PDA

View Full Version : muhabbat



raushani.com
29-05-2009, 10:51 PM
kia lahasil ka nam muhabbat hai.
yeh muhabbat ki bijli un do roohon par hi kiun girti hai jin ka milap namumkin hota hai.

Nosheen Qureshi
30-05-2009, 02:27 PM
لا حاصل کا نام محبت تو نہیں کہہ سکتے لیکن جو چیز دسترس سے دور ہو اس کی طلب ضرور بڑھ جاتی ہے اور ہمیں بے چین کر دیتی ہے۔ ایک بے کلی دل میں گھر کر لیتی ہے اور ہر وقت اسے پانے کا خیال ہی ہم پر حاوی رہتا ہے۔

محبت کے متعلق ہر ایک کا اپنا نقطئہ نظر ہے، آپ کسی کو بھی غلط قرار نہیں دے سکتے،محبت ایک وسیع سمندر کی مانند ہے اسے آپ صرف دو لوگوں کے لئے مخصوص نہیں کر سکتے اور حقیقی محبت صرف دو لوگوں کے ملاپ کا نام نہیں ہے، محبت وہ بھی ہے جو رب اور بندے کے درمیان ہوتی ہے ، جو والدین اور اولاد کے درمیان ہوتی ہے، بہن بھائیوں کے درمیان ہوتی ہے، دوستوں کے درمیان ہوتی ہے۔

جس قسم کی محبت کا تصور عموما ہمارے ذھن میں ہے وہ آج کل اتنی عام ہو گئ ہے کہ محبت کا اصل مفہوم کہیں کھو گیا ہے۔ یہ کسی وبا کی طرح پھیل گئی ہے۔ اس کی پاکیزگی کہیں کھو گئی ہے۔
ہماری مذھب سے دوری اس کی سب سے بڑی وجہ ہے سوچوں کا محور ایک نامحرم کو بنا لیا جاتا ہے اور اپنی زندگی کا مقصد ہی اس کے حصول کو تصور کر لیا جاتا ہے۔ سچی محبت ملاپ کی محتاج نہیں، یہ ایک پاکیزہ تعلق ہے جو روحوں کو ایک دوسرے سے وابستہ کرتا ہے۔

raushani.com
31-05-2009, 09:05 AM
asal muhabbat ki pehchan kia hoti hai.
kisi ko bhulaya kaisay ja sakta hai.

Nosheen Qureshi
05-06-2009, 12:16 PM
حقیقی محبت دلوں کو بے چین نہیں پر سکون کرتی ہے، یہ اللہ کا بندے کو دیا جانے والا سب سے قیمتی تحفہ ہے، یہ صلہ سے بے نیاز ہوتی ہے، اس میں آپ اس خواہش کے بغیر دوسرے بندے سے محبت اور اس کا خیال کرتے ہیں کہ وہ بھی آپ سے جوابی محبت کرے اور اسی شدت سے آپ کو چاہے جیسے آپ چاہتے ہیں، اس میں خوبیوں خامیوں سمیت کسی کو محب بنایا جاتا ہے۔

کسی کو بھلانا آسان نہیں ہے ہم جتنا اس یاد سے پیچھا چھڑانے کی کوشش کریں اتنا ہی وہ بڑھتی جاتی ہے، کسی کو بھلانے کیلئے سب سے پہلے یہ ماننا ضروری ہے کہ اب اس سے ہمارا تعلق ختم ہو گیا ہے تاکہ مزید امیدیں نہ پالی جائیں۔ کسی اپنے سے اپنے دل کی کیفیت اپنے احساسات بیان کئے جائیں تاکہ ایک دفعہ اندر کا سب غبار نکل جائے۔
تقدیر پر یقین رکھا جائے ہم سے بہتر لے کر ہمیں بہترین سے نوازا جاتا ہے۔ اگر کسی کو بھلانے کی شعوری کوشش کی جائے تو درحقیقت ہم اسے ہمیشہ یاد رکھنے کی لاشعوری کوشش کر رہے ہوتے ہیں۔
خود کو کسی بہتر کام میں مصروف کیا جائے، جو نہیں ملا اس پر واویلا کرنے کی بجائے جو ملا اس کی قدر کی جائے تاکہ ہم اسے بھی نادانی میں کھو نہ دیں۔

