجہ میں رکھے ھوئے ھیں۔
لیکن اس میں ڈرنے کی کوئی بات نہیں ھیں اکثر لوگ اللہ تعالٰی کے کرم سے ٹھیک ھوجاتے ھیں۔

اس کا علاج قرآن پاک میں ھی ھیں۔

central
02-11-2009, 02:47 PM
علوم مخفی میں سے ایک علم جسے (عمل تسخیر ھمزاد) کہا جاتا ھے کی رو سے کیئے گئے سوال کی مکمل تفصیل بتائی جا سکتی ھے۔ اس میں کوئی حیرت والی بات نھیں ھے

central
02-11-2009, 02:52 PM
اگر آپ کو مریض کی شفا یابی مقصود ھے تو اسکا انتھائی آسان (قرآنی حل) بتایا جا سکتا ھے

patelwork
06-02-2011, 05:24 PM
ہر انسان دو رخ میں اپنی زندگی کزارتا ھے ایک ظاہری اور دوسرا باطنی۔
اسی لحاظ سے علم بھی دو قسم کے ہیں ایک ظاہری اور دوسرا باطنی-

ایک پروفیسر میٹرک کے سوالات کا جواب باآسانی دے دیتا ھے کیوکہ اس کا علم میٹرک سے زیادہ ہوتا ھے اسی طرح باطنی علوم کے ماہر ان اسرار کو باآسانی بیان کردیتے ہیں جنکا ہم لوگ احاطہ نہیں کرسکتے-

جسطرح ظاہری علوم کی مختلف اقسام اور درجے ہیں جیسے فزکس،بیالوجی ،میٹرک ، انٹر وغیرہ وغیرہ- بلکل ویسے ہی باطنی علوم میں بھی یہ سب موجود ہیں۔

جنکا آپ نے ذکر کیا ہے وہ بھی ان علوم پر دسترس رکھتے تھے۔

خیال رہے کہ دنیا میں خیر اور شر دونوں طاقتیں موجود ہیں اور یہ علم دونوں کے پاس موجود ہوتا ہے اور یے اپنے ظرف کے حساب سے انکا استعمال کرتے ہیں-

xen
22-04-2011, 10:56 PM
در نایاب بہن اللہ کی کتاب کا علم سب سے بڑا علم ہے۔ حضرت سلیمانء اور ملکہ بلقیس کا واقعہ تو آپ نے سنا ہی ہو گا۔

جہاں تک میری ناقص راے ہے کہ اس کے پاس کتاب کا علم ہی ہو گا۔ تب ہی اس نے قرانی آیات سے علاج کا کہا۔ اگر اس نے پیسے یا کویی چیز یا مفاد نہیں مانگا تو پھر زیادہ چانس ہیں کہ وہ اللہ کا نیک بندہ ہو۔