Kash
05-06-2009, 12:37 PM
نوشین جی بہت بہتر جواب دیا آپ نے۔ محبت کسی کو پانے کا نام نہیں ہے اور جب محبت کرو تو ہمیشہ یہ بات ذہن میں رکھو کہ لازمی نہیں جس سے تم محبت کرو وہ تمہارا ہی ہو۔ قسمت کے لکھے کو ٹالا نہیں جا سکتا اور انسان تو ہے ہی قسمت پہ چلنے والا بندہ۔ ایمان کا تقاضا ہے کہ آپ قسمت پہ یقین رکھو اور اللہ کے کیے گئے فیصلے کو دل سے قبول کرو کیونکہ حضرت علی کا قول ہے۔ پورا نہیں آدھا لکھ رہا ہوں اگر جس کو آپ چاہتے ہو اور وہ آپ کو نہیں ملا تو خوش ہو جاؤ کہ یہ اللہ کی مرضی ہے اور جس اللہ نے آپ کو آپکی پسند نہیں عطا کی وہی اللہ آپکو اپنی پسندیدہ چیز عطا فرمائے گا تو اس سے زیادہ خوشی کی کیا بات ہو سکتی ہے؟ بس خود کو اس خیال پر راضی کرو اور اس اللہ کی سچے دل سے عبادت کرو ہر خیال اور تکلیف ذہن سے خود ہی نکل جائے گی۔ انشاءاللہ

raushani.com
07-06-2009, 06:57 PM
nice !
acha waisy yeh bhi bata dain k agar aap kisi say muhabbat kartay ho to kia usay bata dena chahye ya is bat par eyman rakhna chahye k "wo muhabbat hi kia jo izhar ki muhtaj ho"

waisy koi aisa tareeqa batain ya amal jis k karnay sy log mujhay pasand karnay lagain meray dost ban jayen.

Nosheen Qureshi
10-06-2009, 07:53 AM
محبت کے اظہار کے متعلق ہر ایک کا اپنا نظریہ ہے کچھ لوگوں کے نزدیک یہ اظہار کی محتاج نہیں اور اظہار سے اپنی وقعت کھو دیتی ہے لیکن کچھ لوگوں کے نزدیک اظہار اس کی خوراک ہے جس سے یہ پنپنتی ہے ۔

ایسا عمل کہ لوگ ہمیں پسند کرنے لگیں، ??? ہوں ں ں ں کوئی جادو ٹونا بتائوں۔
سب سے پہلے تو اپنی خوبیوں اور خامیوں کا جائزہ لیں، ان کی ایک فہرست بنا لیں تو اچھا ہے تاکہ اندازہ ہو سکے کہ کس کس چیز کو بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔
اپنی شخصی خامیوں کو بھی اسی طرح قبول کریں جس طرح اپنی خوبیوں کو کرتے ہیں۔
ہمیشہ مثبت انداز فکر اپنائیں اور مثبت رویہ رکھیں، بات بات پر شکوہ شکایت کی عادت ہمیں لوگوں سے دور کر دیتی ہے۔
اپنی حس مزاح کو نکھاریں اور زندگی میں مزاح کو جگہ دیں۔
بے جا تنقید سے اجتناب برتیں۔
ہر انسان دوسرے سے مختلف ہے اور اس کی ایک انفرادی شخصیت ہے اس انفرادیت کو قائم رکھیں اور کسی سے متاثر ہو کر بالکل اس کے رنگ میں رنگنے کی کوشش نہ کریں۔
اپنے قول و فعل میں تضاد نہ آنے دیں۔
دوسروں کی عزت کریں اور مثبت ردعمل کا مظاہرہ کریں۔
دوسروں کو اس وقت سہارا دیں جب انھیں اس کی اشد ضرورت ہو اس سے آپ کی اہمیت ان کی نظر میں بڑھے گی۔
سننے کی عادت ڈالیں اور اچھا سامع بننے کی کوشش کریں۔
اپنے وقار کی حفاظت کریں کوئی ایسی بات نہ کریں جو آپ کو دوسروں کی نظروں میں حقیر بنا دے۔
لوگوں میں دلچسپی لیں ان کی پسند نا پسند جاننے کی کوشش کریں اس سے لوگ آپ کو ایک پسندیدہ شخصیت خیال کریں گے۔
گفتگو کا حصہ بننے کی کوشش کریں۔
دوسروں کی کامیابیوں پر خوشی کا اظہار کریں اور ان کی تعریف کریں۔
تقریبات کا حصہ بنیں تاکہ آپ کی جان پہچان بڑھے اور آپ گفتگو کا فن سیکھ سکیں۔
مطالعہ کی عادت ڈالیں اور موقع محل کے مطابق اس علم کو استعمال کریں اس سے لوگوں کی آپ میں دلچسپی بڑھے گی اور آپ کا علم اور خود پر اعتماد بھی بڑھے گا۔
معاملات میں اپنی ایک رائے رکھیں اور اس کا دفاع کریں۔
ایسے لوگوں سے ملاقات بڑھائیں جو آپ سے مختلف ہوں اس سے آپ کی سوچ وسیع ہوگی۔

raushani.com
15-06-2009, 08:33 PM
itni guidness ka shukria.
itwar ko meray ghar meray bachpan ka dost aaya.
meray mutabiq waqt nay aur gharon k beech faslon nay dilon k faslay bhi barha deye hon gay magar mera yeh kanch ka aqeeda pal bhar mein kirchi kirchi ho gaya.
taqreeban 4 saal bad hum milay thay , magar mein us k liye ajnabi na tha.
faqat 2-3 minute ki muktasir mulaqat nay yeh sabit kr dala k wo bilkul naheen badla.
mein usay khona naheen chahta balkay apni dosti ko mazeed mazboot krna chahta hun.
us ka walid ki wafat ho chuki hai.
us k matric mein no 730 aur meray 615.
us kay 1st year mein no 425 aur meray 356.
bus yeh numbron k faslon k waja say qadam barhanay say darta hun.
mein kia karon?
kaisay pata chalaon k wo mera sacha dost ban sakta hai?
mein us ka behtareen dost kaisay banon.
aur kuch poochna ho to pooch kr meri rehnamai karain.
agar meray masalay ka jawab [email protected] par day dain to shaid mein mazeed batain b aap ko bata sakon jinhain mein yahan share naheen kr sakta.

raushani.com
15-06-2009, 08:38 PM
aik risala parh raha tha (urdu digest june 2009 (page 163)) us mein writer nay likha huwa tha "kisi daana ka kaul hai;"agar aap aik saal k liye khush hali chahtay hain to ghalla(anaj) ugaye laikin agar aap das saal ki khushali chahtay hain to mard aur khawateen ugaye""

is ki explanation kr dain

Nosheen Qureshi
19-06-2009, 07:46 AM
سچی دوستی میں ایسے چھوٹے موٹے فرق معنی نہیں رکھتے، شخصیت اور مزاج اہم ہوتے ہیں، سچی دوستی انمول ہے، وہ فائدہ نقصان دیکھ کر نہیں کی جاتی، اچھا دوست وہ ہے جو اپنے دوست کے مزاج و عادات کو سمجھے، اچھے برے وقت میں اس کا ساتھ نبھا سکے، جس پر بندہ اعتماد کر سکے، جو بہت خیال رکھنے والا ہو، جس کی دوستی انسان کو نعمت محسوس ہو، جو ہمارے مزاج کے ہر رنگ سے آگاہ ہو اور اس کے مطابق ہی پیش رفت کرے، دوستی ہمیشہ برابری کی سطح پر ہوتی ہے، اس میں اگر ایک خود کو برتر یا کمتر سمجھتا رہے تو بہترین دوستی قائم نہیں ہو سکتی، اچھا دوست ہمیں ہماری خوبیوں خامیوں سمیت قبول کرتا ہے، اگر آپ ایسے دوست بننے کی کوشش کریں تو یقیناُ آپ کی ان سے اچھی دوستی ہو سکے گی کیونکہ جیسا آپ نے بتایا انھوں نے آپ کی طرف مثبت رویہ کا اظہار کیا ہے اور پرانی دوستی بھی تھی تو ممکن ہے کہ وہ اس دوستی کو برقرار رکھنا چاہتے ہوں۔
آپ ان کے قریب ہونے کی کوشش کریں انکی عادات و مزاج سمجھنے کی کوشش کریں، ان سے ان کی پسندیدہ چیزوں کے متعلق گفتگو کریں، اگر انھیں کسی معاملہ میں مشورہ کی ضرورت ہو تو ان کی رہنمائی کریں، ان کی ضرورت بن جائیں،
یہ یاد رکھیں کہ دوستی دو طرفہ تعلق ہے اور کسی ایک کی خواہش پر قائم نہیں ہوتا، اپنی خوبیوں کو نکھاریں تاکہ آپ ان کی نظر میں اپنا بہترین تاثر قائم کر سکیں اور وہ آپ کی طرف متوجہ ہوں اور آپ کی دوستی کی پیشکش قبول کرنے میں فخر محسوس کریں۔
آپ کی باتوں سے اندازہ ہوتا ہے کہ آپ بہت جذباتی ہیں اور کسی حد تک افسانوی سوچ کے حامل ہیں اس پر تھوڑا قابو پائیں گے تو زندگی آپ کیلئے زیادہ آسان ہو جائے گی۔

raushani.com
19-06-2009, 02:12 PM
yeh jo aap nay baat ki hai un ki zaroorat ban jayen is ko zara mazeed explain kr dai aur kaisay yeh bhi bataye ga.
acha mein younhi aik academy mein parhata hun kia yeh behtar step ho ga k jab mujhy pehli salry milay to us k ghar jaon aur usay kahoon aaja kuch khanay peenay chaltay hain.
meray aur us k ghar k darmian koi 1-1.5 Km ka fasila hai , roz roz to mila naheen ja sakta.
acha agar aap nay film "bachna ae haseeno" daikhi hai to zara guide key jiye ga ka us mein jo hero tha us jaysa kaisay bana ja sakta hai.

meray dosray sawal ka to aap nay jawab dia naheen

SadafG
18-03-2010, 03:29 PM
muhbbbat bary ajeeb batiyan kar rahahy hai jasay aap par kisi ka crush hota haii lakin ur thinking is very unmature